உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    PM Modi Speech in Parliament: وزیر اعظم مودی نے کانگریس لیڈر ادھیر رنجن چودھری سے لی چٹکی ، روک ٹوک پر کہی یہ بات

    PM Modi Speech in Parliament : وزیر اعظم نریندر مودی نے پیر کو لوک سبھا میں صدرجمہوریہ کے خطاب پر شکریہ کی تحریک پر بحث کا جواب دیا۔ لوک سبھا میں وزیر اعظم مودی نے کبھی چٹکی لی ، کبھی طنز کیا ، کبھی شاعری تو کبھی نہرو ..... کہہ کر اپوزیشن پر نشانہ سادھا ۔

    PM Modi Speech in Parliament : وزیر اعظم نریندر مودی نے پیر کو لوک سبھا میں صدرجمہوریہ کے خطاب پر شکریہ کی تحریک پر بحث کا جواب دیا۔ لوک سبھا میں وزیر اعظم مودی نے کبھی چٹکی لی ، کبھی طنز کیا ، کبھی شاعری تو کبھی نہرو ..... کہہ کر اپوزیشن پر نشانہ سادھا ۔

    PM Modi Speech in Parliament : وزیر اعظم نریندر مودی نے پیر کو لوک سبھا میں صدرجمہوریہ کے خطاب پر شکریہ کی تحریک پر بحث کا جواب دیا۔ لوک سبھا میں وزیر اعظم مودی نے کبھی چٹکی لی ، کبھی طنز کیا ، کبھی شاعری تو کبھی نہرو ..... کہہ کر اپوزیشن پر نشانہ سادھا ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : وزیر اعظم نریندر مودی (PM Modi Speech in Parliament) نے پیر کو لوک سبھا میں صدرجمہوریہ کے خطاب پر شکریہ کی تحریک پر بحث کا جواب دیا۔ لوک سبھا میں وزیر اعظم مودی نے کبھی چٹکی لی ، کبھی طنز کیا ، کبھی شاعری تو کبھی نہرو ..... کہہ کر اپوزیشن پر نشانہ سادھا ۔  جب کانگریس کے رکن پارلیمنٹ ادھیر رنجن چودھری نے کچھ بولنا شروع کیا تو وزیر اعظم مودی نے کہا کہ ایوان میں تھوڑی روک ٹاک ٹھیک ہے ۔ اس دوران وزیر اعظم مودی نے چودھری سے کہا کہ اس سیشن میں کم از کم کوئی آپ کو نہیں نکالے گا۔ میں آپ کو گارنٹی دیتا ہوں ۔


      وزیر اعظم مودی نے مزید کہا کہ میں حیران ہوں کہ اچانک فرض کا معاملہ کانگریس کو چبھنے لگا ۔ آپ لوگ کہتے رہتے ہیں کہ مودی جی ، نہرو جی کا نام نہیں لیتے تو آج میں آپ کی خواہش پوری کر رہا ہوں۔ فرض کے بارے میں پنڈت نہرو جی نے کہا تھا : 'میں آپ سے پھر کہہ رہا ہوں کہ آزاد ہندوستان ہے، آزاد ہندوستان کی سالگرہ ہم مناتے ہیں، لیکن آزادی کے ساتھ ذمہ داری ہوتی ہے۔ ذمہ داری صرف حکومت کی نہیں بلکہ ہر ایک آزاد شخص کی ہوتی ہے۔ اگر آپ اس ذمہ داری کو نہیں سمجھتے تو آپ پوری طرح سے آزادی کا مطلب نہیں سمجھے ۔

      وزیر اعظم مودی نے ایوان میں اپنی تقریر کے دوران کانگریس پر جم کر نشانہ سادھا ۔ انہوں نے کہا کہ انگریز چلے گئے لیکن کانگریس تقسیم کرو اور راج کرو کی پالیسی نہیں چھوڑ رہی ہے۔ تقسیم کی پالیسی اس کے ڈی این اے میں داخل گئی ہے۔ اس لئے کانگریس ٹکڑے ٹکڑے گینگ کی لیڈر بن گئی ہے ۔ کانگریس نے تمل جذبات کو بھڑکانے کی کوشش کی۔ کانگریس کی روایت اب توڑو اور راج کرو کی ہوگئی ہے۔

      وزیر اعظم نے کہا کہ کانگریس ایسے بیج بو رہی ہے جس سے علاحدگی پسندی کو تقویت ملے گی ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ یہ ملک ایک تھا، ایک ہے اور ایک رہے گا اور اسی یقین کے ساتھ آگے بڑھ رہے ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: