உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ٹیم کیپٹن نے عروسہ عالم کے ساتھ سونیا گاندھی کی تصویر ٹویٹ کی ، جانچ سے پیچھے ہٹی چننی سرکار

    ٹیم کیپٹن نے عروسہ عالم کے ساتھ سونیا گاندھی کی تصویر ٹویٹ کی،جانچ سے پیچھے ہٹی چننی سرکار

    ٹیم کیپٹن نے عروسہ عالم کے ساتھ سونیا گاندھی کی تصویر ٹویٹ کی،جانچ سے پیچھے ہٹی چننی سرکار

    کیپٹن کے میڈیا ایڈوائزر کی جانب سے عروسہ عالم کی سونیا گاندھی کے ساتھ تصویر ٹویٹر پر شیئر کرنے کے بعد اب ریاست کے نائب وزیر اعلیٰ سکھجندر سنگھ رندھاوا بھی اس معاملہ میں آئی ایس آئی کے تعلق کی جانچ کے مطالبہ سے پیچھے ہٹ گئے ہیں ۔

    • Share this:
      چندی گڑھ : سابق وزیراعلیٰ پنجاب کیپٹن امریندر سنگھ کی پاکستانی خاتون دوست عروسہ عالم پر سیاسی پارٹیوں میں مچا ہنگامہ تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے ۔ کیپٹن کے میڈیا ایڈوائزر کی جانب سے عروسہ عالم کی سونیا گاندھی کے ساتھ تصویر ٹویٹر پر شیئر کرنے کے بعد اب ریاست کے نائب وزیر اعلیٰ سکھجندر سنگھ رندھاوا بھی اس معاملہ میں آئی ایس آئی کے تعلق کی جانچ کے مطالبہ سے پیچھے ہٹ گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ دو ممالک کا معاملہ ہے اور را اس کی جانچ کر سکتی ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ نائب وزیر اعلی رندھاوا نے ہی یہ معاملہ شروع کیا تھا اور اب ریاست کی سبھی سیاسی پارٹیوں نے کانگریس کو گھیرنا شروع کردیا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ رندھاوا نے جانچ مکمل کرنے کے حوالے سے اپنا ٹویٹ ہٹا دیا ہے۔

      کانگریس صدر نوجوت سدھو اور کیپٹن سنگھ کے درمیان شروع ہونے والا جھگڑا اب کیپٹن سنگھ کی پاکستان کی خاتون دوست تک پہنچ گیا ہے۔ اب اس جھگڑے میں سدھو کی اہلیہ نوجوت کور سدھو بھی کود پڑی ہیں۔ انہوں نے توآج وہ تصویر شیئر کی جس میں پنجاب پولیس کے سابق ڈائریکٹر جنرل دنکر گپتا اور سابق چیف سکریٹری ونی مہاجن کے درمیان گاڑی میں عروسہ عالم بیٹھی ہیں۔ انہوں نے یہاں تک کہ دیا کہ عروسہ عالم ہی پنجاب کی ڈی جی پی تھیں۔

      علاوہ ازیں کیپٹن سنگھ نے آج میڈیا ایڈوائزر کے ذریعہ ایک ٹویٹ میں کہا کہ نائب وزیر اعلیٰ سکھجندر رندھاوا آپ کہتے ہیں کہ عروسہ اور آئی ایس آئی تعلقات کی تحقیقات سے میں پریشان ہوگیا ہوں ، لیکن حقیقت یہ ہے کہ پریشان اور گمراہ توآپ لگ رہے ہیں ۔ کیا آپ نے ان برسوں میں کسی معاملہ پر مجھے پریشان دیکھا۔ اب آپ عروسہ عالم کے خلاف اور مبینہ تحقیقات پر اپنے ذہن کو پختہ کریں۔

      انہوں نے کہا کہ جہاں تک برگاڑی تحقیقات کا سوال ہے تو گروگرنتھ صاحب کی قسم کھاو کہ برگاڑی معاملہ کی جانچ کے تعلق سے انکوائری افسر کنور وجے پرتاپ سنگھ اور رنبیر سنگھ کھٹرا کی تقرری آپ کی سفارش پرنہیں ہوئی تھی ۔ اس لئے میرے خلاف الزام تراشی میں پھنسنے کی بجائے اپنے کام ہر توجہ دو۔ الیکشن میں وقت کم ہے۔

      نیوز ایجنسی یو این آئی اے کے ان پٹ کے ساتھ ۔ 
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: