ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

بڑی خوشخبری: ریلائنس۔ بی پی جوائنٹ وینچر سے پانچ برسوں میں 60 ہزار نئی نوکریاں

ریلائنس کے پاس ابھی 1،400 خوردہ فروشی کے مراکز ہیں۔ مشترکہ انٹرپرائز کے تحت آئندہ پانچ برسوں میں ایندھن ریٹیل نیٹ ورک کو بڑھا کرساڑھے پانچ ہزا ر کرنے کا منصوبہ ہے۔ ان کے کھل جانے پر 60 ہزار نئے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔

  • UNI
  • Last Updated: Jul 10, 2020 03:14 PM IST
  • Share this:
بڑی خوشخبری: ریلائنس۔ بی پی جوائنٹ وینچر سے پانچ برسوں میں 60 ہزار نئی نوکریاں
ریلائنس۔ بی پی جوائنٹ وینچر سے پانچ برسوں میں 60 ہزار نئی نوکریاں

نئی دہلی: مکیش امبانی نے ریلائنس انڈسٹریز کو قرض سے آزاد کرنے کے بعد اب اپنے کاروبار کو مزید تیزی سے بڑھانے کے منصوبے کو حتمی شکل دیتے ہوئے اوربرٹش پٹرولیم (بی پی) کے ساتھ مل کر ہندوستانی مارکیٹ میں ایندھن اور طیارہ ایندھن کی خوردہ فروشی کے لئے ریلائنس - بی پی موبلٹی لمیٹڈ (آر بی ایم ایل) نے ایک جوائنٹ وینچر تشکیل دیا ہے، جو اگلے پانچ برسوں میں 60 ہزار روز گار کے مواقع پیدا کرے گا۔


ریلائنس کے پاس ابھی 1،400 خوردہ فروشی کے مراکز ہیں۔ مشترکہ انٹرپرائز کے تحت آئندہ پانچ برسوں میں ایندھن ریٹیل نیٹ ورک کو بڑھا کرساڑھے پانچ ہزا ر کرنے کا منصوبہ ہے۔ ان کے کھل جانے پر 60 ہزار نئے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ فی الحال یہ 20 ہزار ہیں جو بڑھ کر 80 ہزار تک ہوجا ئیں گے ۔ ری برانڈ نگ کے تحت یہ اسٹیشن جیو- بی پی برانڈ کے تحت قائم کیے جائیں گے۔ طیارہ ایندھن کے کئے کا مقصد اگلے چند برسوں میں اپنی رسائی 30 سے ​​45 ہوائی اڈوں تک کرنا ہے۔


 ریلائنس کے پاس ابھی 1،400 خوردہ فروشی کے مراکز ہیں۔ مشترکہ انٹرپرائز کے تحت آئندہ پانچ برسوں میں ایندھن ریٹیل نیٹ ورک کو بڑھا کرساڑھے پانچ ہزا ر کرنے کا منصوبہ ہے۔

ریلائنس کے پاس ابھی 1،400 خوردہ فروشی کے مراکز ہیں۔ مشترکہ انٹرپرائز کے تحت آئندہ پانچ برسوں میں ایندھن ریٹیل نیٹ ورک کو بڑھا کرساڑھے پانچ ہزا ر کرنے کا منصوبہ ہے۔


گزشتہ اگست میں دونوں کمپنیوں نے جوائنٹ وینچر بنانے کا اعلان کیا تھا۔اب اس کو حتمی شکل دی جائے گی۔ بیان میں کہا گیا کہ جیو بی پی برانڈ کے تحت اس جوائنٹ وینچر کا مقصد ملک کےایندھن اور متحرک مارکیٹوں میں ایک بڑی کمپنی بنانا ہے۔ جیو ڈیجیٹل پلیٹ فارمز کے ذریعے 21 ریاستوں میں ریلائنس کی موجودگی اور اس کے لاکھوں صارفین اس سے مستفید ہوں گے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 10, 2020 03:11 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading