اعظم گڑھ سے این ڈی اے نے 'دہشت گردی' کے بدنما داغ کو ہٹایا: نریندرمودی

وزیراعظم نے سوال کیا کہ کیا کوئی بتا سکتا ہےکہ 2014 کے بعد ایک بھی دہشت گردی کے واقعہ کواعظم گڑھ سےمنسلک نہیں کیا گیا جبکہ اس سے پہلےملک میں ہونے والی ہردہشت گردی کے واقعہ کی کڑی اعظم گڑھ سے منسلک کرد ی جاتی تھی۔

May 09, 2019 07:17 PM IST | Updated on: May 09, 2019 07:29 PM IST
اعظم گڑھ سے این ڈی اے نے 'دہشت گردی' کے بدنما داغ کو ہٹایا: نریندرمودی

وزیراعظم مودی: فائل فوٹو

اعظم گڑھ: این ڈی اے اقتدارمیں اعظم گڑھ  سے’دہشت گردی‘ کے بدنما داغ کو ہٹانےکا دعوی کرتے ہوئے وزیراعظم نریندرمودی نے جمعرات کوکہا کہ ان کی حکومت کی کوشش تھی کہ دہشت گرد جموں وکشمیر اورکچھ سرحدی علاقوں کےسوا ملک دیگرحصوں میں کہیں بھی اپنی سرگرمی کوانجام نہ دےسکیں۔

انہوں نے سوال کیا کہ کیا کوئی بتا سکتا ہےکہ 2014 کے بعد ایک بھی دہشت گردی کے واقعہ کواعظم گڑھ سےمنسلک نہیں کیا گیا جبکہ اس سے پہلےملک میں ہونے والی ہردہشت گردی کے واقعہ کی کڑی اعظم گڑھ سے منسلک کرد ی جاتی تھی۔ این ڈی اے حکومت کے دوران ملک نے دہشت گردی کے خلاف سخت فیصلےلئےاوران کا منھ توڑ جواب دیا۔ 

Loading...

علاوہ ازیں مسعود اظہرکوعالمی دہشت گردقراردینے کےلئےعالمی طاقتوں کواکٹھا کیا۔  نریندرمودی نے کہا کہ 2014 سے قبل ملک میں دہشت گردانہ واقعات کا ایک سلسلہ چل رہا تھا، لیکن ہمارے اقتدار میں آنےکے بعد ہم نے اس پرقابو حاصل کیا۔ ان حملوں کا ذمہ دار کون تھا، اس بات سے ہرکوئی اچھی طرح سے واقف ہے۔

اعظم گڑھ سے بی جے پی امیدوار و بھوجپوری اداکار دنیش لال یادو عرف نرہوا کی حمایت میں منعقد انتخابی ریلی سے خطاب کرتےہوئے وزیر اعظم نے دعوی کیا کہ نیا ہندوستان ہر دہشت گردی کا منھ توڑ جواب دے گا اور اگر ضرورت پڑی تو انکے گھروں میں گھس کے مارا جائے گا۔

انہوں نے کہاکہ سابقہ یو پی اے حکومت اپنے دس سالہ میعاد کار میں اتنی کمزور تھی کہ وہ دہشت گردی کے خلاف کوئی بھی اقدام کرنے کی ہمت نہ کرسکے اس کے علاوہ حکومت کے کچھ اتحادیوں نے ایسے تنظمیوں کی کھل کی طرفداری کی۔ ساتھ ہی انہوں نے بی جے پی کو مکمل اکثریت نہ ملنے کی صورتحال سےآگاہ کرتے ہوئے کہا کہ ایسی صورت میں جب دہلی کی حکومت کمزور ہوگی تو ملک میں دہشت گردی اور دیگر قسم کے واقعات میں اضافہ ہوگا۔

Loading...