کشمیر میں پیلٹ گن سے نوجوان کی موت، پرانے سری نگر میں پھر عائد کی گئی پابندی

اسرار احمد خان نامی یہ شخص سورا میں چھ اگست کو ہوئے مظاہرہ میں پیلٹ گن سے زخمی ہو گیا تھا۔ اس سے اس کی آنکھوں پر چوٹیں آئی تھیں۔

Sep 04, 2019 02:35 PM IST | Updated on: Sep 04, 2019 02:40 PM IST
کشمیر میں پیلٹ گن سے نوجوان کی موت، پرانے سری نگر میں پھر عائد کی گئی پابندی

کشمیر کے کچھ علاقوں میں کشیدگی

سری نگر۔ مظاہرہ کے دوران پچھلے ماہ پیلٹ گن سے زخمی ہوئے کشمیری نوجوان نے بدھ کی صبح کو دم توڑ دیا۔ وادی میں آرٹیکل 370 ہٹائے جانے کے بعد کسی عام شہری کی یہ پہلی موت ہے۔ اس کے بعد افسران نے پرانے سری نگر میں ایک بار پھر سے پابندی لگا دی۔

اسرار احمد خان نامی یہ شخص سورا میں چھ اگست کو ہوئے مظاہرہ میں پیلٹ گن سے زخمی ہو گیا تھا۔ اس سے اس کی آنکھوں پر چوٹیں آئی تھیں۔ افسران نے بتایا کہ خان کو سورا کے ’ شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز‘ میں بھرتی کرایا گیا تھا۔ اس کی بدھ کو علی الصبح موت ہو گئی۔ پولیس کے ایک اعلیٰ آفیسر نے کہا ’ اسے کوئی گولی نہیں لگی تھی‘۔

Loading...

پچھلے دنوں انڈین ایکسپریس نے سرکاری ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا تھا کہ وادی میں پیلٹ گن سے 80 عام شہری زخمی ہوئے ہیں۔ 14 اگست کو پولیس نے بتایا تھا کہ مظاہرہ کے دوران کئی لوگوں کو پیلٹ گن سے چوٹیں آئی تھیں۔ ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل منیر خان نے کہا تھا کہ وادی میں قانون وانتظام کی صورت حال قابو میں ہے۔

 

Loading...