ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

این پی آر کو لے کر راجیہ سبھا میں وزیر اعظم مودی کا بڑا بیان ، کہی یہ بات

وزیر اعظم مودی نے راجیہ سبھا میں صدر کی تقریر پر بحث کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ این پی آر اور رائے شماری ایک معمول کا انتظامی عمل ہے۔ اس میں کوئی نئی بات نہیں ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 06, 2020 09:27 PM IST
  • Share this:
این پی آر کو  لے کر راجیہ سبھا میں وزیر اعظم مودی کا بڑا بیان ، کہی یہ بات
وزیر اعظم مودی راجیہ سبھا میں خطاب کرتے ہوئے ۔

وزیراعظم نریندر مودی نے قومی شہریت رجسٹر (ین پی آر) اور رائے شماری کو معمول کے انتظامی عمل قرار دیتے ہوئے اپوزیشن سے اس کی مخالفت نہیں کرنے کی اپیل کی اور کہا ہے کہ اس سے اپوزیشن کی غریب مخالف ذہنیت کا اظہار ہوتا ہے اور وہ صرف ووٹ بینک کی سیاست کررہی ہے ، جس سے ملک میں غیر یقینی کی صورت حال پیدا ہو گئی ہے۔ وزیر اعظم مودی نے جمعرات کو راجیہ سبھا میں صدر کی تقریر پر بحث کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ این پی آر اور رائے شماری ایک معمول کا انتظامی عمل ہے۔ اس میں کوئی نئی بات نہیں ہے۔ سال 2010 میں اس وقت کی ترقی پسند اتحاد (یو پی اے) حکومت کے ذریعہ این پی آر شروع کئے جانے کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس وقت این پی آر سیکولر تھا اور اب جب ان کی حکومت ہے اس کو رائے شماری کے ساتھ کررہی ہے تو یہ فرقہ وارانہ ہوگیا ہے۔


انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت کے ذریعہ 2015 میں غریبوں کےلئے شروع کئے گئے فلاح وبہبود کے کام بھی سال 2010 کے این پی آر کے اعداد و شمار کا استعمال کیا اور غریبوں کو فائدہ دیئے گئے اور این پی آر کے اعداد و شمار کا مثبت استعمال کیا گیا ہے۔ وزیر اعظم مودی نے بتایا کہ ابھی اوڈیشہ کے بہت سے اڑیہ زبان بولنے والے گجرات میں آکر کام کررہے ہیں اور اگر ان کے ماں باپ کی زبان کے بارے میں جانکاری نہیں ملے گے تو کیسے ان کے لئے سورت میں اڑیہ زبان کی پڑھائی شروع کی جائے گی۔


انہوں نے کہا کہ اس میں جو اعداد و شمار آتے ہیں اس کا استعمال غریبوں کو فائدہ پہنچانے کےلئے کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ان کے میعاد کار میں این پی آر کی بنیاد پر کسی بھی شخص کو پریشان نہیں کیا گیا ہے ۔ یو پی اے کے اس وقت کے وزیرداخلہ نے سال 2010 میں این پی آر کو میڈیا سے نشر کرنے کی اپیل کی تھی ، جبکہ آج اس کو سیاسی موضوع بنایا جارہا ہے۔


انہوں نے کہا کہ اس سے اپوزیشن کی غریب مخالف ذہنیت کا اظہار ہوتا ہے۔ انہوں نے اپوزیشن سے صحیح صورت حال کو عوام کے درمیان رکھنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ شکست آپ کو اتنا پریشان کرے گا ، انہوں نے کبھی نہیں سوچا تھا ۔ انہوں نے اپوزیشن پر صرف ووٹ بینک کی سیاست کرنے کا الزام لگایا۔
First published: Feb 06, 2020 09:27 PM IST