உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Sidhu Moose Wala Murder: سدھو موسے والا کے اہل خانہ کا پوسٹ مارٹم کروانے سے انکار، کیا این آئی اے جانچ کا مطالبہ

    Sidhu Moose Wala Murder: سدھو موسے والا کے اہل خانہ کا پوسٹ مارٹم کروانے سے انکار، کیا این آئی اے جانچ کا مطالبہ ۔ (Twitter Photo)

    Sidhu Moose Wala Murder: سدھو موسے والا کے اہل خانہ کا پوسٹ مارٹم کروانے سے انکار، کیا این آئی اے جانچ کا مطالبہ ۔ (Twitter Photo)

    Sidhu Moose Wala Shot Dead: سدھو موسے والا کے اہل خانہ نے گلوکار کی لاش کا پوسٹ مارٹم کرانے سے انکار کر دیا ہے۔ لواحقین نے اس قتل کیس کی تحقیقات این آئی سے کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔

    • Share this:
      چندی گڑھ: سدھو موسے والا کے اہل خانہ نے گلوکار کی لاش کا پوسٹ مارٹم کرانے سے انکار کر دیا ہے۔ لواحقین نے اس قتل کیس کی تحقیقات این آئی سے کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔ ایسے میں موسے والا کی آخری رسومات میں تاخیر ہو سکتی ہے۔ رشتہ داروں کا کہنا ہے کہ اس قتل کے تار بین الاقوامی سطح پر جڑے ہوئے ہیں، اس لیے اس معاملہ میں این آئی اے کی جانچ ہونی چاہئے۔

      ان کا کہنا ہے کہ انہیں پنجاب پولیس کی ایس آئی ٹی کی جانچ پر کوئی اعتراض نہیں ہے، لیکن این آئی اے اور دیگر ایجنسیوں کو بھی اس میں شامل ہونا چاہئے۔ نیز پنجابی گلوکار کے اہل خانہ نے ڈی جی پی سے وضاحت طلب کی ہے کہ سدھو موسے والا کی سیکورٹی واپس لینے کی خبر کیوں لیک ہوئی؟۔ ایک میڈیا رپورٹ میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ موسے والا کی گزشتہ دو روز سے بیرون ملک سے مسلسل ریکی کی جارہی تھی۔

       

      یہ بھی پڑھئے : سدھو موسے والا کا قتل، گینگسٹر گولڈی برار کے لنکس کی تلاشی جاری


      کینیڈا میں بیٹھے گینگسٹر گولڈی برار نے گلوکار سدھو موسے والا کے قتل کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ گولڈی برار تہاڑ جیل میں بند گینگسٹر لارنس بشنوئی کے گینگ کا رکن ہے۔ اہل خانہ کا کہنا ہے کہ گزشتہ 9 دنوں سے سدھو کو مسلسل سوشل میڈیا کے ذریعہ جان سے مارنے کی دھمکیاں مل رہی تھیں۔ لیکن موسے والا نے اس سلسلے میں نہ تو ضلع پولیس کو کوئی شکایت دی اور نہ ہی اپنے سیکورٹی اہلکاروں کو اطلاع دی تھی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : پنجابی گلوکار اورکانگریس لیڈر سدھو کا گولی مار کر قتل، جانیں پورا معاملہ


      قابل ذکر بات یہ ہے کہ اس 28 سالہ پنجابی گلوکار کا 29 مئی کو مانسا ضلع میں دن دہاڑے گولی مار کر قتل کر دیا گیا تھا۔ سدھو موسے والا کی تھار جیپ پر 30 سے ​​زائد گولیاں چلائی گئی تھیں۔ سدھو کے والد بلکور سنگھ کے مطابق جب ان کے بیٹے پر حملہ ہوا تو وہ کچھ ہی دوری پر دوسری گاڑی میں موجود تھے۔

      انہوں نے بتایا کہ ایک کرولا کار ان کے بیٹے کی تھار جیپ کا پیچھا کر رہی تھی۔ جواہر گاؤں کے مضافات میں کھڑی سفید بولیرو میں سوار چار مسلح افراد نے سدھو موسے والا کی تھار جیپ پر فائرنگ کر دی، جس سے اس کی موت ہوگئی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: