உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Rajya Sabha Election : راجیہ سبھا الیکشن میں ووٹ نہیں ڈال سکیں گے نواب ملک اور انل دیشمکھ

    Rajya Sabha Election : راجیہ سبھا الیکشن میں ووٹ نہیں ڈال سکیں گے نواب ملک اور انل دیشمکھ

    Rajya Sabha Election : راجیہ سبھا الیکشن میں ووٹ نہیں ڈال سکیں گے نواب ملک اور انل دیشمکھ

    Rajya Sabha Elections 2022 : مہاراشٹر میں مہاوکاس اگھاڑی سرکار کو عدالت نے بڑا جھٹکا دیا ہے ۔ جیل میں بند اس کے وزیر نواب ملک اور سابق وزیر داخلہ انل دیشمکھ کی ممبئی کی سیشن کورٹ نے اس عرضی کو خارج کردیا ہے جس میں دونوں لیڈروں نے راجیہ سبھا انتخابات میں ووٹ ڈالنے کیلئے ضمانت مانگی تھی

    • Share this:
      نئی دہلی : مہاراشٹر میں مہاوکاس اگھاڑی سرکار کو عدالت نے بڑا جھٹکا دیا ہے ۔ جیل میں بند اس کے وزیر نواب ملک اور سابق وزیر داخلہ انل دیشمکھ کی ممبئی کی سیشن کورٹ نے اس عرضی کو خارج کردیا ہے جس میں دونوں لیڈروں نے راجیہ سبھا انتخابات میں ووٹ ڈالنے کیلئے ضمانت مانگی تھی ۔ اس طرح راجیہ سبھا انتخابات میں نواب ملک اور انل دیشمکھ ووٹ نہیں ڈال سکیں گے ۔ ممبئی کی سیشن کورٹ نے دونوں کی عرضی کو خارج کردیا ہے ۔

      نواب ملک اور انل دیشمکھ نے کل ہونے والے راجیہ سبھا انتخابات میں ووٹ ڈالنے کی اجازت دینے کو لے کر عدالت میں عرضی داخل کی تھی ۔ مہاراشٹر کے وزیر اور نیشنلسٹ کانگریس پارٹی کے لیڈر نواب ملک فروری سے جیل میں بند ہیں ۔ ان پر ای ڈی نے منی لانڈرنگ کا الزام لگایا ہے ۔ اسی طرح سابق وزیر داخلہ انل دیشمکھ بھی جیل میں بند ہیں ۔ ان پر بھی منی لانڈرنگ کا الزام ہے ۔ دونوں نے جمعہ کو ہونے والے راجیہ سبھا انتخابات میں ووٹنگ کرنے کیلئے ضمانت کی مانگ کی تھی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : مہاراشٹر میں راجیہ سبھا الیکشن میں حمایت کے بدلے چھوٹی پارٹیوں کا کیا ہے کہنا؟


      نواب ملک نے عدالت کو بتایا کہ وہ ایک منتخب ممبر اسمبلی ہیں اور راجیہ سبھا کیلئے نمائندہ منتخب کرنے میں اپنے اسمبلی حلقہ کے لوگوں کی نمائندگی کرنے کیلئے فریضہ سے بندھے ہوئے ہیں ، ایسے میں انہیں ووٹ ڈالنے کی اجازت دی جائے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : راجیہ سبھا اراکین کو کیسے کیا جاتا ہے منتخب؟ کیا ہے خاص فامولا


      خیال رہے کہ مہاراشٹر میں کل راجیہ سبھا کی چھ سیٹوں کیلئے الیکشن ہونے والے ہیں ۔ تقریبا دو دہائی کے بعد راجیہ سبھا کیلئے ریاست میں الیکشن ہورہے ہیں ۔ عام طور پر پچھلے دو دہائیوں سے یہاں بلامقابلہ امیدوار منتخب کئے جاتے تھے، لیکن اس مرتبہ سیٹ سے زیادہ امیدوار کھڑے ہوجانے کی وجہ سے الیکشن کرانا پڑ رہا ہے۔

      شیوسینا نے یہاں سے اپنے دو امیدوار اتارے ہیں سنجے راوت اور سنجے پوار جبکہ بی جے پی نے تین امیدواروں کو کھڑا کیا ہے ۔ مرکزی وزیر پیوش گوئل ، انل بوندے اور دھننجے مہادک ۔ اس کے علاوہ این سی پی نے پرفل پٹیل اور کانگریس نے عمران پرتاپ گڑھی کو اپنا امیدوار بنایا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: