جامعہ ملیہ اسلامیہ کے لئے وزیراعظم مودی کاخط، جامعہ انتظامیہ اورطلباء انتہائی پُرجوش

خط میں وزیر اعظم نے جامعہ ملیہ اسلامیہ کی تعریف کرتے ہوئے لکھا ہے، جامعہ ملیہ اسلامیہ، جوآزادی سے پہلے قائم کی گئی تھی، یونیورسٹی نے ملک کے اتحاد و ترقی میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

Nov 12, 2019 11:53 PM IST | Updated on: Nov 12, 2019 11:59 PM IST
جامعہ ملیہ اسلامیہ کے لئے وزیراعظم مودی کاخط، جامعہ انتظامیہ اورطلباء انتہائی پُرجوش

جامعہ ملیہ اسلامیہ :فائل فوٹو

وزیر اعظم نریندر مودی نے جامعہ ملیہ اسلامیہ کو ایک خط بھیجا ہے۔ وزیر اعظم کا خط ملنے کے بعد جامعہ انتظامیہ اور جامعہ کے طلباء بہت پرجوش ہیں اورانہیں میڈیکل پروجیکٹ سمیت وزیر اعظم سے بہت سی توقعات ہیں۔ واضح رہے کہ یہ وہی خط ہے جو وزیراعظم نریندرمودی نے جامعہ ملیہ اسلامیہ یونیورسٹی کولکھا ہے۔ خط میں وزیر اعظم نے جامعہ ملیہ اسلامیہ کی تعریف کرتے ہوئے لکھا ہے، جامعہ ملیہ اسلامیہ ، جو آزادی سے پہلے قائم کی گئی تھی، یونیورسٹی نے ملک کے اتحاد و ترقی میں اہم کردار ادا کیا ہے ، اسی طرح ملک کے ثقافتی تانے بانے میں بھی جامعہ ملیہ یونیورسٹی کی بڑی شراکت ہے۔

وزیر اعظم نے جامعہ کے طلباء سے ملک کی توقعات کا بھی تذکرہ کیا ۔ یہ خط ملنے کے بعد جامعہ ملیہ اسلامیہ انتظامیہ اور جامعہ کے طلباء بہت پرجوش ہیں اورجامعہ میڈیکل پروجیکٹ کے ساتھ ساتھ وزیراعظم سے بھی بہت سی توقعات بہت لگانے لگے ہیں۔  اس موقع پرجامعہ ملیہ اسلامیہ کی وائس چانسلرنجمہ اخترنے وزیراعظم مودی کے خط کا استقبال کرتے ہوئے اسے جامعہ ملیہ اسلامیہ کے لئے خوش آئند قراردیا ہے۔

Loading...

وزیراعظم مودی نے لکھا جامعہ ملیہ اسلامیہ کے لئے خط۔ وزیراعظم مودی نے لکھا جامعہ ملیہ اسلامیہ کے لئے خط۔

جامعہ ملیہ اسلامیہ ایک ایسی یونیورسٹی ہے جو 1920 میں قوم پرستی اور ہندو مسلم اتحاد کی علامت کے طور پرقائم کی گئی تھی ، انگریزوں کے خلاف عدم تعاون کی تحریک کی وجہ سے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے الگ ہوکرجامعہ ملیہ اسلامیہ کا قیام عمل میں آیا تھا، گجرات ودیاپیٹھ ، کاشی ودیاپیٹھ جامعہ ملیہ اسلامیہ کا قیام قوم پرستی پر مبنی ہے۔ گاندھی جی، مولانا محمد علی جوہر، حکیم اجمل خان، ڈاکٹرذاکرحسین، مولانا محمود الحسن جیسے لوگ اس ادارے سے وابستہ رہے ہیں۔ سابق ممبر پارلیمنٹ سندیپ دکشت ہوں یا مشہورتاریخ دان سلل مشرا کہتے ہیں کہ ملک کے لئے جامعہ کی بڑی خدمات ہیں۔

قابل ذکرہے کہ  اس سال یہ یونیورسٹی اپنے 100 ویں سال میں داخل ہوچکی ہے، ماس کمیونیکیشن انجینئرنگ لاء، نیچرل سائنس ہیومینٹیزایجوکیشن جیسی فیکلٹیوں میں 20،000 سے زیادہ طلباء طالبات تعلیم حاصل کررہے ہیں، اسی طرح آرمی نیوی کوسٹ گارڈ اور بی ایس ایف کے ہزاروں جوان یہاں سے اپنی تعلیم مکمل کررہے ہیں۔ 99 سالوں سے جامعہ یونیورسٹی ملک کو اپنی خدمات دے رہی ہے اور اب آگے بڑھ کر ملک کی صحت کو بہتر بنانے کے لئے میڈیکل کا خواب پورا کرنے میں مصروف ہے۔

Loading...