ہوم » نیوز » وطن نامہ

شہریت ترمیمی بل 2019: شمال مشرقی ریاستوں میں بندسےعام زندگی مفلوج،مغربی بنگال میں احتجاج

ہندوستان کی شمال مشرقی ریاستوں خاص طورپرآسام میں شہریت ترمیمی بل کے خلاف احتجاج کرنے والے لوگوں کا غصہ اب سڑکوں پرنظرآرہاہے۔

  • Share this:
شہریت ترمیمی بل 2019: شمال مشرقی ریاستوں میں بندسےعام زندگی مفلوج،مغربی بنگال میں احتجاج
ہندوستان کی شمال مشرقی ریاستوں خاص طورپرآسام میں شہریت ترمیمی بل کے خلاف احتجاج کرنے والے لوگوں کا غصہ اب سڑکوں پرنظرآرہاہے۔

شہریت ترمیمی بل 2019، طویل بحث و تکراراور احتجاج کے دوران پیرکی دیررات لوک سبھا میں منظورہوگیاہے۔ اب اس بل کو راجیہ سبھا میں پیش کرنے کی تیاریاں کی جارہی ہیں۔ ہندوستان کی شمال مشرقی ریاستوں خاص طورپرآسام میں شہریت ترمیمی بل کے خلاف احتجاج کرنے والے لوگوں کا غصہ اب سڑکوں پرنظرآرہاہے۔ نارتھ ایسٹ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن (این ای ایس او) اور آل آسام اسٹوڈنٹس یونین (اے اے ایس یو) نے منگل کی صبح 5 بجے سے شام 5 بجے تک 12 گھنٹے کی بند کی کال دی ہے ۔این ای ایس او کے اس بند کو 16 تنظیموں اور متعدد سیاسی جماعتوں کی حمایت حاصل ہے۔ اس دوران شہر کے اسکول، کالج، بازار اوردکانیں بندنظرآرہے ہیں۔


شمال مشرقی ریاستوں خاص طورپرآسام میں شہریت ترمیمی بل کے خلاف احتجاج
شمال مشرقی ریاستوں خاص طورپرآسام میں شہریت ترمیمی بل کے خلاف احتجاجc


آسام کے بہت سے شہروں میں سڑکوں پر نکلنے والی آل آسام اسٹوڈنٹس یونین کے کارکنوں نے اس سے قبل شہریت بل کے خلاف احتجاجی ریلی نکال لی۔ احتجاج کرنے والے لوگ "آر ایس ایس اور بی جے پی گو بیک" کے نعرے لگا رہے تھے۔اسی دوران ، مقامی فنکار ، ادیب ، دانشور اوراپوزیشن جماعتوں کے لیڈربھی مختلف طریقوں سے احتجاجی مظاہرے کررہے ہیں۔احتجاجیوں نے حکمران جماعت کے خلاف نعرے بازی بھی کی۔ اسی دوران، حکومت کا علامتی پتلا بھی نذرآتش کیاگیا۔


آسام میں 6 برادریوں کو شیڈول ٹرائب کا درجہ دینے کے مطالبے پر دباؤ ڈالنے کے لئے آل منی پور اسٹوڈنٹس یونین کے 48 گھنٹوں کے آسام بند کے پہلے دن بیشتراضلاع میں عام زندگی متاثرہوئی۔ پیر کے روز صبح 5 بجے بند کے آغاز کے بعد لکھیم پور ، دھیماجی ، ٹنسوکیہ ، ڈبروگڑھ ، سیواساگر ، جورھاٹ ، ماجوئلی ، موریگاؤں ، بونگیگون ، اددالگوری ، کوکراجہار اور بکسہ اضلاع میں سیکڑوں افراد سڑکوں پرنکال کراحتجاج کررہے ہیں۔ متعدد مقامات پرمظاہرین نے ٹائرجلا کر قومی شاہراہ کو بند کردیا۔


ڈبروگڑھ میں احتجاج کے دوران ایک گاڑی کو آگ لگادی گئی۔
ڈبروگڑھ میں احتجاج کے دوران ایک گاڑی کو آگ لگادی گئی۔



بند ہونے کی وجہ سے کئی سیاح کازیرنگا نیشنل پارک میں پھنس گئے تھے۔ انہیں گوہاٹی لے جانے کے لئے کوئی پبلک ٹرانسپورٹ دستیاب نہیں ہے۔ ایسی صورتحال میں پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے دببرگڑھ اور گوہاٹی میں لاٹھی چارج کا ستعمال کیا۔ کچھ لمبی مسافت والی بسیں پولیس کے نگرانی میں چلائی جارہی ہے۔  




آسام میں احتجاج کیوں؟
دراصل،شمال مشرقی ریاستوں کے مقامی لوگوں کا ایک بہت بڑا طبقہ اس بات سے خوفزدہ ہے کہ مہاجرین کوشہریت ملنے سے مقامی لوگوں کی شناخت ، زبان اورثقافت کوخطرہ لاحق ہوجائیگا۔

 شہریت بل کے خلاف احتجاجی ریلی
شہریت بل کے خلاف احتجاجی ریلی


مغربی بنگال میں بھی احتجاج
مغربی بنگال میں بھی شہریت ترمیمی بل کی مخالفت کی جارہی ہے۔ ٹی ایم سی نے پیر کی شام کولکاتہ میں اس بل کے خلاف احتجاجی مارچ نکا لا۔ وزیراعلیٰ ممتا بنرجی نے کہا ہے کہ وہ کسی بھی قیمت پرشہریت ترمیمی بل کی مخالفت کریں گی۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے کسی بھی شہری کی حیثیت کومہاجرسے تعبیر نہیں کیاجاسکتاہے۔

مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی: فائل فوٹو
مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی: فائل فوٹو


ترنمول کانگریس کی صدر ممتا بنرجی نے کھڑگ پور میں ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ این آر سی اور شہریت بل سے گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ ہم مغربی بنگال میں اسے نافذ نہیں کرینگے۔ممتا بنرجی نے کہا، 'اس ملک کا ایک بھی شہری مہاجر نہیں بن سکتاہے۔ کچھ لوگ سیاسی بیان بازی سے خوف و ہراس پھیلانے کی کوشش کررہے ہیں، انہوں نے کہا کہ، میں ایک بات واضح کردوں کہ این آر سی اور شہریت ترمیمی بل بنگال میں کام نافذ نہیں ہوگا۔ ذات پات اور مذہب کی بنیاد پر این آر سی یاشہریت ترمیمی بل پرعمل آوری نہیں کی جاسکتی ہے
پی ٹی آئی ان پٹ کے ساتھ نیوز18 ہندی کی رپورٹ
First published: Dec 10, 2019 10:36 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading