உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مہاراشٹر: پال گھر کے گاوں میں پہلی مرتبہ ڈرون سے پہنچائی گئی کورونا ویکسین

    ڈرون کے ذریعے پہنچائی جارہی ہے کورونا ویکسین۔ (فائل فوٹو)

    ڈرون کے ذریعے پہنچائی جارہی ہے کورونا ویکسین۔ (فائل فوٹو)

    یہ کوئی پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ ڈرون کے ذریعے کورونا ویکسین کی ڈیلیوری کی گئی ہے۔ اس سے پہلے تلنگانہ اور اُتراکھنڈ کے گاوں میں بھی ویکسین پہنچانے کے لئے ڈرون کا استعمال کیا جاچکا ہے۔ تلنگانہ میں ستمبر میں حیدرآباد سے 75 کلو میٹر دور وقارآباد میں ڈرون کے ذریعے دوائیں پہنچائی گئیں تھیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ملک میں کورونا وائرس کے خلاف ویکسین (Corona Vaccine) لگانے کا کام اعلیٰ سطح پر لگاتار جاری ہے۔ ملک کے کئی ایسے علاقے بھی ہیں،جہاں ڈرون (Vaccine Delivered from Drone) کے ذریعے ویکسین کو گاوں تک پہنچایا جارہا ہے۔ اس درمیان مہاراشٹر (Maharashtra) کے پال گھر ضلع (Palghar) کے جاٹ گاوں میں بھی ریاستی محکمہ صحت کی جانب سے ڈرون کے ذریعے ویکسین پہنچائی گئی ہے۔ اس مہم کی شروعات ایڈیشنل چیف سکریٹری(صحت)ڈاکٹر پردیپ ویاس کی جانب سے کی گئی۔ عام طور پر جاٹ گاوں پہنچنے میں گھنٹے بھر کا وقت لگتا تھا، لیکن ڈرون کے ذریعے محض 9.5 منٹ میں اسے پہنچادیاگ یا۔

      ریاستی محکمہ صحت کی ڈپٹی ڈائریکٹر (کونکن) ڈاکٹر گوری راٹھوڑ کی جانب سے کہا گیا ہے، ’پال گھرکے جغرافیائی حالات یا سڑکیں ویکسین پہنچانے کے لئے کافی مشکل ہیں۔ ڈرون کی مدد سے اُنہیں 10 منٹ کے اندر پہنچا دیا گیا ہے۔ پہلے اُنہیں پہنچانے میں ایک گھنٹہ لگا تھا،’ وہیں ڈاکٹر پردیپ ویاس نے بتایا، ’موجودہ حالات میں اس پروجیکٹ پر پائلٹ پروجیکٹ کے طور پر عمل کیا جارہا ہے تا کہ یہ جانچ سکیں کہ آگے کن علاقوں میں انہیں وسعت دی جاسکتی ہے۔ یہ ڈرون 15 سے 20 کلو میٹڑ تک جاسکتے ہیں اور ان کے ذریعے 5 کلو یا اُس سے زیادہ وزن کا سامان بھیجا جاسکتا ہے۔‘

      اس ڈرون کو ممبئی کے رہنے والے نوجوان دھول گھیلاشا اڑاتے ہیں۔ اُن کا کہنا ہے، ’ہمارا بیس اسٹیشن جواہر میں ہے۔ اس پروجیکٹ کی پائلٹ فلائٹ جاٹ گاوں تک تھی۔ عام طور پر اس میں ایک گھنٹہ لگتا تھا لیکن ڈرون کے ذریعے صرف 9.5 منٹ میں ویکسین کی 300 ڈوز کو جاٹ گاوں پہنچا دیا گیا۔

      یہ کوئی پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ ڈرون کے ذریعے کورونا ویکسین کی ڈیلیوری کی گئی ہے۔ اس سے پہلے تلنگانہ اور اُتراکھنڈ کے گاوں میں بھی ویکسین پہنچانے کے لئے ڈرون کا استعمال کیا جاچکا ہے۔ تلنگانہ میں ستمبر میں حیدرآباد سے 75 کلو میٹر دور وقارآباد میں ڈرون کے ذریعے دوائیں پہنچائی گئیں تھیں۔


      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: