ارون جیٹلی کی خراج عقیدت تقریب میں جذباتی ہوئے وزیراعظم مودی، ایسا لمحہ کسی کی زندگی میں نہ آئے

بی جے پی کی جانب سےآج سابق وزیرخزانہ ارون جیٹلی کی یاد میں 'شردھانجلی سبھا ‘ کا انعقاد کیا۔ اس میں وزیراعظم نریندرمودی، ایل کےاڈوانی، امت شاہ،راجناتھ سنگھ اورپارٹی کے ایگزیکٹیو صدرجے پی نڈا سمیت کئی بڑے لیڈرشامل ہوئے۔

Sep 10, 2019 11:37 PM IST | Updated on: Sep 10, 2019 11:37 PM IST
ارون جیٹلی کی خراج عقیدت تقریب میں جذباتی ہوئے وزیراعظم مودی، ایسا لمحہ کسی کی زندگی میں نہ آئے

ارون جیٹلی کی خراج عقیدت تقریب میں جذباتی ہوئے وزیراعظم مودی

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی نےآج سابق ویزخزانہ کی یاد میں دہلی کے جواہر لال نہرو اسٹیڈیم میں منعقدہ ’شرھانجلی سبھا ‘ میں کہا کہ جیٹلی ایک عظیم شخصیت کے مالک تھے اور وہ ’ ون لائنر‘ کے لئے جانے جاتے تھے۔ وہ اپنی باتیں ون لائنر کے ذریعے کہہ دیتے تھے، جس کا بڑا اثر ہوتا تھا۔ آج اپنے سےکم عمرکے دوست کوخراج عقیدت پیش کرنا پڑ رہا ہے۔ ان کا ہمیں چھوڑ کر جانا بہت بڑا نقصان ہے۔ جیٹلی کی کمی مجھے ہمیشہ محسوس ہوگی ۔

وزیراعظم نےمزید کہا کہ ارون جیٹلی صحیح الفاظ کا صحیح وقت پراستعمال کرتےتھے۔ یہ سب سیکھ کرہم بہت کچھ کرسکتے ہیں۔ ملک کےمفاد میں انہوں نے نئی سوچ، نئی توانائی کی مثال پیش کی ہے۔ ہمیں ان سےسبق حاصل کرنی چاہئے۔ ہم دونوں کئی سالوں سے دوست تھے، لیکن میں انہیں آخری الوداعی نہیں دے سکا۔ مجھے اس کا ہمیشہ دکھ رہے گا۔

Loading...

بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے آج سابق وزیرخزانہ ارون جیٹلی کی یاد میں ’شردھانجلی سبھا ‘ کا انعقاد کیا۔ دہلی کے جواہرلال نہرواسٹیڈیم میں منعقد ایوارڈ سبھا میں وزیر اعظم نریندرمودی، سینئرلیڈرلال کرشن اڈوانی، وزیر داخلہ امت شاہ، وزیر دفاع راجناتھ سنگھ اور پارٹی کےایگزیکٹو چیئرمین جے پی نڈا سمیت کئی بڑے لیڈرشامل ہوئے۔ سبھا میں دوسری پارٹیوں سے ٹی ایم سی کے دنیش ترویدی، شرد پوار، ابھیشیک منوسنگھوی اورستیش مشرا اوردیگررہنما موجود تھے۔

نریندرمودی نے’ شردھانجلی سبھا‘ میں کہا کہ ارون جیٹلی بےپناہ صلاحیت اورسیاسی بصیرت کےحامل تھے۔ وہ دنیا کےکسی بھی معاملے پراپنے وسیع تجربےکوبروئےکارلاتے ہوئےتصفیہ تک پہنچاتے تھے۔وہ طویل عرصے تک بیمار تھے، لیکن اس کے باوجود ان سے جب بھی کچھ پوچھا جائے تو وہ اپنی بات بتانے میں یا اپنی صحت کے بارے میں بتانے میں وقت ضائع نہیں کرتے تھے۔ان کا دل- و دماغ ہمیشہ ملک کے روشن مستقبل کے لئے وقف ہوگیا تھا اور یہی ان کی توانائی تھی۔ معاملات پر ان کی بصیرت اور تفہیم کا موازنہ نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے ایک باوقار زندگی بسر کی اور ہمارے ساتھ بہت سی اچھی یادیں چھوڑ کر رخصت ہو گئے۔

Loading...