உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مرکزی حکومت کا بڑا فیصلہ- پرائیویٹ میڈیکل کالج کی نصف سیٹوں پر لگے گی سرکاری کالج جتنی فیس

    مرکزی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ ملک کے پرائیویٹ میڈیکل کالجوں میں نصف سیٹوں پر سرکاری میڈیکل کالج جتنی ہی فیس لگے گی۔

    مرکزی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ ملک کے پرائیویٹ میڈیکل کالجوں میں نصف سیٹوں پر سرکاری میڈیکل کالج جتنی ہی فیس لگے گی۔

    مرکزی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ ملک کے پرائیویٹ میڈیکل کالجوں میں نصف سیٹوں پر سرکاری میڈیکل کالج جتنی ہی فیس لگے گی۔

    • Share this:
      نئی دہلی: مرکزی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ ملک کے پرائیویٹ میڈیکل کالجوں میں نصف سیٹوں پر سرکاری میڈیکل کالج جتنی ہی فیس لگے گی۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے ٹوئٹ کرکے اس کی جانکاری دی ہے۔

      کچھ دن پہلے ہی حکومت نے ایک اور بڑا فیصلہ لیا ہے، جس کا بڑا فائدہ غریب اور متوسط طبقہ کے بچوں کو ملے گا۔ وزیر اعظم مودی نے ٹوئٹ کرکے کہا کہ ہم نے طے کیا ہے کہ پرائیویٹ میڈیکل کالجوں میں نصف سیٹوں پر سرکاری میڈیکل کالج کے برابر ہی فیس لگے گی۔ پی ایم مودی نے جن اوشدھی دیوس کے موقع پریہ اعلان کیا۔



      گزشتہ کئی ماہ سے میڈیکل کی فیس کو لے کر ہنگامہ ہوا تھا۔ گارجین اور طلبا مسلسل میڈیکل کالج کی فیس کو کم کرنے کے مطالبہ میں مصروف ہوئے تھے۔ ایسا امکان ظاہر کیا جارہا تھا کہ حکومت اس بارے میں کوئی بڑا قدم اٹھا سکتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      Shane Warne Death: شین وارن کے انتقال سے ٹوٹ گئے پونٹنگ، بولے- 3 لفظ نہ کہہ پانے کا ہے افسوس

      وزیر اعظم مودی نے کہا کہ ہندوستان حکومت مستقبل کو دھیان میں رکھتے ہوئے ہیلتھ سیکٹر کو مضبوط بنانے کے لئے قدم اٹھا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آزادی کے بعد دہائیوں تک پورے ملک میں صرف ایک ایمس تھا، لیکن حکومت کے مضبوط ارادوں کی وجہ سے آج 22 ایمس ہیں۔

      اپنے خطاب میں وزیر اعظم مودی نے جن اوشدھی کیندر کی بھی جم کر تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ جن اوشدھی مرکز ہمارے جسم کو اوشدھی دیتے ہیںاور ان میں ایسی اوشدھی بھی ہیں، جو ہمارے من کی تشویش کو بھی کم کرتی ہیں۔ وزیر اعظم مودی نے کہا کہ پہلے جب لوگوں کے ہاتھ میں دوا کی پرچی آتی تھی تو لوگوں کے دل میں ڈر رہتا تھا کہ کتنا پیسہ خرچ ہوجائے گا، لیکن آج وہ تشویش بھی پوری طرح سے غائب ہوگئی ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: