ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف احتجاج پر وزیراعظم نریندرمودی کاردعمل، کہی یہ بڑی باتیں

شہریت کے قانون کے خلاف احتجاج پر،وزیراعظم نریندر مودی نے کہاکہ بعض لوگ مفاد پرست سیاست کررہے ہیں۔

  • Share this:
شہریت ترمیمی قانون کے خلاف احتجاج پر وزیراعظم نریندرمودی کاردعمل، کہی یہ بڑی باتیں
وزیراعظم نے رام لیلا میدان پرخطاب کے دوران کہا کہ بے بنیادخبروں اورویڈیوز کے ذریعہ منافرت پھیلانے کی سیاست کررہے ہیں۔

شہریت کے قانون کے خلاف احتجاج پر،وزیراعظم نریندر مودی نے کہاکہ  بعض لوگ مفاد پرست سیاست کررہے ہیں۔وزیراعظم نے کہا کہ آپ نے پچھلے ہفتےیہ دیکھا کہ غلط بیانات دیئے گئے اور بعض لوگوں نے غلط ویڈیوزکے ذریعہ اشتعال انگیزی پھیلانے کی کوشش کی ہے۔پی ایم نے کہا کہ بعض ایسے افراد جو اعلیٰ عہدوں پرفائزہے وہ بھی پرانے پرانے ویڈیوز شیئرکرتے ہوئے منافرت پھیلانے کی کوشش کی ہے تاکہ وہ ووٹ بینک کی سیاست کرسکیں۔ پی ایم مودی نے کانگریس کو نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ کانگریس، اقتدارحاصل کرنے کے لیے پھوٹ ڈالواورحکومت کروکے نعرہ پر کام کررہی ہے ۔وزیراعظم مودی نے کہا کہ شہریت ترمیمی قانون، ہندوستان کے شہریوں کے لیے نہیں ہے انہوں نے کہا کہ شہریت ترمیمی قانون کا نفاذ ہندوستانی شہریوں پرنہیں ہوگا۔




وزیراعظم نریندرمودی نے این آرسی یعنی نیشنل رجسٹرر آف سینٹرنس کے متعلق بھی وضاحت پیش کی ہے۔انہوں نے کہاکہ این آرسی کو کانگریس نے ہی متعارف کروایاتھا اورموجودہ حکومت نے اب تک این آرسی کو لیکرکچھ نہیں کیاہے، پی ایم مودی نے کہا کہ2014 کے بعد سے اب تک مودی حکومت نے این آرسی پرکچھ کیاہی نہیں۔ مودی نےدعویٰ کیاہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات کے بعد ہی آسام میں این آرسی کا نفاذ کیاگیاہے۔ مودی نے کہا کہ بعض تعلیم یافتہ نکسلائٹ این آرسی کے نام پرمسلمانوں کوخوفزدہ کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کوحراستی سینٹربھیجنے کی افواہیں پھیلائی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کوخوفزدہ کرنے کے مقصد سے یہ افواہیں پھیلائی جارہی ہے۔ وزیراعظم نریندرمودی نے کہا کہ ہندوستان میں پیدا ہوئے مسلمانوں پر شہریت ترمیمی قانون اور این آرسی کا نفاذ نہیں ہوگا۔ ہندوستان میں اب تک حراستی سینٹر ہی نہیں بنیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ افواہوں کے ذریعہ ناپاک کھیل کھیلاجارہاہے۔



وزیراعظم نے رام لیلا میدان پرخطاب کے دوران کہا کہ بعض افراد بے بنیادخبروں اورویڈیوز کے ذریعہ منافرت پھیلانے کی سیاست کررہے ہیں۔نریندرمودی نے کہاکہ 'ایک طرف ، ہم نے دہلی میں 2000 سے زیادہ بنگلے وی آئی پی لوگوں سے خالی کرا لئے ہیں اور 40 لاکھ سے زیادہ غریب اور متوسط ​​طبقے کو ان کا گھر کاحق دیا ہے۔ہم نے ان کا مذہب نہیں دیکھا۔ ہم نے یہ نہیں دیکھا کہ وہ مندر کو جاتے یا مسجد کو جاتے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ غریب خاندانوں کو گیس کنکنشن دیتے وقت بھی ہم نے کبھی بھی کسی کا مذہب نہیں دیکھا۔پی ایم مودی نے کہا کہ کسی بھی اسکیم کی نفاذ کے دوران ہم نے کبھی بھی کسی مذہب کا نہیں پوچھا۔ وزیراعظم نریندرمودی نے پولیس اہلکاروں کو نشانہ بنانے جانے پربھی ناراضگی کا اظہارکیا۔ وزیراعظم مودی نے دہلی کے اناج منڈی میں ہوئے آتشزدگی واقعہ کے دوران پولیس نے بچاؤ۔ راحت کے کام کیے ۔ پولیس اہلکاروں نے کبھی بھی کسی کا مذہب نہیں پوچھا، پولیس نے سب کی مدد کی ہے۔



یاد رہے کہ وزیراعظم نریندر مودی (وزیر اعظم نریندر مودی) دہلی کے رام لیلا گراؤنڈ میں بی جے پی کے جلسے سے خطاب کررہے ہیں۔ اس ریلی کا اہتمام قومی دارالحکومت میں 1734 غیر قانونی کالونیوں کو باقاعدہ بنانے پر وزیر اعظم مودی کا شکریہ ادا کرنے کے لئے کیا گیا ہے۔ اس ریلی کے ذریعہ پی ایم مودی نے دہلی اسمبلی انتخابات کے لئے پارٹی کی انتخابی مہم کا بھی آغازکیاہے۔وہیں مرکزی وزیرنتن گڈکری نے ناگپور میں ایک ریلی سے خطاب کیا۔ شہریت کے قانون کے حوالے سے ملک بھر میں ہونے والے احتجاج پر ، گڈکری نے کہا ، 'سی اے اے مسلمانوں کے خلاف نہیں ہے۔ ہمسایہ ممالک میں مذہبی ظلم وستم کا سامنا کرنے والے لوگوں کوہی شہریت دینے کے لیے شہریت ترمیمی قانون متعارف کیاگیاہے۔
First published: Dec 22, 2019 02:55 PM IST