ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

Covid-19 & Remdesivir:کووڈ۔19 کے کونسے مریضوں کوریمڈیسویرنہیں لیناچاہئے؟اس بارے میں ایمس کےڈاکٹرکیاکہتے ہیں؟

آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمس) کے ڈاکٹر نیرج نیشچل (Dr Neeraj Nishchal) نے کہا کہ ’’Remdesivir کو گھر پر کبھی نہیں لیا جانا چاہئے۔ ہوم آئسولیشن مریضوں کے لئے مثبت رویہ اور باقاعدہ ورزش لازمی ہے‘‘۔

  • Share this:
Covid-19 & Remdesivir:کووڈ۔19 کے کونسے مریضوں کوریمڈیسویرنہیں لیناچاہئے؟اس بارے میں ایمس کےڈاکٹرکیاکہتے ہیں؟
آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمس) کے ڈاکٹر نیرج نیشچل (Dr Neeraj Nishchal) نے کہا کہ ’’Remdesivir کو گھر پر کبھی نہیں لیا جانا چاہئے۔ ہوم آئسولیشن مریضوں کے لئے مثبت رویہ اور باقاعدہ ورزش لازمی ہے‘‘۔

ایمس (All India Institute Of Medical Science) کے ڈاکٹروں نے ہفتہ کو مشورہ دیا کہ گھریلو نگہداشت سے متعلق کووڈ۔19 مریضوں کو ریمڈیسویر دوا (Remdesivir medication) نہیں لینا چاہئے اور اگر ان کی آکسیجن کی سطح 94 سے نیچے آ جاتی ہے تو انہیں اسپتال میں داخل کرنا چاہئے۔ڈاکٹرز کووڈ۔19 سے متاثرہ مریضوں کے لئے ’’ہوم آئسولیشن میں ادویات اور نگہداشت' (Medication and Care in Home Isolation) کے موضوع پر ایک ویبنار سے خطاب کر رہے تھے۔


آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمس) کے ڈاکٹر نیرج نیشچل (Dr Neeraj Nishchal) نے کہا کہ ’’Remdesivir کو گھر پر کبھی نہیں لیا جانا چاہئے۔ ہوم آئسولیشن مریضوں کے لئے مثبت رویہ اور باقاعدہ ورزش لازمی ہے‘‘۔ایمس سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر منیش نے کہا کہ اگر آکسیجن کی سطح 94 سے نیچے جاتی ہے تو مریضوں کو اسپتال میں داخل کیا جانا چاہئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آکسیجن کی سطح کی جانچ پڑتال کرتے وقت مریض کی عمر اور دیگر دائمی بیماریوں کو دھیان میں رکھنا چاہئے۔


علامتی تصویر
علامتی تصویر


تاہم ڈاکٹر نیرج نے کہا کہ متاثرہ مریضوں میں سے 80 فیصد بہت ہی ہلکے علامات کا سامنا کرتے ہیں اور اگر پہلی ٹیسٹ رپورٹ منفی ہو تو بار بار آر ٹی پی سی آر (RT-PCR) کا مشورہ دیتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ’’اگر آر ٹی پی سی آر ٹیسٹ منفی نکلا ہے، لیکن علامات موجود ہیں تو اس کے لئے ایک اور ٹیسٹ کے لئے جانے کی سفارش کی جاتی ہے۔ چاہے اسپتال میں داخلہ لینا ضروری ہے یا نہیں اس کا فیصلہ بیماری کی شدت کی بنیاد پر کیا جانا چاہئے‘‘۔

ڈاکٹروں نے یہ بھی مشورہ دیا کہ ادویات کو مناسب مقدار میں اور صحیح وقت پر لیا جانا چاہئے۔ڈاکٹر نیرج نے کہا کہ ’’دوائی کے بارے میں جاننا کافی نہیں ہے۔ مریضوں کو یہ بھی جان لینا چاہئے کہ انہیں کب اور کب لیا جانا ہے ، تب ہی یہ فائدہ مند ثابت ہوگا۔"انہوں نے کہا کہ 60 سال سے اوپر کے مریضوں کے لئے گھر کی تنہائی کا فیصلہ اور ہائی بلڈ پریشر، ذیابیطس، دل کی بیماری، گردوں اور پھیپھڑوں سے متعلق دائمی بیماریوں جیسے کم بیکریٹی کے ساتھ ڈاکٹروں سے مشورہ کرنے کے بعد ہی لیا جانا چاہئے۔

کوویڈ۔19 مریضوں میں عام طور پر دیکھے جانے والی علامات بخار، خشک کھانسی، تھکاوٹ اور ذائقہ یا بو کی کمی ہیں۔ گلے میں جلن، سر درد، جسم میں درد، اسہال، جلد پر دال اور آنکھوں میں لالی بھی شاذ و نادر معاملات میں دیکھنے کو ملتی ہے۔ڈاکٹر نیرج نے کہا کہ اگر آپ ان میں سے کسی بھی علامت کا مشاہدہ کرتے ہیں تو آپ کو فوری طور پر دوسروں سے الگ ہوجانا چاہئے‘‘۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 16, 2021 09:50 AM IST