چارہ گھوٹالہ معاملہ میں لالو پرساد کو 14 سال کی سزا، 60 لاکھ کا جرمانہ بھی

رانچی۔ چارہ گھوٹالہ سے جڑے چوتھے معاملہ میں آر جے ڈی سربراہ لالو پرساد یادو کو 14 سال کی سزا سنائی گئی ہے۔

Mar 24, 2018 12:07 PM IST | Updated on: Mar 24, 2018 03:30 PM IST
چارہ گھوٹالہ معاملہ میں لالو پرساد کو 14 سال کی سزا، 60 لاکھ کا جرمانہ بھی

دونوں معاملوں میں جرمانےکی رقم نہ دینے پر لالو یادو کو ایک- ایک سال کی اضافی سزا بھگتنی ہوگی: فوٹو کریڈٹ یو این آئی۔

رانچی۔ متحدہ بہار میں کروڑوں روپے کے چارہ گھوٹالے سے متعلق چوتھے معاملہ میں آج مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کی خصوصی عدالت نے بہار کے سابق وزیر اعلی اور راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالوپرساد یادو کو سات 7  سال کی سزا سنائی۔ سی بی آئی کے خصوصی جج شیو پال سنگھ نے دمکا ٹریژری سے غیر قانونی طورپر3.76 کروڑ روپے نکالنے کے معاملے 38 اے / 96 میں سماعت کے بعد لالو یادو کو تعزیرات ہند کی دفعات 120 (بی)، 471، 468، 467،420، 409 اور 477 اے کے تحت مجرم قرار دیتے ہوئے سات سال قید اور 30 لاکھ جرمانے کی سزا سنائی ہے۔

اس کے علاوہ عدالت نے اینٹی کرپشن ایکٹ کی دفعات 13 (2) اور 13 (1) کے تحت بھی آر جے ڈی صدر لالو یادو کو سات سال کی سزا کے ساتھ 30 لاکھ روپے جرمانہ عائد کیا ہے۔ یہ دونوں سزائیں مسلسل جاری رہیں گی۔ دریں اثناء، لالو پرساد یادو کے وکیل نے کہا کہ وہ سی بی آئی عدالت کے فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کریں گے۔

دونوں معاملوں میں جرمانےکی رقم نہ دینے پر لالو یادو کو ایک- ایک سال کی اضافی سزا بھگتنی ہوگی۔ اس سے قبل عدالت نے 19 مارچ 2018 کو لالو یادو سمیت 19 ملزمان کو مجرم قرار دیا تھا جبکہ سابق وزیر اعلی ڈاکٹر جگن ناتھ مشرا اور پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے اس وقت کے چیئرمین دھورو بھگت سمیت 12 ملزمان کو ثبوت کی عدم موجودگی میں بری کر دیا تھا ۔ سی بی آئی عدالت نے سزا سنانے کیلئے آج کی تاریخ ی مقرر کی تھی۔

Loading...

خیال رہے کہ سی بی آئی نے چارہ گھوٹالے میں 11 مئی 2000 کو کل 49 ملزمان کے خلاف چارج شیٹ داخل کیا تھا، جن میں سے تین سرکاری گواہ بن گئے تھے اور بعد میں ان میں سے ایک کی موت ہوگئی تھی، جبکہ مقدمہ کی کارروائی کے دوران دیگر 14 ملزمان کی بھی موت ہوگئی ہے۔

Loading...