உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شمال مشرقی خطے کی ریاستوں کے بعداب جنوبی ریاستوں کے وزرائےاعلیٰ سےبات کرینگے پی ایم مودی

    وزیر اعظم نریندر مودی ۔ (PTI Photo)

    جنوب کی کچھ ریاستوں میں ابھی بھی کورونا انفیکشن کے معاملے تشویش کا سبب ہیں اور وزیراعظم اسی کے پیش نظر وہاں کے وزرائے اعلی کے ساتھ بچاؤ اور احتیاط کے طریقوں اور طبی سہولیات پر بات چیت کریں گے۔

    • Share this:
    India Coronavirus News:وزیراعظم نریندر مودی شمال مشرقی خطے کی ریاستوں کے بعد اب جنوبی ریاستوں میں کورونا انفیکشن کی صورتحال کے بارے میں ان ریاستوں کے وزرائے اعلی کےساتھ جمعہ کو بات چیت کریں گے ۔سرکاری ذرائع نے منگل کو بتایا کہ وزیراعظم جمعہ کو تامل ناڈو، آندھرا پردیش، کرناٹک، اوڈیشہ، مہاراشٹر اور کیرالا کے ورزائے اعلی کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ میٹنگ کریں گے۔ اس میٹنگ میں ان ریاستوں میں کورونا وبا کے سبب پیدا ہوئی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔

    جنوب کی کچھ ریاستوں میں ابھی بھی کورونا انفیکشن کے معاملے تشویش کا سبب ہیں اور وزیراعظم اسی کے پیش نظر وہاں کے وزرائے اعلی کے ساتھ بچاؤ اور احتیاط کے طریقوں اور طبی سہولیات پر بات چیت کریں گے۔ اس کے علاوہ وہ ان ریاستوں میں ٹیکہ کاری کی صورتحال اور اس میں مزید تیزی لائے جانے کے طریقوں پر بھی تبادلہ خیال کریں گے۔

    وزیراعظم جمعہ کو تامل ناڈو، آندھرا پردیش، کرناٹک، اوڈیشہ، مہاراشٹر اور کیرالا کے ورزائے اعلی کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ میٹنگ کریں گے۔
    وزیراعظم جمعہ کو تامل ناڈو، آندھرا پردیش، کرناٹک، اوڈیشہ، مہاراشٹر اور کیرالا کے ورزائے اعلی کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ میٹنگ کریں گے۔

    کورونا کی تیسری لہرکو روکنا ہوگا : وزیراعظم نریندرمودی


    وزیراعظم نریندر مودی نےکل کہا کہ کورونا وبا کی تیسری لہر خود سے دستخط نہیں دے گی بلکہ یہ لاپروائی اور سستی اس کا سبب بن سکتی ہے اس لئے سبھی کو مل کر کووڈ سے متعلق رہنما خطوط پر سختی سے عمل کرتے ہوئے تیسرے لہر کو آنے سے روکنا ہوگا ۔وزیر اعظم نریندر مودی نےکووڈ-19 کی صورتحال پر شمال مشرقی ریاستوں کے وزرائے اعلی سے بات چیت کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے وبائی امراض کے خلاف جنگ اور ریاستوں کے دشوار گزار خطے کے باوجود جانچ ، علاج اور ویکسینیشن کے لئے انفراسٹرکچر بنانے کے لئے عوام ، صحت کارکنوں اور شمال مشرق کی حکومتوں کی تعریف کی۔

    وزیر اعظم نے کچھ اضلاع میں کیسوں کی بڑھتی ہوئی تعداد پر تشویش کا اظہار کیا اور جن علاقوں میں کیسز میں اضافہ درج ہوا ہے ان پر خاص نظر رکھنےاور بڑے پیمانےپر وہاں کووڈ سے نمٹنے کے لیے کی جانے والی کارروائیوں کو تیز کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے صورتحال سے نمٹنے کے لئے مائیکرو کنٹینمنٹ پروٹوکول کے استعمال پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے گذشتہ ڈیڑھ برسوں میں اس سلسلے میں حاصل شدہ تجربات اور بہترین طریقہ کارکی نشاندہی کرکے اس کا بھر پور استعمال کرنے کی تلقین کی۔

    وائرس کی تیز رفتار اورتغیر پذیر نوعیت کا ذکر کرتے ہوئے، وزیر اعظم نے تبدیلیوں کی سخت نگرانی کرنے اور اس کی نئی شکل پر نظر رکھنے کا مشورہ دیا۔ انہوں نے آگاہ کیا کہ ماہرین وائرس کی تبدیل ہونے والی شکلوں اور اس کے اثرات کا مطالعہ کر رہے ہیں۔ ایسے حالات میں، روک تھام اور مناسب علاج بہت اہم ہیں۔ انہوں نے کورونا سے جیت کے لیے مناسب طرز عمل کو اختیار کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ جسمانی دوری، ماسک، ویکسین کی افادیت واضح ہے۔ اسی طرح ، ٹریکنگ اور بروقت علاج ومعالجے کی حکمت عملی ہی اس سے نمٹنے کا موثرطریقہ ہے۔
    Published by:Mirzaghani Baig
    First published: