اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ہندوستان کی طبی سیاحت میں تیز ترقی: صحت کے شعبے میں ہیل ان انڈیا پہل ایک عالمی رہنما کے حیثیت سے ہندوستان کو ایک بلند مقام عطا کرتی ہے

    ہندوستان کی طبی سیاحت میں تیز ترقی: صحت کے شعبے میں ہیل ان انڈیا پہل ایک عالمی رہنما کے حیثیت سے ہندوستان کو ایک بلند مقام عطا کرتی ہے

    ہندوستان کی طبی سیاحت میں تیز ترقی: صحت کے شعبے میں ہیل ان انڈیا پہل ایک عالمی رہنما کے حیثیت سے ہندوستان کو ایک بلند مقام عطا کرتی ہے

    ہندوستان 'ہیل اِن انڈیا' پہل کے ساتھ طبی اعتبار سے قابل قدر سفر کی دنیا کو کس طرح سانچے میں ڈھال رہا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | New Delhi
    • Share this:
      ہندوستان میں عوام کے علاج معالجے میں حقیقی تبدیلی کے بارے میں آج ہی کسی بھی دادا دادی سے دریافت کریں اور آپ ان کے چہرے پر مسکراہٹ دیکھیں گے۔ کچھ عرصہ پہلے، جب ہندوستانیوں کو کسی بیماری یا ایسے حالات کا سامنا کرنا پڑتا تھا جس کے لیے پیچیدہ سرجری یا عملی علاج کی ضرورت ہوتی تھی، تو وہ مغربی ساحل کا رخ کرتے تھے۔

      اور اب، پورے دنیا سے لوگ علاج کے لئے ہندوستان آتے ہیں۔ ایک ایسے وقت میں جب مغرب میں اعلیٰ معیار کی صحت کی دیکھ بھال تک رسائی مشکل ہوتی جا رہی ہے، ہندوستانی ہیلتھ کیئر کا شعبہ عالمی سطح پر ایک اعلیٰ معیار اور کفایت شعاری متبادل کے طور پر اپنی موجودگی کا احساس دلارہی ہے۔

      ہندوستانی ہیلتھ کیئر کا شعبہ ہسپتالوں، طبی آلات، کلینیکل ٹرائلز، آؤٹ سورسنگ، ٹیلی میڈیسن، طبی سیاحت، ہیلتھ انشورنس، اور طبی آلات پر مشتمل ہے۔ طرز زندگی کے امراض کے بڑھتے ہوئے واقعات، کفایت شعاری ہیلتھ کیئر فراہمی کے نظام کی بڑھتی ہوئی طلب، تکنیکی ترقی، ٹیلی میڈیسن کا آجانا، ہیلتھ انشورنس کو تیزی سے اپنانا، حکومتی اقدامات جیسے ای-ہیلتھ (ٹیکس فوائد اور انسینٹیو کے ساتھ) ہندوستانی ہیلتھ کیئر مارکیٹ کو آگے بڑھا رہے ہیں۔

      ہندوستانی ہیلتھ کیئر شعبہ کا نقطہ نظر

       2020 میں،  Indian Healthtech industry was valued at $1.9bn ، یہ صرف 3 سالوں میں 2023 تک بڑھ کر 5$ بلین تک پہنچنے کی امید ہے۔ تشخیصی مارکیٹ میں بھی ہمیں ایسے ہی رجحان مل رہے ہیں، جو کہ  CAGR of 20.4% to reach $32 bn in 2022 تک پہنچ جائے گا، جو کہ 2012 میں صرف 5$ بلین تھا۔ ٹیلی میڈیسن $5.4 Bn by 2025 تک پہنچنے کی امید ہے، اور نیشنل ڈیجیٹل ہیلتھ بلیو پرنٹ $200bn in the next 10 years سے زیادہ کے معاشی فوائد حاصل کرنے کی امید ہے۔

      اگر یہ اعداد وشمار کافی متاثر کن نہیں تھے، تب بھی ہندوستانی ہیلتھ کیئر کا شعبے کی مجموعی طور پر projected to reach $372 bn by 2022، ہندوستان پہلے ہی دنیا کی دواخانہ بن چکا ہے۔ اور اب،2022-23  کا مرکزی بجٹ Rs.86,200 crores for the Ministry of Health and Family Welfare کی تخصیص، میڈیکل ویلیو ٹریول (MVT) میں متوقع نمو کے لیے ہندوستانی ہیلتھ کیئر انفراسٹرکچر کو تیار کرنے میں کافی مدد کرے گا۔

      اس وقت 2020-21 کے میڈیکل ٹورازم انڈیکس (MTI) میں India is ranked 10th, جو چیز اسے آگے لے جاتی ہے وہ انفراسٹرکچر اور انسانی سرمائے کا امتزاج ہے۔ ہندوستان میں اعلیٰ معیار کی طبی تربیت اوراچّھی انگریزی بولنے والے ڈاکٹروں اور پیرامیڈیکس کی سب سے بڑی تعداد ہے۔ دنیا میں میڈیکل کالجوں کی سب سے زیادہ تعداد ہے ہندوستان میں ہے اور امید ہے کہ 1mn skilled healthcare providers by 2022 ہو جایئں گے۔ اور اب، National Accreditation Board for Hospitals & Healthcare Providers (NABH) کے مطابق، 1400 hospitals کو عالمی معیار پر یا اس سے اوپر طبی دیکھ بھال فراہم کرنے کے لیے تسلیم کیا گیا ہے۔

      حکومت ہند ہندوستان کی پوزیشن کو دنیا کے سرکردہ طبی اور صحت سیاحتی مرکز کے طور پر مستحکم کرنے کے لئے پرعزم ہے، جس نے دنیا کو 'سیوا' اور 'اتیتھی دیو بھا' کے فرمان کے تحت Heal in India کی دعوت دی ہے۔ ان اقدامات میں سے ایک پہل MVT پورٹل ہے، جس کا مقصد ہندوستان آنے والے طبی مسافروں کے لیے شروع سے آخر تک ان کی سفری ضروریات کو پورا کرتے ہوئے ایک ہموار تجربہ فراہم کرنا ہے۔ مریض اور معالج، شہروں، ہسپتالوں اور یہاں تک کہ مخصوص ڈاکٹروں کی بنیاد پر فراہم کنندگان کو تلاش کرنے کے قابل ہوتے ہیں۔ انہیں ایلوپیتھک اور انٹیگریٹیو میڈیسن کے ساتھ ساتھ روایتی ہندوستانی ادویات کے نظام کے لیے شفاف قیمتوں کے پیکجوں تک رسائی حاصل ہے۔ وہ NABH کے مقرر کردہ MVT فیسلیٹیٹرز کے ذریعے بھی اپنے سفر کا بندوبست کر سکتے ہیں۔

      غیر ملکی تین زمروں کے تحت ہندوستان میں میڈیکل ویلیو ٹریول لے سکتے ہیں:

      طبی علاج: علاج کے مقاصد، جیسے سرجری، اعضاء کی منتقلی کا آپریشن، جوڑوں کی تبدیلی، کینسر اور دائمی بیماریوں کے علاج۔

      صحت وتندرستی اور بحالی: بحالی اور جمالیاتی وجوہات پر مرکوز خدمات، بشمول کاسمیٹک سرجری، تناؤ سے نجات اور سپا وغیرہ۔

      روایتی ادویات: AYUSH (آیوروید، یوگا اور نیچروپیتھی، یونانی، سدھا، ہومیوپیتھی) کی وزارت کے دائرہ اختیار کے تحت ہندوستانی روایتی طبی نظام۔

      ہندوستان میں میڈیکل ویلیو ٹریول کیا ہے؟

      سب سے پہلے، مالی بچت بہت زیادہ ہے۔ ہندوستان کم قیمتوں پر عالمی معیار کی دیکھ بھال اور علاج کی پیشکش کرتا ہے، جس سے ~65-90% as compared to the US کی بچت ہوتی ہے۔ اعلیٰ معیار اور کم لاگت کا امتزاج ہندوستان کو مغربی باشندوں کے لیے ایک دلچسپ جگہ بناتا ہے، جو اپنے ملک میں انھیں چیزوں کے لیے طویل انتظار کرتے ہیں یا بہت زیادہ اخراجات کا سامنا کرتے ہیں۔

      ہندوستانی ہسپتال جدید ترین ٹیکنالوجیز میں بہت زیادہ سرمایہ کاری کر چکے ہیں ہیں جیسے کہ روبوٹک سرجری، ریڈی ایشن، سائبر نائف سٹیریوٹیکسک آپشنز، IMRT/IGRT، ٹرانسپلانٹ سپورٹ سسٹم وغیرہ جو کہ جدید ترین ترقی ہے۔ ہندوستان میں کچھ انتہائی مشہور سپر اسپیشلٹی ہسپتال اور طبی خدمات بھی ہیں جو مریضوں کو جدید ترین ٹیکنالوجیز جیسے مصنوعی ذہانت (AI)، ورچوئل رئیلٹی (VR) اور ہولیسٹک میڈیسن کا استعمال کرتے ہوئے علاج کے جدید ترین اختیارات فراہم کرتے ہیں۔

      دوسری وجہ یہ ہے کہ ہندوستان طبی علاج کے لیے ایک دلچسپ مقام ہے جہاں مختلف طرح کے آپشن دستیاب ہیں۔ ہندوستان آیوروید، یوگا اور نیچروپیتھی، یونانی، سدھا اور ہومیوپیتھی کے لیے توجہ کا مرکز ہے، یہ سبھی اب Ministry of AYUSH کے زیر نگرانی ہیں اور مریضوں کو مستقل تجربہ فراہم کرنے کے لیے منظم ہیں۔ یوگا آشرم، اسپاس اور فلاح وبہبود کے مراکز جو جامع علاج پیش کرتے ہیں، صحت کے بارے میں شعور رکھنے والے طبی سیاحوں کو بھی اپنی طرف متوجہ کرتے ہیں۔

      https://www.news18.com/qci/
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: