உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بلقیس بانو کیس میں15سال سزا کاٹ چکا قیدی وقت سے پہلے رہائی کے لئے پہنچا سپریم کورٹ، ہورہی ہے یہ مشکل

    سپریم کورٹ (Supreme Court)

    سپریم کورٹ (Supreme Court)

    رادھے شیام کو عصمت دری اور قتل کے جرم میں عمر قید کی سزا بھی سنائی گئی تھی۔ تقریباً 15 سال کی سزا کاٹ چکے رادھے شیام نے قبل از وقت رہائی کی درخواست پر غور کرنے کے لیے سپریم کورٹ میں عرضی دائر کی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: سپریم کورٹ فیصلہ کرے گی کہ آیا بلقیس بانو کیس میں 15 سال سے زیادہ عمر قید کی سزا پانے والے مجرم کی قبل از وقت رہائی کی درخواست کا فیصلہ ریاست گجرات اور مہاراشٹر کی قبل از وقت رہائی کی پالیسی کے ذریعے کیا جائے گا۔ عمر قید کی سزا کاٹ رہے رادھے شیام نے سپریم کورٹ میں عرضی داخل کرکے اس قانونی مسئلے کو اٹھایا ہے اور عدالت سے گجرات کی 1992 کی قبل از وقت رہائی کی پالیسی کے مطابق رہائی پر غور کرنے کا حکم دینے کی درخواست کی ہے۔ سپریم کورٹ نے درخواست پر گجرات حکومت کو نوٹس جاری کیا ہے۔

      سپریم کورٹ کا فیصلہ بنے گا نظیر
      اس معاملے میں اٹھائے گئے قانونی سوال پر سپریم کورٹ کا جو بھی فیصلہ آئے گا وہ اہم ہوگا کیونکہ کئی بار عدالت شکایت کنندہ یا فریق کے غیر متاثر شدہ منصفانہ ٹرائل کے مطالبے پر فوجداری مقدمے کی سماعت کو دوسری ریاست میں منتقل کر دیتی ہے۔ جرم کسی دوسری ریاست میں ہوتا ہے اور مقدمہ دوسری ریاست کی عدالت میں چلتا ہے۔ ایسے معاملات میں جو دو ریاستوں کے دائرہ اختیار میں آتے ہیں، یہ فیصلہ کرنا اہم ہوگا کہ ملزم کی قبل از وقت رہائی کے معاملے میں کون سی ریاست کی پالیسی لاگو ہوگی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Hate against minorities: ’نفرت کی سیاست ختم کریں‘سوسےزائدسابق بیوروکریٹس نےPM Modiکولکھاخط

      کیا تھا معاملہ
      بلقیس بانو کو گجرات میں گودھرا کے بعد کے فسادات میں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا۔ فسادیوں نے ان کے خاندان کے کئی افراد کو قتل کر دیا تھا۔ سپریم کورٹ نے اس کیس کی سماعت احمد آباد سے ممبئی منتقل کر دی تھی۔ اس کیس کی سماعت ممبئی میں ہوئی اور مجرموں کو وہیں سزائیں دی گئیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Uttarakhand: اتراکھنڈپولیس نےہندو مہاپنچایت کونہیں دی اجازت، دفعہ 144 نافذ، درجنوں گرفتار

      رادھے شیام کو عصمت دری اور قتل کے جرم میں عمر قید کی سزا بھی سنائی گئی تھی۔ تقریباً 15 سال کی سزا کاٹ چکے رادھے شیام نے قبل از وقت رہائی کی درخواست پر غور کرنے کے لیے سپریم کورٹ میں عرضی دائر کی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: