உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    فضائیہ کے بہادر پائلٹ ابھینندن جس مگ 21 اسکواڈرن کا تھے حصہ ، اسے ریٹائر کرنے کی تیاری

    ایک اہلکار نے اس بارے میں بتایا کہ مشہور پائلٹ ونگ کمانڈر (اب گروپ کیپٹن) ابھینندن ورتھمان اس کا حصہ تھے۔ سری نگر میں قائم نمبر 51 اسکواڈرن کو 'سورڈ آرمز' کے نام سے پہچانا جاتا رہا ہے۔

    ایک اہلکار نے اس بارے میں بتایا کہ مشہور پائلٹ ونگ کمانڈر (اب گروپ کیپٹن) ابھینندن ورتھمان اس کا حصہ تھے۔ سری نگر میں قائم نمبر 51 اسکواڈرن کو 'سورڈ آرمز' کے نام سے پہچانا جاتا رہا ہے۔

    ایک اہلکار نے اس بارے میں بتایا کہ مشہور پائلٹ ونگ کمانڈر (اب گروپ کیپٹن) ابھینندن ورتھمان اس کا حصہ تھے۔ سری نگر میں قائم نمبر 51 اسکواڈرن کو 'سورڈ آرمز' کے نام سے پہچانا جاتا رہا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      ہندوستانی فضائیہ (IAF) 30 ستمبر کو مگ۔21 اسکواڈرن کو ریٹائر کرنے جا رہی ہے۔ ایک اہلکار نے اس بارے میں بتایا کہ مشہور پائلٹ ونگ کمانڈر (اب گروپ کیپٹن) ابھینندن ورتھمان اس کا حصہ تھے۔ سری نگر میں قائم نمبر 51 اسکواڈرن کو 'سورڈ آرمز' کے نام سے پہچانا جاتا رہا ہے۔ ہندوستان ٹائمز کی خبر کے مطابق ہندوستانی فضائیہ مگ 21 لڑاکا طیاروں کے اپنے چار باقی ماندہ اسکواڈرن میں سے ایک کو ریٹائر کرنے کے لیے تیار ہے۔

      ایئر فورس کے اہلکار نے بتایا کہ ابھینندن ورتھمان، جنہیں فروری 2019 میں لائن آف کنٹرول پر پاکستانی F-16 لڑاکا طیارے کو مار گرانے کے لیے ویر چکر سے نوازا گیا تھا، اس وقت اسکواڈرن کا حصہ تھے۔ یہ اسکواڈرن 1999 میں کارگل تنازعہ کے دوران 'آپریشن سفید ساگر' کا بھی حصہ تھا۔

       

      نابالغ کا ریپ کے بعد قتل، برہنہ حالت میں لاش کو کھیت میں پھینکا‏، علاقے میں پھیلی سنسنی

      ہیکرس نے اسکول میسیجنگ ایپ کو کیا ہیک، ٹیچرس اور والدین کو بھیجی برہنہ فوٹوز

      اس سے قبل یہ بتایا گیا تھا کہ آئی اے ایف نے 2025 تک تمام چار مگ 21 اسکواڈرن کو ریٹائر کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔ مگ -21 سوویت دور کا سنگل انجن ملٹی رول لڑاکا اور زمینی حملہ کرنے والا طیارہ ہے۔ اس وقت، آئی اے ایف کے پاس تقریباً 70 مگ 21 طیارے اور 50 مگ 29 قسمیں ہیں۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: