ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش وقف بورڈ کی املاک کو سرکاری تسلیم کرنے پر نیوز 18اردو کی خبر کا ہوا اثر

مدھیہ پردیش وقف بورڈ کی ساری املاک کو ریوینو ریکارڈ میں سرکار ی لکھے جانے کے معاملے میں نیوز 18 اردو کی خبر پر محکمہ ریوینیو اور ایم پی وقف بورڈ نے سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ریکارڈ کو درست کرنے کا کام شروع کردیا ہے۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش وقف بورڈ کی املاک کو سرکاری تسلیم کرنے پر نیوز 18اردو کی خبر کا ہوا اثر
مدھیہ پردیش وقف بورڈ کی ساری املاک کو ریوینو ریکارڈ میں سرکار ی لکھے جانے کے معاملے میں نیوز 18 اردو کی خبر پر محکمہ ریوینیو اور ایم پی وقف بورڈ نے سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ریکارڈ کو درست کرنے کا کام شروع کردیا ہے۔

بھوپال: مدھیہ پردیش وقف بورڈ کی ساری املاک کو ریوینو ریکارڈ میں سرکار ی لکھے جانے کے معاملے میں نیوز 18 اردو کی خبر پر محکمہ ریوینیو اور ایم پی وقف بورڈ نے سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ریکارڈ کو درست کرنے کا کام شروع کردیا ہے۔ مدھیہ پردیش کے 52 اضلاع میں ایم پی وقف بورڈکی زمینیں موجود ہیں، مگر ریکارڈ کو درست کرنے کا عمل صوبہ کے 11 اضلاع میں شروع کردیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ مدھیہ پردیش وقف بورڈ کے پاس چھبیس ہزار چار سو اٹھائیس (26428) پراپرٹی اس کے ریکارڈ میں درج تو ہیں، لیکن محکمہ ریوینو نے جب 2012 سے2017 کے درمیان میں اپنا ریکارڈ کمپوٹر پر اپ لوڈ کیا تو اس میں زمینوں کے اندراج کے لئے سرکاری اور غیر سرکاری زمین کا ہی کالم بنایا گیا۔ ایم پی وقف بورڈ کی سبھی زمینیں ریوینیو ریکارڈ میں سرکاری لکھ دی گئیں اور ایم پی وقف بورڈ کو ہوش نہیں رہا۔ نیوز 18 کی خبرکے بعد کمل ناتھ حکومت میں اس کام کو لے کر سابق وزیر اقلیتی فلاح وبہبود عارف عقیل کی صدارت میں کئی میٹنگوں کا انعقاد کیا گیا اور اس سے پہلے کہ ریکارڈ درست ہوتا صوبہ میں حکومت کی تبدیلی ہوگئی۔ کورونا قہر میں اس معاملے میں وقف بورڈ اور محکمہ ریوینیو دونوں کے ذمہ داران سوتے رہے او رجب  نیوز 18 نے اس معاملے پر 29 ستمبر کو ایک بار پھر اٹھایا تو ایم پی وقف بورڈ کے ساتھ محکمہ ریوینیو کے افسران خواب غفلت سے بیدار ہوئے۔

ایم پی وقف بورڈ کمپوٹرائزیشن پروجیکٹ کے نوڈل افسر ڈاکٹر اکمل یزدانی کہتے ہیں کہ یہ بڑی راحت کی خبر ہے کہ وقف بورڈ کے ریکارڈ کو درست کرنے کو لے کر کام شروع ہوگیا ہے اور اب تک کام شروع کرنے کو لے کر صوبہ کے گیارہ اضلاع سے ان کے پاس وہاں کی ضلع انتظامیہ اور محکمہ ریوینیو کے افسران کے خط آچکے ہیں۔ دوسرے اضلاع  میں بھی کام شروع ہونےکی اطلاعات ہیں، لیکن ابھی تک تحریری طور پر انہیں لکھ کر کچھ نہیں دیا گیا ہے۔ ایم پی وقف بورڈ ریکارڈ درست کرنے کو لے کرسبھی ضلع کو اور محکمہ ریوینو کو سبھی ریکارڈ ارسال کر چکا ہے اور امید کی جاتی ہے کہ جلد ہی ریکارڈ درست ہو جائے گا اور ایم پی وقف بورڈ کی سبھی زمینیں جو محکمہ ریوینو میں سرکاری لکھ دی گئی ہیں انہیں ریکارڈ میں ایم پی وقف بورڈ املاک لکھ دیا جائے گا۔

بھارتیہ سماج سنگھ  ایم پی یوتھ ونگ کے  صدر شاہ ویز سکندر کہتے ہیں کہ ہماری لڑائی صرف ریکارڈ کو درست کرنے تک محدود نہیں ہے بلکہ اس سے آگے کی بھی ہے۔ ریکارڈ درست کرنے کے ساتھ ہماری کوشش ان زمینوں کی واپسی ہے، جس پر لوگوں نے سرکاری زمین سمجھ کر قبضہ بھی کرلیا ہے اور کئی جگہ پر انہیں فروخت کرکے ان پر بڑی بڑی کالونیاں تعمیر کر دی گئی ہیں۔ کھنڈوا، برہانپور، راگھو گڑھ میں زمینی مافیاؤں نے ایم پی وقف بورڈ کی زمینوں کو بہت نقصان پہنچایا ہے۔ ہمیں بتایا گیا ہے کہ 11 اضلاع میں ریکارڈ کو درست کرنے کا کام شروع ہوگیا ہے۔ ہم اس کا استقبال کرتے ہیں اور اس کے لئے انتظامیہ و حکومت کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ تاہم، ہم اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک ایم پی وقف بورڈ کی سبھی زمینوں کو محکمہ ریوینو کے ریکارڈ میں درست نہیں کردیا جاتا اور وہ زمینں جن پر قبضہ ہو چکا ہے، حکومت انہیں خالی کروا کر واپس نہیں کر دیتی ہے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Oct 09, 2020 11:51 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading