உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Rajya Sabha Elections 2022:راجیہ سبھا الیکشن کے لئے ووٹنگ شروع،ہریانہ کانگریس کے MLA'sدہلی ریزاٹ سے ہریانہ روانہ

    راجیہ سبھا کے آج ہوگی ووٹنگ۔

    راجیہ سبھا کے آج ہوگی ووٹنگ۔

    Rajya Sabha Elections 2022: چار ریاستوں ہریانہ، راجستھان، مہاراشٹرا اور کرناٹک کی 16 سیٹوں کے لیے آج جمعہ کو ووٹنگ ہوگی۔ ان ریاستوں میں انتخابات جیتنے کے لیے حکمران جماعتوں اور اپوزیشن کے درمیان زبردست سیاسی جدوجہد جاری ہے۔ مہاراشٹر میں لڑائی دلچسپ ہو گئی ہے۔

    • Share this:
      Rajya Sabha Elections 2022: نئی دہلی: راجیہ سبھا الیکشن 2022 کے لئے ووٹنگ کا آغاز ہوگیا ہے۔ تازہ اپ ڈیٹ کے مطابق، ہریانہ کے کانگریس ایم ایل اے راجیہ سبھا انتخابات کے لیے دہلی سے چنڈی گڑھ کے لیے روانہ ہو گئے ہیں۔ ایم ایل اے کل چھتیس گڑھ کے رائے پور سے دہلی پہنچے تھے اور یہاں ایک ریزاٹ میں ٹھہرے ہوئے تھے۔ کانگریس ایم پی دیپیندر سنگھ ہڈا نے کہا، ہمیں یقین ہے کہ ہمارے امیدوار اجے ماکن ہماری طاقت سے زیادہ ووٹوں سے جیتیں گے۔

      اس سے پہلے چیف الیکشن کمشنر راجیو کمار نے جمعرات کو راجیہ سبھا انتخابات میں خریدوفروخت کے الزامات کے درمیان، کہا کہ انتخابی عمل کی نگرانی کے لیے خصوصی مبصرین کا تقرر کیا گیا ہے۔ پورے انتخابی عمل کی ویڈیو گرافی کی جائے گی۔ چار ریاستوں ہریانہ، راجستھان، مہاراشٹرا اور کرناٹک کی 16 سیٹوں کے لیے آج جمعہ کو ووٹنگ ہوگی۔ ان ریاستوں میں انتخابات جیتنے کے لیے حکمران جماعتوں اور اپوزیشن کے درمیان زبردست سیاسی جدوجہد جاری ہے۔ مہاراشٹر میں لڑائی دلچسپ ہو گئی ہے۔ یہاں این سی پی لیڈران – انیل دیشمکھ اور نواب ملک – کو خصوصی عدالت نے ووٹنگ کے لئے ایک دن کے لئے ضمانت دینے سے انکار کر دیا۔ اب دونوں رہنما ہائی کورٹ پہنچ گئے ہیں۔ ہریانہ اور راجستھان میں بھی قریبی مقابلہ ہے۔ کانگریس اور جے ڈی ایس کرناٹک میں، آپسی جھگڑے میں الجھے ہوئے ہیں۔ بتا دیں کہ 11 ریاستوں میں راجیہ سبھا کی 57 سیٹوں کے لیے امیدوار بلا مقابلہ منتخب ہو گئے ہیں۔

      مہاراشٹر میں ہوا دلچسپ مقابلہ
      مہاراشٹر میں مقابلہ دلچسپ ہو گیا ہے۔ پی ایم ایل اے کورٹ کی جانب سے ووٹنگ کی درخواست مسترد کیے جانے کے بعدسابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ اور اقلیتی بہبود کے وزیر نواب ملک ہائی کورٹ پہنچے ہیں۔ دونوں رہنما، جو فی الحال عدالتی حراست میں ہیں، چاہتے ہیں کہ انہیں جمعہ کو ہونے والے راجیہ سبھا انتخابات میں ووٹ ڈالنے کی اجازت دی جائے۔ ہریانہ میں دو سیٹوں کے لیے انتخابات ہوں گے۔ اپنے ایم ایل ایز کو خریدوفروخت سے بچانے کے لیے برسراقتدار بی جے پی اور جے جے پی وہیں اپوزیشن کانگریس نے ایم ایل اے کو ریسارٹ میں بھیجا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Presidential Election : صدارتی انتخابات کی تاریخ کا اعلان، 18 جولائی کو ووٹنگ، 21 کو گنتی

      یہ بھی پڑھیں:
      Chinaکے دبدبے روکنے کے لئے اس پلان پر کام کررہے ہیں ہندوستان اور ویتنام

      کرناٹک کی 4 سیٹوں پر ہوگا الیکشن
      کرناٹک میں چار سیٹوں کے لیے انتخابات ہو رہے ہیں۔ چوتھی سیٹ پر کونسی پارٹی بازی مارے گی یہ جاننے کے لئے تجسس لگاتار بڑھتا جارہا ہے۔ ریاست میں تینوں بڑی پارٹیوں نے امیدوار کھڑے کیے ہیں۔ اپوزیشن کیمپ آپس میں ایک دوسرے کے ووٹ کاٹنے کی کوشش کر رہا ہے۔ کانگریس اور جے ڈی (ایس) کے سرکردہ قائدین ایک دوسرے کے ایم ایل ایز تک پہنچنے کی کوشش کر رہے ہیں کیونکہ حمایت دینے پر ان کے درمیان کوئی باضابطہ سمجھوتہ نہیں ہوسکا۔ یہاں دونوں اپوزیشن جماعتیں اپنے اپنے موقف پر قائم ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: