کرنسی کے محاذ پر وزیر اعظم مودی نے اپنے سخت اقدام کا ’’کڑک چائے‘‘ سے کیا موازنہ

وزیر اعظم نریندر مودی نے آج اتر پردیش کے غازی پور میں گنگا ریل پل کا سنگ بنیاد رکھا ۔

Nov 14, 2016 01:07 PM IST | Updated on: Nov 14, 2016 03:25 PM IST
کرنسی کے محاذ پر وزیر اعظم مودی نے اپنے سخت اقدام کا ’’کڑک چائے‘‘ سے کیا موازنہ

غازی پور۔ ایک ہزاراور پانچ سو کی کرنسیوں پر پابندی سے درپیش دشواری کو سمجھنے اور اسے سہنے میں حکومت کا ساتھ دینے کی اپیل کے ساتھ آج وزیر اعظم نے اپنے سخت اقدامات کے دفاع میں کہا کہ اس کا تعلق ان کی کڑک چائے بنانے کی عادت سے ہے اور کڑک چائے غریبوں کی پسند ہوتی ہے امیروں کی نہیں۔ مسٹر مودی شہر میں ریلوے پروجکٹوں کے افتتاح کے لئے غازیی پور آئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ دوسرے جہاں لوگوں کی دشواریوں پر بیان بازی کر رہے ہیں وہیں وہ اسے محسوس کر تے ہیں ۔ اسی کے ساتھ انہوں نے کہا کہ اس اقدام کی نوعیت کڑک چائے کی ہے یعنی قلت کرنسی کی نہیں مسئلہ وہاں کھڑا ہو گیا ہے جہا ں پیسے موجود ہیں ۔ انکا اشارہ کالا دھن کی طرف تھا۔ یہ کہتے ہوئے کہ وہ لوگوں کی دشواریوں سے پریشان ہیں لیکن زیادہ نروس وہ لوگ ہیں جن کے پاس کالا دھن ہے، مسٹر مودی نے کانگریس کو یہ کہتے ہوئے زد میں لیا کہ اس طرح کے اقدامات کے بھی پیمانے ہوتے ہیں۔ کانگریس نے اپنی اوقات کے مطابق کسی سے پوچھے بغیر چونی پر پابندی لگائی تھی ۔

 دوسری طرف، مودی نے آج اس بات کے لئے غازی پور کی سر زمین کو سلام کیا کہ اس نے پرم ویر چکر عبد الحمید جیسے مجاہد کو جنم دیا’’ جس نے 1965 کی جنگ میں پاکستان کو سبق سکھایا تھا‘‘۔ یہاں پریورتن ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر مودی نےریاست کے کسانوں کی  تقدیر بدلنے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ پنڈت جواہر لعل نہرو کے یو م پیدائش کے موقع پر آج عہد کرتے ہیں کہ پنڈت جی نے پوروانچل کے کسانوں کی انتہائی خستہ حالی کا جائزہ لینے کے لئے جو کمیٹی بنائی تھی اس کی فائلوں میں گم رپورٹوں کو وہ کھلوائیں گے جنہیں پنڈت جی کے انتقال کے بعد بھی کسی وزیر اعظم نے نہیں کھلوائے۔ واضح رہے کہ یو پی میں آئندہ سال ہی اسمبلی انتخابات ہونے جا رہے ہیں۔

 مودی نے اسی کے ساتھ کسانوں کے کندھےکا بوجھ کم کرنے کے لئے کاشتکاری کے محاذ پر ایک جامع فصلی انشورنس اسکیم سامنے لانے کا اعلان کیا اور کہا کہ انہوں نے کسانوں کے حق میں اس اعلان کے لئے اس موقع کا انتخاب اس لئے کیا کہ جو کام پنڈت کے زمانے سے ادھورا پڑا ہے اسے پورا کیا جا سکے۔ ویسے بھی اس ریاست نے ملک کو کئی وزرائے اعظم دیئے ہیں میں ان میں گیارہواں ہوں۔ مسٹرمودی نے کہا کہ "میں تو ملک کی غریب عوام کے لئے بدعنوانی کے خلاف لڑائی لڑ رہا ہوں جبکہ کانگریس نے اپنی کرسی بچانے کے لئے سیدھے سادھے لوگوں کو جیل میں ٹھوس دیا تھا۔ اخبارات پر تالے جڑ دیے گئے تھے۔ ایڈیٹروں کو قیدی بنا لیا گیا تھا۔ کیا یہ سب کارروائی کرپشن ختم کرنے کے لئے تھی! نہیں، الہ آباد ہائی کورٹ نے مسز گاندھی کے خلاف فیصلہ کیا سنایا ، انہوں نے تو پورے ملک کو 19 ماہ کے لئے جیل میں تبدیل کر دیا تھا۔

Loading...

Loading...