ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

راجستھان بحران: پرینکا گاندھی کی مداخلت پر پھر شروع ہوئی سچن پائلٹ سے بات، کانگریس دفتر میں پوسٹر بھی لگے

کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا (Priyanka Gandhi) اب راجستھان کے سیاسی بحران کو حل کرنے کے لئے سامنے آئی ہیں۔ ان کی مداخلت پر ناراض سچن پائلٹ (Sachin Pilot) سے پھر سے بات چیت شروع ہوئی ہے، تاکہ حالات کو بہتر کیا جاسکے۔

  • Share this:
راجستھان بحران: پرینکا گاندھی کی مداخلت پر پھر شروع ہوئی سچن پائلٹ سے بات، کانگریس دفتر میں پوسٹر بھی لگے
راجستھان بحران: پرینکا گاندھی کی مداخلت پر پھر شروع ہوئی سچن پائلٹ سے بات

جے پور: وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت اور نائب وزیر اعلیٰ سچن پائلٹ کے درمیان سیاسی رسہ کشی نے کانگریس اعلیٰ قیادت کی پریشانی بڑھا دی ہے۔ تمام کوششوں کے باوجود پیر کو سچن پائلٹ (Sachin Pilot) کی غیر موجودگی میں ہی راجستھان کانگریس اراکین اسمبلی کی میٹنگ ہوئی۔ اس درمیان ذرائع کے حوالے سے یہ خبر سامنے آئی ہے کہ کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا (Priyanka Gandhi) اب اس سیاسی بحران کو حل کرنے کے لئے سامنے آئی ہیں۔ ان کی مداخلت پر ناراض سچن پائلٹ سے پھر سے بات چیت شروع ہوئی ہے، تاکہ حالات کو بہتر کیا جاسکے۔ اطلاعات کے مطابق، کانگریس دفتر سے سچن پائلٹ کے اتارے گئے ہورڈنگس کو پھر سے لگا دیئے گئے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ راجستھان کے سیاسی حالات سے کانگریس ہائی کمان بے حد فکر مند ہے۔


اس سے قبل راجستھان کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت کی رہائش گاہ پر بلائی گئی اراکین اسمبلیکی میٹنگ میں 100 سے زیادہ اراکین اسمبلی کے پہنچنے کے بعد دو دن سے چل رہی سیاسی رسہ کشی کی پیچیدگی کو دیکھا۔ وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت نے 10 سے زیادہ آزاد اراکین اسمبلی کی حمایت کے ساتھ میڈیا کو پیغام دیا کہ ان کی حکومت محفوظ ہے۔ حالانکہ اس میٹنگ میں سچن پائلٹ اور ان کے کچھ حامی اراکین اسمبلی شامل نہیں ہوئے۔ سچن پائلٹ کے قریبی ذرائع نے یہ دعویٰ بھی کیا تھا کہ ان کے گروپ کو 25 اراکین اسمبلی کی حمایت حاصل ہے۔ انہوں نے واضح طور پر کہا تھا کہ اشوک گہلوت کی صدارت میں ہونے والی اراکین اسمبلی کی میٹنگ میں شامل نہیں ہوں گے۔ بہرحال، بدلتے سیاسی حالات کے درمیان اب نائب وزیر اعلیٰ سچن پائلٹ کو منانے کی قواعد پھر سے شروع ہوگئی ہے۔


واضح رہے کہ کانگریس کے راجستھان انجارج اویناش پانڈے نے آج صبح میڈیا کے ساتھ بات چیت میں ریاستی حکومت کو غیر مستحکم اور کمزور کرنےکا الزام بی جے پی پر عائد کیا تھا۔ اویناش پانڈے نے کہا تھا کہ بی جے پی کی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔ راجستھان کانگریس کے تمام اراکین اسمبلی متحد ہیں۔ انہوں نے کہا تھا کہ بی جے پی ہر ریاست میں غیرجمہوری طریقے سے منتخب حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی سازش کر رہی ہے۔ وہ کرناٹک اور مدھیہ پردیش کی طرح راجستھان میں بھی ایسے واقعات کو دہرانا چاہتی ہے، لیکن اسے کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 13, 2020 06:01 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading