உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    حمل کےدوران بالکل نہ کھائیں یہ چیزیں، ہوسکتا ہےاسقاط حمل

    حمل کےدوران ان چیزوں سے دوری بنائیں، بچے پر برا اثر پڑتا ہے۔

    حمل کےدوران ان چیزوں سے دوری بنائیں، بچے پر برا اثر پڑتا ہے۔

    حمل کےدوران ان چیزوں سےدوری بنائیں کیونکہ بچوں کی صحت پربرا اثرپڑتا ہے۔

    • Share this:
      حمل کسی بھی خاتون کےلئےسب سے خوبصورت لمحہ ہوتا ہے، لیکن اس کےساتھ  ساتھ  یہ بہت نازک دوربھی ہوتا ہے۔ اس دوران کھانے پینےکا خاص خیال رکھنا چاہئے کیونکہ جو کچھ بھی وہ کھاتی پیتی ہیں، اس کا سیدھا اثران کے پیٹ میں پل رہے بچے پرپڑتا ہے۔ اس لئے اس دوران خاص خیال رکھنا چاہئے۔

      ایسی حالت میں ہم آپ کوبتانے جارہے ہیں کچھ ایسی خاص چیزیں، جن کواس دوران بالکل نہیں کھانا چاہئے۔ کیونکہ ان کوکھانے سے اسقاط حمل ہوسکتا ہے۔ آئیے جانتے ہیں کون سی ہیں وہ چیزیں۔ اس دوران سب سے پہلےکچے پپیتےمیں لیٹکس موجود ہوتا ہے، جوحمل کی حالت کےابتدائی دنوں میں اسقاط حمل کے خطرے کوبڑھا دیتا ہے۔ پپیتے میں پپین بھی شامل ہوتا ہے، جوبچےکی مضبوطی کوروک دیا ہے، اس لئےاس دوران اس پھل کا استعمال کرنے سے بچیں۔

      اس دوران خواتین کوانگوربھی نہیں کھانا چاہئے، کیونکہ انگورکی تاثیرگرم ہوتی ہے، جو پیٹ میں پل رہے بچے کےلئےنقصاندہ ہوتا ہے۔ انگورکےاستعمال سے وقت سےقبل بچے کے پیدا ہونےکا خطرہ بھی بنا رہتا ہے۔ اس لئےاس پیریڈ (میعاد) میں اس پھل سے بھی دوری بنائے رکھیں۔

      حمل کے دوران انناس کھانا نقصاندہ ہوسکتا ہے۔ دراصل انناس میں برومیلن موجود ہوتا ہے، جس کی وجہ سے وقت سے قبل پیدائش ہونے کےامکان میں اضافہ ہوجاتا ہے۔ اس کےعلاوہ حاملہ خواتین کوایک اورچیزسے پرہیزکرنا چاہئے، وہ ہے چائنیزفوڈ (چینی کھانا)۔ جی ہاں چائنیزفوڈ میں مونواسٹیڈیم گلوٹامیٹ (ایم ایس جی) موجود ہوتا ہے، جس کے سبب بچے میں پیدائش کے بعد کسی طرح کی جسمانی کمی دیکھنے کومل سکتی ہے۔ ساتھ ہی سویا ساس میں نمک کی مقدارزیادہ ہونے کے سبب حاملہ عورت کوہائی بلڈ پریشرکے سبب حمل کے دوران پریشانی ہوسکتی ہے، اس لئے ایسی چیزوں سے پرہیز کرنا چاہئے۔
      First published: