ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

گجرات میں شہریت ترمیمی قانون مخالف بند کے دوران تشددپسندانہ مظاہرہ

شہریت ترمیمی قانون اور قومی آبادی رجسٹر کے خلاف منعقد بند کا گجرات میں ملا جلا اثر رہا حالانکہ اس دوران ریاست کی معاشی راجدھانی کہے جانے والے سب سے بڑے شہراحمدآباد کے اقلیتی اکثریتی مرزاپور اور شاہ عالم علاقوں میں تشدد پسندانہ مظاہرہ بھی ہوا

  • Share this:
گجرات میں شہریت ترمیمی قانون مخالف بند کے دوران تشددپسندانہ مظاہرہ
گجرات میں شہریت ترمیمی قانون مخالف بند کے دوران تشددپسندانہ مظاہرہ۔(تصویر:نیوز18 گجراتی)۔

شہریت ترمیمی قانون اور قومی آبادی رجسٹر کے خلاف منعقد بند کا گجرات میں ملا جلا اثر رہا حالانکہ اس دوران ریاست کی معاشی راجدھانی کہے جانے والے سب سے بڑے شہراحمدآباد کے اقلیتی اکثریتی مرزاپور اور شاہ عالم علاقوں میں تشدد پسندانہ مظاہرہ بھی ہوا۔ شاہ عالم میں بھیڑ کے پتھراؤ میں ایک اسسٹنٹ پولس کمشنر اورخاتون پولس اہلکار سمیت کچھ پولس اہلکار زخمی ہوگئے۔ پولس نے بھیڑکوقابو میں کرنے کے لئے آنسو گیس کے گولے بھی داغے اورلاٹھی چارج بھی کیا۔ کچھ لوگوں کو حراست میں بھی لیا گیا ہے۔ پولس کی گاڑیوں پر بھی پتھراؤ کیا گیا ہے۔


ایک سٹی بس کو بھی نقصان پہنچایا گیا۔اس علاقے میں سٹی بسوں کو شام کو بند کردیا گیا ہے اور احتیاط کے طور پر بڑی تعداد میں پولس اہلکاروں کو تعینات کیا گیاہے۔ شام کو صورت حال تناؤ سے پرہوگئی۔ پولس ڈپٹی کمشنر(قانون وانصرام) وجےپاٹل نے بتایا کہ شاہ عالم علاقے میں بغیر منظوری کے ایک ریلی نکالنے پر اسے روک رہی پولس پر پتھراؤ کیا گیا جس میں کئی پولس اہلکار زخمی ہوگئے۔ ریاستی ریزرو پولس فورس کی دو کمپنیاں اور مقامی پولس کو تعینات کرکے صورت حال کو قابو میں کیا گیا ہے۔


پولس کمشنر اشیش بھاٹیہ نے کہا ہے کہ صورت حال پر بہت باریکی سے نظر رکھی جارہی ہے۔ادھر ریاست کے دیگر علاقوں میں بند کا زیادہ اثر نہیں دکھا۔ ودودرہ، بھڑوچ وغیرہ میں اقلیتی اکثریتی علاقوں میں بھی بند کا کچھ اثر دیکھا گیا۔ سوراشٹر علاقے کے زیادہ تر مقامات راجکوٹ، بھاؤ نگر، جام نگر اور جنوبی گجرات کے سورت میں بند کا زیادہ اثر نہیں رہا۔

 



 



First published: Dec 19, 2019 07:55 PM IST