உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی میں لاک ڈاون لگانےکوتیار، فضائی آلودگی پرسپریم کورٹ میں کیجریوال حکومت کا حلف نامہ

    دہلی میں لاک ڈاون لگانے کو تیار، فضائی آلودگی پر سپریم کورٹ میں بولی کیجریوال حکومت

    دہلی میں لاک ڈاون لگانے کو تیار، فضائی آلودگی پر سپریم کورٹ میں بولی کیجریوال حکومت

    Lockdown in Delhi: دہلی حکومت نے سپریم کورٹ سے کہا ہے کہ وہ فضائی آلودگی (Air Pollution) کی روک تھام کے لئے مکمل لاک ڈاون (Complete Lockdown in Delhi) جیسے قدم اٹھانے کے لئے تیار ہے۔ حالانکہ اس کے ساتھ ہی اس نے کہا کہ اس کا اثر محدود ہی ہوگا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: دہلی حکومت نے سپریم کورٹ سے کہا ہے کہ وہ فضائی آلودگی (Air Pollution) کی روک تھام کے لئے مکمل لاک ڈاون (Complete Lockdown in Delhi) جیسے قدم اٹھانے کے لئے تیار ہے۔ حالانکہ اس کے ساتھ ہی اس نے کہا کہ اس کا اثر محدود ہی ہوگا۔ اروند کیجریوال حکومت (Arivnd Kejriwal) نے اپنے حلف نامے میں کہا ہے کہ دہلی کے ساتھ ساتھ پڑوسی علاقوں میں بھی لاک ڈاون کی ضرورت ہے، جو قومی خطہ دارالحکومت (NCR) کے تحت آتے ہیں۔

      کیجریوال حکومت فضائی آلودگی سے فکرمند

      کیجریوال حکومت نے اپنے حلف نامہ میں کہا، ’دہلی حکومت مقامی اخراج کو کنٹرول کرنے کے لئے مکمل لاک ڈاون جیسے اقدامات اٹھانے کے لئے تیار ہے۔ حالانکہ ایسا قدم تبھی  با اثر ہوگا، جب اسے پڑوسی ریاستوں کے این سی آر میں نافذ کیا جاتا ہے۔ دہلی کے کمپیکٹ سائز کو دیکھتے ہوئے لاک ڈاون کا ہندوستانی فضائیہ پر محدود اثر ہوگا۔

      کیجریوال حکومت لاک ڈاون کے لئے تیار

      دہلی حکومت نے کہا، ’ہم اس قدم پر تبادلہ خیال کرنے کے لئے تیار ہیں۔ اگر ہندوستانی حکومت یا قومی خطہ راجدھانی اور آس پاس کے علاقوں میں ہندوستانی ایئر کوالٹی مینجمنٹ کمیشن کے ذریعہ پورے این سی آر کے لئے یہ لازمی کیا جاتا ہے‘۔ دہلی کی عام آدمی پارٹی حکومت نے کہا، ’اگر ہندوستانی حکومت یا قومی راجدھانی علاقہ اور آس پاس کے علاقوں میں ایئر کوالٹی مینجمنٹ کمیشن کے ذریعہ پورے این سی آر علاقوں کے لئے یہ لازمی کیا جاتا ہے تو ہم اس قدم پر غور کرنے کے لئے تیار ہیں‘۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      جے این یو میں پھر تشدد: اے بی وی پی اور لیفٹ اتحاد کے درمیان ہوئی پُرتشدد تصادم، کئی طلبا ہوئے زخمی




      عام آدمی پارٹی کی حکومت نے فضائی آلودگی کی خطرناک سطح کو دیکھتے ہوئے اب تک اٹھائے گئے اقدامات کو فہرست سازی (لسٹنگ) کرتے ہوئے کہا کہ اس ہفتے اسکولوں میں کوئی فزیکل کلاسیز نہیں منعقد کی جائیں گی اور سرکاری افسران گھر سے کام کریں گے۔ پرائیویٹ دفاتر کو بھی گھر سے کام کرنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔ تعمیراتی کام بھی تین دنوں کے لئے بند رہیں گے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: