ہوم » نیوز » معیشت

ریلائنس نے کہا : نئے زرعی قوانین کا کمپنی سے کوئی لینا دینا نہیں، توڑ پھوڑ کے خلاف کھٹکھٹایا کورٹ کا دروازہ

ریلائنس انڈسٹریز لمیٹڈ(آر آئی ایل) نے سوموار کو پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ میں اپنی سبسڈیری جیو انفو کام کے ذریعہ دائر پٹیشن میں کہا کہ نئے تین زرعی قوانین کا کمپنی سے کوئی لینا دینا نہیں ہے اور نہ ہے کسی بھی طرح سے اسے ان کو کوئی فائدہ پہنچتا ہے ۔

  • Share this:
ریلائنس نے کہا : نئے زرعی قوانین کا کمپنی سے کوئی لینا دینا نہیں، توڑ پھوڑ کے خلاف کھٹکھٹایا کورٹ کا دروازہ
ریلائنس نے کہا : نئے زرعی قوانین کا کمپنی سے کوئی لینا دینا نہیں، توڑ پھوڑ کے خلاف کھٹکھٹایا کورٹ کا دروازہ

ریلائنس انڈسٹریز لمیٹڈ(آر آئی ایل) نے سوموار کو پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ میں اپنی سبسڈیری جیو انفو کام کے ذریعہ دائر پٹیشن میں کہا کہ نئے تین زرعی قوانین کا کمپنی سے کوئی لینا دینا نہیں ہے اور نہ ہے کسی بھی طرح سے اسے ان کو کوئی فائدہ پہنچتا ہے ۔ اپنی پوزیشن واضح کرنے کیلئے کورٹ میں ریلائنس نے کہا کہ ریلائنس انڈسٹریز لمیٹڈ، ریلائنس رٹیل لمیٹڈ ( RRL) ، ریلائنس جیو انفو کام لمیٹڈ(RJIL) اور ریلائنس سے جڑی کوئی بھی دیگر کمپنی نہ تو کارپوریٹ یا کنٹریکٹ فارمنگ کرتی ہے اور نہ ہی کرواتی ہے۔ اور نہ ہی اس بزنس میں اترنے کی کمپنی کی کوئی پلاننگ ہے۔


’’ کارپوریٹ ‘‘ یا ’’ کنٹریکٹ ‘‘ کھیتی کیلئے ریلائنس کی معاون کسی بھی کمپنی نے راست یا براہ راست طور سے کھیتی کی کوئی بھی زمین ہریانہ ، پنجاب یا ملک کے کسی بھی دوسرے حصہ میں نہیں خریدی ہے ۔ نہ ہی ایسا کرنے کی ہماری کوئی اسکیم ہے ۔ ریلائنس نے کورٹ کو یہ بھی بتایا کہ ریلائنس رٹیل منظم رٹیل سیکٹر کی کمپنی ہے اور مختلف کمپنیوں کے الگ الگ پروڈکٹ بیچتی ہے ، لیکن کمپنی کسانوں سے سیدھے اناج کی خرید نہیں کرتی ہے اور نہ ہی کسانوں کے ساتھ کوئی طویل مدتی خریداری کنٹریکٹ میں کمپنی شامل ہے۔


ریلائنس نے 130 کروڑ ہندوستانیوں کاپیٹ بھرنے والے کسان کو انّ داتا بتایا اور کسان کی خوشالی اور ترقی کیلئے اپنے عزم کا اظہار کیا۔ کسانوں میں پھیلی غلط فہمیاں دور کرتے ہوئے ریلائنس نے کورٹ کو بتایا کہ وہ اور ان کے سپلائرز، سہارا قیمت( MSP ) یا طے شدہ سرکاری قیمت پر ہی کسانوں سے خرید پر زور دیں گی  ۔ تاکہ کسان کو اس کی پیداوار کی بہترین قیمت مل سکے۔


پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ میں پٹیشن دائر کر کے ریلائنس نے انتظامیہ سے شرپسندوں کے ذریعہ توڑ پھوڑ کی غیر قانونی وارداتوں پر فوراً روک لگانے کی مانگ کی ۔ پٹیشن میں کہا گیا ہے کہ شرپسندوں کے ذریعہ کی گئی توڑ پھوڑ اور پر تشدد کارروائی سے ریلائنس سے وابستہ ہزاروں ملازمین کی زندگی خطرے میں پڑ گئی ہے اور ساتھ ہی پنجاب اور ہریانہ میں چلائے جارہے اہم کمیونیکیشن انفراسٹرکچر ، سیلز اور سروس آوٹ لیٹ کے روزمرہ کے کاموں میں خلل پیدا ہوا ہے۔

ریلائنس کا کہنا ہے کہ توڑ پھوڑ کیلئے ان شرپسندوں کو نجی مفادات کی وجہ سے اکسایا جارہا ہے۔ کسان آندولن کو مہرہ بناکر ریلائنس کے خلاف مسلسل ایک سازشی اور دشمنانہ مہم چلائی ہے۔ زرعی قوانین سے ریلائنس کا نام جوڑنے کا واحد مقصد ہمارے کاروبار کو نقصان پہنچانا اور ہمارے وقار اور رتبہ کو تہس نہس کرنا ہے۔

شرہسندوں کے خلاف اب تک کی گئی کارروائی کیلئے ریلائنس جیو نے افسران، خاص طور سے پنجاب اور ہریانہ پولیس کا شکریہ ادا کیا ۔ کمپنی نے ہائی کورٹ سے شرپسندوں اور نجی مفاد پرستوں کے خلاف تادیبی اور تدارکی کارروائی کی مانگ کی ہے ۔ تاکہ ریلائنس پنجاب اور ہریانہ میں ایک بار پھر سے اپنے سبھی کاروباروں کو باقاعدہ طور سے چلا سکے۔ ساتھ ہی عوام اور میڈیا سے اپیل کی ہے کہ وہ صحیح حقائق کے بارے میں بیدا ر ہوں اور ذاتی مفاد پرستوں کے ذریعہ ان کے فائدے کیلئے پھیلائے جارہے جھوٹ اور فریب کے جال سے گمراہ نہ ہوں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jan 04, 2021 08:01 PM IST