உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پروفیسر ارتضی کریم کو سینئر پروفیسر کے اعزاز سے نوازا گیا

    پروفیسر ارتضی کریم کو سینئر پروفیسر کے اعزاز سے نوازا گیا

    پروفیسر ارتضی کریم کو سینئر پروفیسر کے اعزاز سے نوازا گیا

    پروفیسر ارتضیٰ کریم اموری فرائض کے ساتھ ساتھ اردو ادبی حلقوں میں بھی نمایا شناخت رکھتے ہیں ۔ اردو ادب کے ذخیرے میں انہوں نے بیش بہا اضافہ کیا ہے۔ ان کی تقریباً 40 کتابیں منظرعام پر آ چکی ہیں ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : پروفیسر ارتضی کریم کو دہلی یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر پی سی جوشی نے 30 ستمبر 2021 کو سینئر پروفیسر کے اعزاز سے نوازا ۔ پروفیسر ارتضیٰ کریم موجودہ وقت میں دہلی یونیورسٹی میں آرٹس فیکلٹی کے ڈین اور شعبہ اردو میں بطور صدر کے فرائض انجام دے رہے ہیں ۔ واضح رہے کہ پروفیسر ارتضیٰ کریم اس سے پہلے این سی پی یو ایل کے ڈائریکٹر کے فرائض بھی انجام دے چکے ہیں ۔

      پروفیسر ارتضیٰ کریم اموری فرائض کے ساتھ ساتھ اردو ادبی حلقوں میں بھی نمایا شناخت رکھتے ہیں ۔ اردو ادب کے ذخیرے میں انہوں نے بیش بہا اضافہ کیا ہے۔ ان کی تقریباً  40 کتابیں منظرعام پر آ چکی ہیں ۔ ڈین اور صدر شعبہ کے کی ذمہ داری کے ساتھ ساتھ انہوں نے اس وبا کے دور میں بھی اکبر الہ آبادی کی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے اکبر الہ آبادی صدی تقریبات کی دہلی یونیورسٹی میں بنیاد ڈالی ۔

      اس موقع پر پروفیسر ارتضیٰ کریم کے شاگردوں نے اپنی خوشی کا اظہار کیا۔ ڈاکٹر متھن کمار نے ، جو ان کے شاگردوں میں سے ہیں اور موجودہ وقت میں دہلی یونیورسٹی کے شعبہ اردو میں ہی اپنی خدمات دے رہے ہیں ، کہا کہ ہر قابل فخر انسان کو اس کی قابلیت کے اعتبار سے منصب، فریضہ اور اعزازات سے نوازا جاتا ہے ، ہمارے استاد محترم کی خدمات کا جو صلہ ملا ہے وہ قابل فخر ہے ۔ مجھے بے انتہا خوشی ہو رہی ہے کہ انہیں اس اعزاز سے نوازا گیا ۔

      شعبہ کے استاد ڈاکٹر ارشاد نیازی نے بھی اپنی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ارتضی کریم کو سینئر پروفیسر کے اعزاز سے نوازا گیا ، یہ ہمارے شعبہ کے لئے خوش آئند بات ہے اور اس سے ہم سب کو ایک تقویت ملی ہے ۔ ڈاکٹر دانش حسین ، خان ڈاکٹر طارق اور ڈاکٹر شاہ نواز ہاشمی کے ساتھ ان کے بہت سے شاگرد اس موقع پر موجود تھے ۔ سبھی نے اپنی خوشی کا اظہار کیا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: