ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

وزیر اعظم مودی نے علی گڑھ سے کیا انتخابی مہم کا آغاز، کانگریس نے راجا مہندر پرتاپ سنگھ جیسے قومی ہیرو سے روشناس نہیں کرایا

وزیر اعظم نریندر مودی نے مغربی اترپردیش میں انتخابی بگل پھونکتے ہوئے کانگریس پر آج تنقید کیا کہ اس نے اپنی لگن اور قربانیوں سے ملک کو نئی سمت دینے والے راجا مہندر پرتاپ سنگھ جیسے قومی ہیرو سے ملک کی اگلی نسلوں کو روشناس نہیں کرایا اور 20ویں صدی کی ان غلطیوں کا 21ویں صدی کا ہندوستان اصلاح کررہا ہے۔

  • Share this:
وزیر اعظم مودی نے علی گڑھ سے کیا انتخابی مہم کا آغاز، کانگریس نے راجا مہندر پرتاپ سنگھ جیسے قومی ہیرو سے روشناس نہیں کرایا
وزیر اعظم مودی نے علی گڑھ سے کیا انتخابی مہم کا آغاز، کانگریس نے راجا مہندر پرتاپ سنگھ جیسے قومی ہیرو سے روشناس نہیں کرایا

علی گڑھ: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (Aligarh Muslim University) کا نام بدل کر راجہ مہندر پرتاپ سنگھ (Raja Mahendra Pratap Singh University) کے نام پر رکھنے کی بی جے پی کے پرانے مطالبہ کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی (PM Narendra Modi) منگل کو مجاہد آزادی کے نام پر اے ایم یو کے بغل میں بننے والی ایک نئی یونیورسٹی کی سنگ بنیاد رکھی۔ اس دوران گورنر آنندی بین پٹیل، وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ، نائب وزیر اعلیٰ اور وزیر تعلیم دنیش شرما موجود رہے۔ اس کے ساتھ ہی نریندر مودی علی گڑھ میں اترپردیش ڈیفنس انڈسٹریل کاریڈور اور راجہ مہندر پرتاپ سنگھ اسٹیٹ یونیورسٹی کے ماڈل کا بھی مشاہدہ کیا۔


وزیر اعظم نریندر مودی نے مغربی اترپردیش میں انتخابی بگل پھونکتے ہوئے کانگریس پر آج تنقید کیا کہ اس نے اپنی لگن اور قربانیوں سے ملک کو نئی سمت دینے والے راجا مہندر پرتاپ سنگھ جیسے قومی ہیرو سے ملک کی اگلی نسلوں کو روشناس نہیں کرایا اور 20ویں صدی کی ان غلطیوں کا 21ویں صدی کا ہندوستان اصلاح کررہا ہے۔ علی گڑھ میں ڈیفنس کوریڈو اور راجا مہندر پرتاپ سنگھ یونیورسٹی کا سنگ بنیاد رکھنے کے بعد نریندر مودی نے اپنے خطاب میں نوجوانوں کو راجا مہندر پرتاپ سنگھ کے کردار سے ترغیب لینے کی اپیل کی اور کہا کہ ’ ہندوستان کی تاریخ ایسے قومی ہیروں کی کہانیوں سےبھر ی پڑی ہے جنہوں نے اپنی محنت و قربانیوں سے ملک کو نیا سمت دیا۔ ایسے کتنے ہی عظیم شخصیات نے سب کچھ قربان کردیا لیکن ملک کی بدقسمتی رہی ہے کہ ایسے قومی ہیرووں سے ملک کی آنے والی نسلوں کو روشناس نہیں کرایا گیا۔


وزیر اعظم نریندر مودی (PM Narendra Modi) منگل کو مجاہد آزادی کے نام پر اے ایم یو کے بغل میں بننے والی ایک نئی یونیورسٹی کی سنگ بنیاد رکھی۔
وزیر اعظم نریندر مودی (PM Narendra Modi) منگل کو مجاہد آزادی کے نام پر اے ایم یو کے بغل میں بننے والی ایک نئی یونیورسٹی کی سنگ بنیاد رکھی۔


وزیر اعظم نے کہا کہ ان کی کہانیاں جاننے سے نسلیں محروم رہ گئیں۔20ویں صدر ان غلطیوں کو 21ویں صدی کا ہندوستان صحیح کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مہاراجا سہیل دیو، چھوٹورام یا راجا مہندر پرتاپ سنگھ ہوں ملک کی ترقی کے لئے ان کے کردار کو آگے لانے کی ایماندارانہ کوشش ہورہی ہے۔ نریندر مودی نے راجا مہندرپرتاپ سنگھ کے ہندوستان کے روشن مستقبل کی خاطر تعلیم کے شعبے میں کردار کا زکر کیا اور کہا کہ یہ ان کی خوش قسمتی ہے کہ انہیں اس یونیورسٹی کے سنگ بنیاد کا موقع ملا۔یہ یونیورسٹی 21ویں صدی کے ہندوستان میں تعلیم اور ہنرمندی کی توقعات کے مطابق دفاعی مطالعہ، دفاعی پروڈکشن کی ٹیکنالوجی، اس علاقے میں کام کرنے والے ہنرمندافرادی قوت تیار کرے گا۔ یہاں تعلیم اور ہنرمندی مقامی زبان میں دینے پر طاقت دیا جائےگا۔
اپنے تالا کاروبار کی وجہ سے مشہور علی گڑھ میں دفاعی پروڈکشن گلیارے کے سنگ بنیاد کے موقع پر وزیر اعظم نے گھروں اور دوکانوں کی سیکورتی میں کردار ادا کرنے والا علی گڑھ اب ملک کی سرحدوں کی سیکورتی میں اہم کردار ادا کرے گا۔ یہاں سینکڑوں کروڑ روپئے کے سرمایہ کاری سے ڈیڑھ درجن سے زیادہ کمپنیاں آرہی ہیں جو چھوٹے ہتھیار، ڈرون، ائیرواسپیس میٹل کمپونینٹ، اینٹی ڈرون نظام اور دیگر دفاعی آلات بنائیں گی۔ مغربی اترپردیش کی سیاسی نبض پر ہاتھ رکھتے ہوئے مسٹر مودی نے تقریبا پانچ سال پہلے ہوئے فسادات کی یاد دلائی اور کہا کہ ایک وقت ایسا ماحول تھا جب لوگوں کو آبائی گھر چھوڑ کر بھاگنا پڑا تھا۔ آج اترپردیش میں کوئی بھی مجرم ایسا کرنے سے پہلے سو بار سوچتا ہے۔ انہوں نے یوگی حکومت کے نظم ونسق کی تعریف کرتےہوئےکہا کہ ایک وقت یہاں انتظامیہ و حکومت غنڈوں کی من مرضی سے چلتا تھا لیکن آج غنڈے اور مافیاں سلاکھوں کے پیچھے ہیں۔



وزیر اعظم نے کسانوں کے لئے مرکزی اور اترپردیش کی یوگی حکومت کے کاموں کو شمار کرایا اور کہا کہ ان کی حکومت ملک کے 80فیصدی سے زیادہ کم جوت والے کسانو ں کے سلسلے میں سابق وزیر اعظم چودھری چرن سنگھ کے تشویشات سے کھڑی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت غریبوں اور چھوٹے کسانوں کے استحکام کے لئے پر عزم ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ کووڈ بحران میں غریبوں کو بھوک سے بچانے کے لئے ہندوستان نے جو کام کیا ہے ویسے کام دنیا کے تمام بڑے ممالک بھی نہیں کر پائے۔ علی گڑھ میں وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ کورونا بحران میں وزیر اعظم مودی نے زندگی اور رزق دونوں پر زور دیا ارو اسے بچانے کا کام کیا۔ راجہ مہندر پرتاپ سنگھ یونیورسٹی کول تحصیل کے لوڈھا اور موسیر پور کریم جرولی گاوں کی 92 ایکڑ سے زیادہ پر محیط زمین پر تعمیر کی جائے گی۔ علی گڑھ منڈل فکے 395 یونیورسٹیوں کو اس سے متعلق کیا جائے گا۔

مشہور مورخ شان محمد نے بتایا کہ جاٹ برادری کے راجہ مہندر پرتاپ سنگھ جنگ آزادی کی اہم ہستیوں میں سے تھے اور ایک اور سیکولر جمہوری ہندوستان کے تئیں ان کے عزم نے ان کا قد کافی بڑھا دیا تھا۔ سیکولرازم کے تئیں ان کے عزم کا موازنہ مہاتما گاندھی اور پنڈت جواہر لال نرو سے کیا جاتا ہے۔ سال 2014 میں بی جے پی کے کچھ مقامی لیڈروں نے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کا نام تبدیل کرکے راجہ مہندر پرتاپ سنگھ کے نام پر رکھنے کا مطالبہ کیا تھا۔ ان کی دلیل تھی کہ راجہ مہندر پرتاپ سنگھ نے اے ایم یو کے قیام کے لئے زمین عطیہ کی تھی۔ یہ معاملہ تب اٹھا جب علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے تحت سٹی اسکول کی 1.2 ہیکٹر اراضی کی لیز کی مدت ختم ہو رہی تھی اور راجہ مہندر پرتاپ سنگھ کے قانونی وارث لیز کی تجدید نہیں کرنا چاہتے تھے۔

نیوز ایجنسی یو این آئی اردو کے اِن پُٹ کے ساتھ
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 14, 2021 12:29 PM IST