உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وزیراعظم مودی نے وارانسی پہنچ کرکہا- مینڈیٹ نے سیاسی پنڈتوں کےاعدادوشمارکوغلط ثابت کردیا

    وزیراعظم مودی نے وارانسی پہنچ کر پارٹی کارکنان اور رائے دہندگان کو بی جے پی کی شاندار جیت کے لئے شکریہ ادا کیا۔

    وزیراعظم مودی نے وارانسی پہنچ کر پارٹی کارکنان اور رائے دہندگان کو بی جے پی کی شاندار جیت کے لئے شکریہ ادا کیا۔

    وزیراعظم نے کہا کہ لوک سبھا الیکشن 2019 کے نتائج نے واضح کردیا ہے کہ لوگوں کے ساتھ کیمسٹری تمام حساب وکتاب سے بڑھ کرہے۔ اس باراسی کیمسٹری نے اعدادوشمارکو جھٹلا کربی جے پی کو زبردست جیت دلائی۔

    • Share this:
      لوک سبھا الیکشن 2019 میں شاندارجیت کے بعد اپنے پارلیمانی حلقہ وارانسی پہنچے وزیر اعظم نریندرمودی نے لوگوں کو بی جے پی کی شاندارجیت میں تعاون کرنے کےلئے شکریہ ادا کیا۔ اس دوران انہوں نے کہا کہ بی جے پی کو صرف ہندی بولنے والےخطوں کی پارٹی کہا جاتا تھا۔ اس بارنتائج نےاس سوچ کوغلط ثابت کردیا ہے۔ اس بار پارٹی نے پورے ملک میں جیت کا مزہ چکھا ہے۔ لوک سبھا الیکشن 2019 کے نتائج نے ثابت کیا کہ رائے دہندگان کے ساتھ پارٹی کی کیمسٹری نے سبھی اعدادوشمارکوجھٹلا دیا۔

      وزیراعظم نے کہا کہ سیاست کے پنڈتوں کویہ نہیں معلوم ہے کہ ان کی سوچ اورترک 20 ویں صدی کے ہوچکے ہیں۔ نتائج نے واضح کردیا ہے کہ کیمسٹری اعدادوشمارپربھاری پڑگئی ہے۔ ملک میں سماجی طاقت، آئیڈیل اورعزائم کی کیمسٹری نے سیاسی پنڈتوں کے سبھی اعداد وشمارکو شکست دے دی ہے۔ اس الیکشن میں نمبرات کو کیمسٹری نے شکست دی ہے۔

      اس دوران وزیراعظم مودی نےسبھی لوگوں کوسخت محنت اورپارٹی کے تئیں وقف کئے جانےکےلئے شکریہ ادا کیا۔ نریندرمودی 30 مئی کی شام 7 بجے دوسری باروزیراعظم عہدے کا حلف لیں گے۔ انہوں نے کہا کہ لوک سبھا الیکشن 2014، یوپی اسمبلی الیکشن 2017 اورلوک سبھا الیکشن 2019 میں جیت کی ہیٹ ٹرک صرف بی جے پی کی حصولیابی نہیں ہے۔ یہ ہیٹ ٹرک چھوٹی بھی نہیں ہے۔ یہ آپ سبھی کی جیت ہے۔

      ملک کے لئے وزیراعظم، ورانسی کے لئے آپ کا رکن پارلیمنٹ

      نریندرمودی نے کہا کہ ملک کے لئے میں وزیراعظم ہوں، لیکن وارانسی کے لوگوں کےلئے میں آپ کا رکن پارلیمنٹ ہوں۔ انہوں نے حیرانی ظاہرکرتے ہوئے کہا کہ آج بھی سیاسی پنڈت بی جے پی کو صرف ہندی زبان بولنے والے خطوں کی پارٹی مانتے ہیں۔ ایسا کوئی حلقہ اور خطہ نہیں ہے، جہاں بی جے پی نے جیت درج نہیں کی ہے۔ ایسا کوئی حلقہ نہیں، جہاں بی جے پی کا ووٹ فیصد بڑھا نہ ہو۔ آسام میں بی جے پی کی حکومت ہے۔ یہاں تک کہ لداخ میں بھی ہمارے امیدوارجیت رہے ہیں۔ پھر بھی لوگ بی جے پی کو ہندی زبان بولنے والے خطوں کی پارٹی بتا رہے ہیں۔ بی جے پی کو لے کربنائی گئی یہ سوچ پوری طرح غلط ہے۔
      First published: