ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ریلائنس کی آلوک انڈسٹریز 33 فیصد لاگت سے تیار کر رہی ہے پی پی ای کٹس

ریلائنس انڈسٹریز نے اپنی ٹیکسٹائل اور ملبوسات یونٹ آلوک انڈسٹریز کو ذاتی حفاظتی سامان (پی پی ای) بنانے والی کمپنی میں تبدیل کردیا ہے۔

  • Share this:
ریلائنس کی آلوک انڈسٹریز 33 فیصد لاگت سے تیار کر رہی ہے پی پی ای کٹس
ریلائنس کی آلوک انڈسٹریز 33 فیصد لاگت سے تیار کر رہی ہے پی پی ای کٹس

نئی دہلی: ریلائنس انڈسٹریز نے اپنی ٹیکسٹائل اور ملبوسات یونٹ آلوک انڈسٹریز کو ذاتی حفاظتی سازو سامان (پی پی ای) بنانے والی کمپنی میں تبدیل کردیا ہے۔ آلوک انڈسٹریز چین سے درآمد شدہ پی پی ای کٹ کے مقابلے صرف ایک تہائی یعنی تقریباً 33 فیصدی لاگت پر ای کٹس تیار کر رہی ہے۔ ریلائنس انڈسٹریز نے حال ہی میں آلوک انڈسٹریز کی خدمات کو حاصل کیا تھا۔


ذرائع نے بتایا کہ کمپنی نے آلوک انڈسٹریز کے سلواسا، گجرات کے کارخانے میں خصوصی طور پر پی پی ای کی مینوفیکچرنگ شروع کی ہے۔ کووڈ-19 بحران کے درمیان ڈاکٹرس اور نرس، اسپتال ملازمین اور دیگر لوگوں کے لئے پی پی ای کٹ کی کافی ضرورت ہے۔


ذرائع نے کہا کہ پی پی ای کٹ کی مینوفیکچرنگ صلاحیت کو بڑھا کر ایک لاکھ یونٹ ہر دن کیا گیا ہے۔
ذرائع نے کہا کہ پی پی ای کٹ کی مینوفیکچرنگ صلاحیت کو بڑھا کر ایک لاکھ یونٹ ہر دن کیا گیا ہے۔


پی پی ای کٹ کی مینوفیکچرنگ صلاحیت کو بڑھایا

ذرائع نے کہا کہ پی پی ای کٹ کی مینوفیکچرنگ صلاحیت کو بڑھا کر ایک لاکھ یونٹ ہر دن کیا گیا ہے۔ یہاں اس کی مینوفیکچرنگ کی لاگت صرف 650 روپئے فی کٹ ہے، جبکہ امپورٹیڈ کٹ کی قیمت 2,000  روپئے فی یونٹ بیٹھتی ہے۔

مستقبل میں پی پی ای کٹ ہوگا ایکسپورٹ

ذرائع کا کہنا ہے کہ مستقبل میں یہاں سے پی پی ای کٹ ایکسپورٹ بھی کی جاسکے گی۔ ذرائع نے بتایا کہ اپریل کے وسط میں فیکٹری میں پی پی ای کٹس کی تیاری کا آغاز ہوا۔ اس کے بعد یہاں مینوفیکچرنگ میں تیزی سے اضافہ کیا گیا۔ اب ملک کی روزانہ پی پی ای کٹ کا 20 فیصد یہاں تیار کیا جارہا ہے۔ دوسرے پی پی ای کٹ مینوفیکچرنگ میں جے سی ٹی پھگواڑہ ، گوکل داس ایکسپورٹ اور آدتیہ بڑلا شامل ہیں۔
First published: May 31, 2020 03:31 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading