உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UNSC میٹنگ میں وزیر اعظم نے کہا- دہشت گردی کو بڑھاوا دینے کے لئے ہو رہا ہے سمندری شاہراہوں کا غلط استعمال

    وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) کی صدارت میں اقوام متحدہ سلامتی کونسل (یو این ایس سی) کی میٹنگ شروع ہوگئی ہے۔ اس میٹنگ میں امریکی وزیر خارجہ اینٹنی بلنکن (Antony Blinken) بھی حصہ لے رہے ہیں۔ اینٹنی بلنکن اس میٹنگ سے ورچوئل جڑے ہیں اور میٹنگ کی صدارت کر رہے ہیں۔

    وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) کی صدارت میں اقوام متحدہ سلامتی کونسل (یو این ایس سی) کی میٹنگ شروع ہوگئی ہے۔ اس میٹنگ میں امریکی وزیر خارجہ اینٹنی بلنکن (Antony Blinken) بھی حصہ لے رہے ہیں۔ اینٹنی بلنکن اس میٹنگ سے ورچوئل جڑے ہیں اور میٹنگ کی صدارت کر رہے ہیں۔

    وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) کی صدارت میں اقوام متحدہ سلامتی کونسل (یو این ایس سی) کی میٹنگ شروع ہوگئی ہے۔ اس میٹنگ میں امریکی وزیر خارجہ اینٹنی بلنکن (Antony Blinken) بھی حصہ لے رہے ہیں۔ اینٹنی بلنکن اس میٹنگ سے ورچوئل جڑے ہیں اور میٹنگ کی صدارت کر رہے ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) کی صدارت میں اقوام متحدہ سلامتی کونسل (یو این ایس سی) کی میٹنگ شروع ہوگئی ہے۔ اس میٹنگ میں امریکی وزیر خارجہ اینٹنی بلنکن (Antony Blinken) بھی حصہ لے رہے ہیں۔ اینٹنی بلنکن اس میٹنگ سے ورچوئل جڑے ہیں۔ وزیر اعظم نریندر مودی ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ سے ’سمندری تحفظ کی توسیع: بین الاقوامی تعاون کا معاملہ‘ پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی اعلیٰ سطحی کھلی بحث کی صدارت کر رہے ہیں۔

      میٹنگ میں وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا، ’سمندر ہماری مشترکہ وراثت ہیں اور سمندری راستے بین الاقوامی تجارت کی لائف لائن ہیں۔ یہ مہا ساگر ہمارے سیارے کا مستقبل کے لئے بہت اہمیت رکھتے ہیں۔ ہماری یہ مشترکہ وراثت کئی طرح کے چیلنجز کا سامنا کر رہی ہے۔ دہشت کو بڑھاوا دینے کے لئے سمندری شاہراہوں کا استعمال کیا جا رہا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ ہمارے علاقے میں سمندری تحفظ کو لے کر ایک جامع فریم ورک تیار ہو۔ یہ فریم ورک ساگر (Security And Growth for All in the Region) پر مبنی ہو۔ یہ نظریہ محفوظ اور مستحکم سمندری شاہراہ یقینی کرنے کے لئے پابند عہد ہے۔ ہمیں سمندری تجارت کی رکاوٹوں کو ختم کرنا ہوگا۔ ہماری خوشحالی سمندری تجارت پر منحصر کرتی ہے، اس میں کسی بھی طرح کی رکاوٹ ہمارے مستقبل کے لئے چیلنجز کھڑی کرسکتی ہے۔

      پانچ اصولوں پر عمل کرنا ہوگا: وزیر اعظم

      سمندری تحفظ کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی نے میٹنگ میں 5 بنیادی اصولوں کا بھی ذکر کیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر سمندری شاہراہوں سے چلانا ہے تو پانچ اصولوں پر عمل کرنا ہوگا۔

      ہمیں سمندری تجارت میں پیدا ہونے والی رکاوٹوں کو ہٹانا ہوگا، جس سے قانونی تجارت کو منظم کیا جاسکے۔

      سمندری تنازعہ کا نمٹارہ پُرامن اور بین الاقوامی ضوابط کے مطابق کیا جانا چاہئے۔

      ذمہ داری سمندری کنیکٹیوٹی کی حوصلہ افزائی کی جانی چاہئے۔

      نان اسٹیٹ ایکٹرس اور قدرتی آفات کے ذریعہ پیدا کئے گئے سمندری چیلنجز کا سامنا ایک ساتھ مل کر کیا جانا چاہئے۔ 

      ہمیں سمندری ماحولیات اور وسائل کا تحفظ کرنا ہوگا۔

      اہم وقت میں ہو رہی ہے یہ میٹنگ

      سلامتی کونسل میں یہ بحث ایسے وقت میں ہو رہی ہے، جبکہ ہندوستانی نیوی اگست کی شروعات میں دو ماہ سے زیادہ وقت کے لئے جنوبی چین ساگر، مغربی بحر الکاہل اور جنوب مشرقی ایشیا کے پانی میں فرنٹ لائن جنگی جہازوں پر مشتمل ایک بحری ٹاسک گروپ تعینات کر رہا ہے، جس کا مقصد سیاسی طور پر اہم سمندری شاہراہوں میں اپنی صورتحال کو مضبوط کرنا ہے۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: