உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    درد سے تڑپتی رہی حاملہ خاتون ، نہیں آیا اسپتال کا عملہ ، پھر ہوا کچھ ایسا سبھی رہ گئے حیران

    درد سے تڑپتی رہی حاملہ خاتون ، نہیں آیا اسپتال کا عملہ ، پھر ہوا کچھ ایسا سبھی رہ گئے حیران

    درد سے تڑپتی رہی حاملہ خاتون ، نہیں آیا اسپتال کا عملہ ، پھر ہوا کچھ ایسا سبھی رہ گئے حیران

    Punjab Latest news : خاتون کا کہنا ہے کہ اس کو اسپتال کی جانب سے دوائیں تو دی گئیں ، لیکن زچگی میں مدد کرنے کیلئے کوئی بھی ڈاکٹر نہیں آیا ۔

    • Share this:
      ملک میں آئے دن اسپتالوں کی لاپروائی کی کہانیاں سامنے آتی رہتی ہیں ۔ کچھ ایسا ہی جمعرات کو پنجاب کے لدھیانہ میں واقع سول اسپتال میں دیکھنے کو ملا ۔ سول اسپتال کے مدر اینڈ چائلڈ استپال کے لیبرروم اسٹاف نے لاپروائی کی حدیں پار کردیں ۔ جمعرات کو درد زہ سے تڑپتی ہوئی ایک حاملہ خاتون اسپتال پہنچی ، لیکن اسٹاف کو اس کا درد محسوس نہیں ہوا اور خاتون نے پارک میں ہی بچے کو جنم دیا ۔

      بچے کو جنم دینے کے بعد خاتون نے بتایا کہ وہ ریگولر جانچ کیلئے اسپتال آئی تھی ۔ جانچ کے بعد اسپتال نے ایمبولینس بلائی ۔ میں اپنے شوہر کی تلاش میں پارک میں بیٹھنے چلی گئی ، جہاں درد شروع ہوا اور میں نے بچے کو جنم دے دیدیا ۔ خاتون کا کہنا ہے کہ اس کو اسپتال کی جانب سے دوائیں تو دی گئیں ، لیکن ڈیلیوری میں مدد کرنے کیلئے کوئی بھی ڈاکٹر نہیں آیا ۔



      وہیں اسپتال انتظامیہ کے کام کاج پر سوالیہ نشان لگنے کے بعد وہاں کے ڈاکٹرس کی وضاحت سامنے آئی ہے ۔ اسپتال کی ایس ایم او ڈاکٹر امرجیت کور کا کہنا ہے کہ معاملہ ان کی نوٹس میں لایا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ 26 ہفتوں کو حاملہ خاتون کو وقت سے پہلے درد زہ کے ساتھ اینیمیا اور پیلیا کے علاج کیلئے اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا ۔

      کور نے کا کہنا ہے کہ جب اسپتال نے ای سی جی کیلئے ایمبولینس کا بندوبست کیا تو وہ پارک میں جاکر بیٹھ گئی ، جہاں پر اس کو درد زہ شروع ہوا اور اس نے بچے کو جنم دیا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: