உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    PM Modi In US: پی ایم مودی تین روزہ امریکی دورے پر، آج کملا ہیرس سے کرسکتے ہیں ملاقات، کواڈ سمٹ میں کریں گےشرکت

    پی ایم مودی کے واشنگٹن ڈی سی پہنچنے سے پہلے لوگ ان کے استقبال کے لیے جوائنٹ بیس اینڈریوز کے باہر پہنچ گئے تھے۔

    پی ایم مودی کے واشنگٹن ڈی سی پہنچنے سے پہلے لوگ ان کے استقبال کے لیے جوائنٹ بیس اینڈریوز کے باہر پہنچ گئے تھے۔

    وزیر اعظم نریندر مودی نے بدھ کے روز کہا کہ ان کا امریکہ کا دورہ ، ہندوستان۔ امریکہ عالمی جامع اسٹریٹجک شراکت داری کو مضبوط بنانے ، جاپان اور آسٹریلیا کے ساتھ تعلقات کو مزید مستحکم بنانے اور اہم عالمی مسائل پر تعاون کو آگے بڑھانے کا ایک سنہرا موقع ہوگا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      وزیر اعظم نریندر مودی ( PM Narendra Modi) آج صبح واشنگٹن ڈی سی جوائنٹ بیس اینڈریوز پہنچ گئے ہیں۔ پی ایم مودی کے واشنگٹن ڈی سی پہنچنے سے پہلے لوگ ان کے استقبال کے لیے جوائنٹ بیس اینڈریوز کے باہر پہنچ گئے تھے۔ اس دوران ڈاکٹر انجو پریت نے کہا ، 'ہم ان کے استقبال کے لیے پہنچے ہیں۔ ہم بہت پرجوش ہیں۔ پی ایم مودی کا یہ دورہ ہند۔ امریکہ تعلقات کو مضبوط بنانے میں اہم ثابت ہوگا۔

      وزیر اعظم مودی بدھ کے روز دارالحکومت دہلی سے ایئر فورس -1 بوئنگ 777-337 ای آر طیارے کے ذریعے امریکہ روانہ ہوئے۔ وہ جمعہ کو امریکہ میں صدر جو بائیڈن سے روبرو ملاقات کریں گے۔ جمعہ کو ، بائیڈن کواڈ ممالک کی پہلی کانفرنس کی میزبانی کریں گے۔ اس کانفرنس میں آسٹریلوی وزیر اعظم ا سکاٹ موریسن اور جاپانی وزیراعظم یوشی ہائیڈے سوگا بھی شرکت کریں گے۔


      وزیر اعظم نریندر مودی نے بدھ کے روز کہا کہ ان کا امریکہ کا دورہ ، ہندوستان۔ امریکہ عالمی جامع اسٹریٹجک شراکت داری کو مضبوط بنانے ، جاپان اور آسٹریلیا کے ساتھ تعلقات کو مزید مستحکم بنانے اور اہم عالمی مسائل پر تعاون کو آگے بڑھانے کا ایک سنہرا موقع ہوگا۔ روانگی سے قبل ایک بیان میں وزیر اعظم نے کہا کہ وہ اپنے دورے کا اختتام نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی (یو این جی اے) میں اپنے خطاب کے ساتھ عالمی چیلنجوں بالخصوص کوویڈ 19 وبائی مرض ، دہشت گردی سے نمٹنے کی ضرورت ، موسمیاتی تبدیلی پراظہارِ خیال کریں گے۔ اور دیگر اہم مسائل کا بھی اعادہ کریں گے۔


      وزیر اعظم مودی امریکی نائب صدر کملا ہیرس سے بھی ملاقات کریں گے

      وزیر اعظم کا یہ دورہ امریکی صدر جو بائیڈن کی دعوت پر ہو رہا ہے۔ اس دوران ، وزیر اعظم مودی صدر بائیڈن کے ساتھ ہندوستان امریکہ عالمی جامع اسٹریٹجک شراکت داری کا جائزہ لیں گے اور باہمی دلچسپی کے عالمی اور علاقائی مسائل پر خیالات کا تبادلہ کریں گے۔ وزیراعظم امریکی نائب صدر کملا ہیرس سے بھی ملاقات کریں گے اور دونوں ممالک کے درمیان مختلف امور بالخصوص سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبے میں تعاون کے امکانات پر غور کریں گے۔

      وزیر اعظم نے کہا کہ وہ اس دورے کے دوران کواڈ گروپ لیڈرز سمٹ میں شرکت کریں گے ، ان کے ساتھ صدر بائیڈن ، آسٹریلوی وزیر اعظم اسکاٹ موریسن اور جاپانی وزیراعظم یوشی ہائیڈے سوگا بھی ہوں گے۔ یہ کانفرنس ڈیجیٹل میڈیم کے ذریعے مارچ میں منعقدہ کواڈ ممالک کے رہنماؤں کی پہلی سمٹ میں لیے گئے فیصلوں کا جائزہ لینے کا موقع فراہم کرے گی اور ہند پیسیفک خطے کے لیے باہمی مشترکہ وژن پر مبنی مستقبل کے پروگراموں اور ترجیحات کی نشاندہی کرے گی۔ بائیڈن کے ساتھ دو طرفہ بات چیت میں ، وزیر اعظم مودی بنیادی طور پر افغانستان میں پیش رفت ، بنیاد پرستی ، انتہا پسندی اور سرحد پار دہشت گردی کو روکنے کے طریقوں اور ہندوستان امریکہ عالمی شراکت داری کو مزید وسعت دیں گے۔

      پی ایم مودی اقوام متحدہ کے 76 ویں اجلاس سے کریں گےخطاب

      انہوں نے بتایا تھا کہ بائیڈن کے امریکی صدر بننے کے بعد دونوں رہنما پہلی بار آمنے سامنے بیٹھیں گے۔ اپنے دورے کے آخری مرحلے پر ، وزیر اعظم 24 ستمبر کی شام واشنگٹن کے تمام پروگراموں میں شرکت کے بعد نیویارک پہنچیں گے جہاں وہ اگلے دن اقوام متحدہ میں جنرل اسمبلی کے 76 ویں سیشن سے خطاب کریں گے۔ وزیراعظم بڑی امریکی کمپنیوں کے اعلیٰ عہدیداروں سے بھی ملنے والے ہیں۔کواڈ گروپ میں امریکہ ، ہندوستان ، آسٹریلیا اور جاپان شامل ہیں۔ امریکہ کواڈ گروپ کا ایک اجلاس منعقد کر رہا ہے جس میں گروپ کے رہنما شرکت کریں گے۔ اس کے ذریعے امریکہ انڈین پیسفک خطے میں تعاون کو مزید بہتربنانا چاہتاہے اور گروپ کے ساتھ اپنے منصوبوں کو شیئر کرنے کا ارادہ رکھتاہے۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: