ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

جھارکھنڈ میں خواتین کے لئےتحفظ ماحول بنانے کی کوشش، وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین کی پولیس ہیڈکوارٹر کو ممکنہ مدد کی یقین دہانی

ڈی جی پی ایم وی راو نے واضح کیا کہ خواتین کے تحفظ کے لئے ریاست گیر پیمانے پر پولیس مہم چلائے گی۔ ساتھ ہی اس کے تحت ہرکسی کو جوابدہ بنایا جارہا ہے۔ ریاست میں نشہ کے خلاف بھی مہم چلائی جا رہی ہے، اس کے لئے اسٹیٹ لیول ٹاسک فورس بنایا گیا ہے۔

  • Share this:
جھارکھنڈ میں خواتین کے لئےتحفظ ماحول بنانے کی کوشش، وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین کی پولیس ہیڈکوارٹر کو ممکنہ مدد کی یقین دہانی
جھارکھنڈ میں خواتین کے لئےتحفظ ماحول بنانے کی کوشش، وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین کی پولیس ہیڈکوارٹر کو ممکنہ مدد کی یقین دہانی

رانچی: خواتین کے تحفظ کے لئے جھارکھنڈ پولیس ہر ممکن کوششوں میں مصروف ہے۔ اسی کے تحت گزشتہ 21  اکتوبر کو ریاست گیر پیمانہ پر خواتین کے لئے ویمنس ہیلپ نمبر جاری کیا گیا، جس میں اب تک 108 میسیج ملے۔ ان میسیج میں کچھ بلینک کال سے متعلق تھے وہیں ایک معاملہ نازیبا اسنیپ سے متعلق ہے وہیں کچھ معاملے عصمت ریزی کے ہیں۔ پورے معاملے کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے ریاست کے ڈی جی پی ایم وی راؤ نےکہا کہ ان میسیج کی مدد سے جہاں پولیس معاملے کے ہاٹ اسپاٹ کا خاکہ تیارکرکے اس پر کام کرے گی۔ ڈی جی پی نے واضح کیا کہ ریاستی حکومت نے خواتین کے تحفظ کے لئے ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کی اس یقین دہانی سے پولیس کو کافی فائدہ حاصل ہوگا۔



ڈی جی پی نے واضح کیا کہ خواتین کے تحفظ کے لئے ریاست گیر پیمانے پر پولیس مہم چلائے گی۔ ساتھ ہی اس کے تحت ہرکسی کو جوابدہ بنایا جارہا ہے۔ ڈی جی پی ایم وی راو نے مزید بتایا کہ ریاست میں نشہ کے خلاف بھی مہم چلائی جا رہی ہے۔ اس کے لئے اسٹیٹ لیول ٹاسک فورس بنایا گیا ہے۔ یہ ٹاسک فورس کسی بھی پولیس تھانہ علاقہ میں نشہ کو لے کر چھاپہ ماری کرے گی۔ انہوں نےکہا کہ چھاپہ ماری کے دوران نشہ آور اشیاء برآمد ہونے پر اس تھانہ کے انچارج کو جوابدہ بنایا جائے گا۔ وہیں فائرنگ کے معاملے اور بائکرس گینگ کیلئے اس علاقہ کے ڈی ایس پی کو جوابدہ بنایا گیا ہے۔


 ڈی جی پی نے واضح کیا کہ ریاستی حکومت نے خواتین کے تحفظ کے لئے ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کی اس یقین دہانی سے پولیس کو کافی فائدہ حاصل ہوگا۔
ڈی جی پی نے واضح کیا کہ ریاستی حکومت نے خواتین کے تحفظ کے لئے ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کی اس یقین دہانی سے پولیس کو کافی فائدہ حاصل ہوگا۔


اس کے علاوہ کسی ضلع میں کسی خاتون کی مشتبہ موت کی جانکاری ملتی ہے تو ضلع کے ایس پی کو اس کی جانکاری ملنے کے ساتھ ہی وہ اسپاٹ پر پہنچیں گے اور کیس کے ڈسپوزل ہونے تک وہ اس کی مانیٹرنگ کریں گے۔ وہیں اس کے ساتھ ہی پنچایت یا دبنگ کے ذریعہ اگرکسی آبروریزی کے معاملہ کو دبانے کی کوشش کی گئی تو ان کے خلاف سخت قانونی کاروائی کی جائے گی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Oct 27, 2020 09:34 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading