مہاراشٹرمیں 6 ماہ کے لئے صدر راج نافذ، صدرجمہوریہ نے دے دی منظوری

مہاراشٹر میں صدر راج نافذ ہونے کے بعد شیوسینا اوراین سی پی- کانگریس اتحاد کوحکومت بنانےکولےبڑا جھٹکا لگا ہے۔ حالانکہ شیوسینا نے سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کیا ہے۔

Nov 12, 2019 05:39 PM IST | Updated on: Nov 12, 2019 06:04 PM IST
مہاراشٹرمیں 6 ماہ کے لئے صدر راج نافذ، صدرجمہوریہ نے دے دی منظوری

صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند نے مہاراشٹر میں صدر راج نافذ کرنے کو منظوری دے دی ہے۔

مہاراشٹرمیں حکومت کی تشکیل پرتعطل کے درمیان مرکزی حکومت نے بڑا فیصلہ کیا ہے۔ اس دوران مہاراشٹرمیں 6 ماہ کے لئے صدرراج نافذ ہوگیا ہے۔ صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند نےصدر راج نافذ کرنے کو منظوری دے دی ہے۔ اس طرح سے شیوسینا اوراین سی پی- کانگریس اتحاد کو حکومت بنانے کولے بڑا جھٹکا لگا ہے۔ حالانکہ صدرراج نافذ ہونے کے بعد شیوسینا نے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔ شیو سینا سربراہ ادھو ٹھاکرے اورآدتیہ ٹھاکرے اپنے کئی وزراء کے ساتھ ماتوشری سے باہرنکلے ہیں۔

صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند نے مہاراشٹرمیں صدر راج نافذ کرنے کے کابینہ کی سفارش پر مہرلگادی ہے۔ انہوں نے  کابینہ کی سفارش پردستخط کردیا ہے۔ صدرجمہوریہ نے وزارت داخلہ کے ذریعہ بھیجی گئی فائل پردستخط کرکے اپنی مہرلگا دی۔ اس کے ساتھ ہی مہاراشٹر میں 24 اکتوبرسے برقرار سیاسی ڈرامے کا فی الحال خاتمہ ہوگیا ہے۔ حالانکہ  مہاراشٹرکے گورنربی ایس کوشیاری نےگزشتہ روز تیسری بڑی پارٹی این سی پی کوحکومت سازی کی دعوت دی تھی۔ انہوں نے این سی پی کوآج رات 8:30 بجے تک کا وقت دیا تھا، لیکن اس سے قبل ہی انہوں نے صدرراج نافذ کرنے کی سفارش کردی، جس کے بعد سپریم کورٹ میں اس فیصلے کو چیلنج کیا جائے گا۔

Loading...

اسی دوران کانگریس کے سینئر لیڈران جن میں احمد پٹیل، کے سی وینو گوپال اورملیکا ارجن کھڑگے شامل ہیں، یہ این سی پی سربراہ شرد پوارسے ملاقات کریں گے اورپھرحتمی فیصلہ ہوگا۔ مہاراشٹرمیں جاری سیاسی اٹھا پٹخ کے درمیان گورنر بھگت سنگھ کوشیاری کی طرف سے صدرراج کی سفارش کے بعد مرکزی کابینہ نے بھی تجویزکومنظوری دے دی ہے۔ اب ریاست میں صدر راج محض ایک قدم دوررہ گیا ہے۔ صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند کی منظوری ملتے ہی ریاست میں صدرراج نافذ ہوجائےگا۔ ریاست میں صدرراج نافذ کرنے کی سفارش کے درمیان اب شیوسینا نے بڑا قدم اٹھایا ہے۔ شیوسینا نے گورنرکے فیصلہ کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا ہے۔ عرضی میں شیوسینا نے کہا ہے کہ اسے حمایتی مکتوب پیش کرنے کے لئے گورنر نے 72 گھنٹے کا وقت نہیں دیا۔ صرف 24 گھنٹے کا وقت دیا گیا۔

کانگریس لیڈر سنجے جھا نے اس پر ٹویٹ کر کہا کہ ’ ہوشیاری نہیں! گورنر کے فیصلے کو عدالت میں چیلنج کیا جائے گا‘۔ وہیں، شیوسینا لیڈر پرینکا چترویدی نے صدر راج نافذ کئے جانے کی خبروں پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ ’ جب این سی پی کو دیا گیا وقت ختم نہیں ہوا ہے تو ایسے میں عزت مآب گورنر صدر راج کی سفارش کیسے کر سکتے ہیں‘‘؟

Loading...