உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Presidential Election 2022: دروپدی مرمو کے حق میں 10ریاستوں میں کراس ووٹنگ سے سامنے آیا ’اپوزیشن اتحاد‘ کا سچ

    عام انتخابات سے 2 سال پہلے آسام، بہار، چھتیس گڑھ اور گوا جیسی ریاستوں میں کئی کراس ووٹنگ نے بی جے پی کے خلاف اپوزیشن کے مشترکہ محاذ کی کہانیوں کے صفحات کو بکھیر کر رکھ دیا ہے۔

    عام انتخابات سے 2 سال پہلے آسام، بہار، چھتیس گڑھ اور گوا جیسی ریاستوں میں کئی کراس ووٹنگ نے بی جے پی کے خلاف اپوزیشن کے مشترکہ محاذ کی کہانیوں کے صفحات کو بکھیر کر رکھ دیا ہے۔

    عام انتخابات سے 2 سال پہلے آسام، بہار، چھتیس گڑھ اور گوا جیسی ریاستوں میں کئی کراس ووٹنگ نے بی جے پی کے خلاف اپوزیشن کے مشترکہ محاذ کی کہانیوں کے صفحات کو بکھیر کر رکھ دیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • New Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: صدر جمہوریہ الیکشن ہونے سے پہلے ہی اس بات کی ہوا بن چکی تھی کہ جھارکھنڈ کی سابق وزیرا علیٰ دروپدی مرمو ہندوستان کی اگلی اور پہلی آدیواسی خاتون صدر جمہوریہ ہوں گی۔ حالانکہ ہندوستان میں صدر جمہوریہ کے الیکشن سے سیدھے طورپر عوام کے جذبات کا اندازہ نہیں لگایا جاسکتا ہے، اس سے اس نتیجے پر نہیں پہنچا جاسکتا ہے کہ  2024 کے لوک سبھا الیکشن میں ہوا کس طرف ہے، لیکن ایک بات اس الیکشن میں ضرور خاص ہے کراس ووٹنگ۔ یہ فیکٹر بی جے پی کی قیادت والی این ڈی اے کے حق میں ماحول بناتی ہے۔

      عام انتخابات سے 2 سال پہلے آسام، بہار، چھتیس گڑھ اور گوا جیسی ریاستوں میں کئی کراس ووٹنگ نے بی جے پی کے خلاف اپوزیشن کے مشترکہ محاذ کی کہانیوں کے صفحات کو بکھیر کر رکھ دیا ہے۔ یہاں تک کہ عام انتخابات جیسی بڑی لڑائی سے پہلے کچھ ریاستوں میں آئندہ دو سالوں میں اسمبلی انتخابات ہوں گے، ایسے میں صدر جمہوریہ الیکشن میں دیکھے گئے ووٹنگ پیٹرن نے اپوزیشن جماعتوں کے سامنے وارننگ کی گھنٹی بجا دی ہے۔ این ڈی اے امیدوار دروپدی مرمو نے اپوزیشن کے امیدوار یشونت سنہا کے خلاف یکطرفہ جیت حاصل کرکے ہندوستان کی پہلی خاتون آدیواسی صدر بننے کا اعزاز حاصل کیا ہے۔

      این ڈی اے امیدوار دروپدی مرمو کو ملے 64 فیصد ووٹ

      این ڈی اے امیدوار دروپدی مرمو نے 64 فیصد ووٹ حاصل کرکے اپنے حریف یشونت سنہا پر ایک بڑے فرق سے جیت درج کی اور ہندوستان کی 15ویں صدر جمہوریہ بن گئیں۔ رپورٹ بتاتی ہے کہ مختلف ریاستوں کے قریب 125 اراکین اسمبلی نے پارٹی لائن سے الگ دروپدی مرمو کی حمایت میں کراس ووٹنگ کی۔ ووٹنگ سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ 17 اراکین پارلیمنٹ نے بھی مرمو کے حق میں کراس ووٹںگ کی۔ ذرائع کے مطابق، سب سے زیادہ کراس ووٹنگ آسام میں درج کی گئی، جہاں تقریباً 22 غیر بی جے پی اراکین اسمبلی نے دروپدی مرمو کے حق میں ووٹ دیا۔

      شمال مشرق کے اس ریاست میں کانگریس کی قیادت والی اپوزیشن نے اسمبلی انتخابات میں 45 سیٹ حاصل کی تھی، لیکن اپوزیشن کے مشترکہ امیدوار یشونت سنہا کی حمایت میں صرف 20 ووٹ پڑے۔ اسے آسام کے وزیر اعلیٰ ہیمنت بسوا شرما کی قیادت والی بی جے پی حکومت کے لئے اچھا اشارہ مانا جاسکتا ہے۔ پارٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ صدر جمہوریہ الیکشن میں کراس ووٹنگ سے واضح ہے کہ ایسے کئی اراکین اسمبلی ہیں، جو بی جے پی کے خلاف نہیں ہیں اور اپوزیشن کے اندر بھی ان کا (ہیمنت بسوا شرما) کا دبدبہ بڑھ رہا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: