உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Sheikh Hasina: مودی-حسینہ مذاکرات میں روہنگیا مسئلہ کو مل سکتی ہے خاص اہمیت، جانیے تفصیلات

    بنگلہ دیش کی وزیر اعظم شیخ حسینہ 5 سے 8 ستمبر تک ہندوستان دورے پر رہیں گی۔ (فائل فوٹو)

    بنگلہ دیش کی وزیر اعظم شیخ حسینہ 5 سے 8 ستمبر تک ہندوستان دورے پر رہیں گی۔ (فائل فوٹو)

    Bangladesh–India relations: میڈیا رپورٹس کے مطابق ہندوستان اور بنگلہ دیش کے درمیان توانائی، تجارت، خوراک کی حفاظت، کنیکٹیویٹی، دریا کے پانی کی تقسیم، سلامتی اور دفاع پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے تقریباً ایک درجن مفاہمت نامے پر دستخط کرنے کی توقع ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, IndiaBangladesh Bangladesh
    • Share this:
      بنگلہ دیش کی وزیر اعظم شیخ حسینہ (Sheikh Hasina) کل یعنی 5 سے 8 ستمبر تک ہندوستان کے چار روزہ سرکاری دورے پر ہیں۔ ان کے ساتھ ایک اعلیٰ سطحی وفد بھی جائے گا جس میں متعدد وزراء اور صنعتکار شامل ہیں۔ اپنے دورے کے دوران حسینہ 6 ستمبر کو نئی دہلی کے حیدرآباد ہاؤس میں وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) کے ساتھ دو طرفہ بات چیت کریں گی۔ وہ اسی دن صدر دروپدی مرمو اور نائب صدر جگدیپ دھنکر سے بھی ملاقات کریں گی۔

      نیوز 18 ڈاٹ کام کی ایک رپورٹ کے مطابق بنگلہ دیش کی جانب سے انہیں میانمار کی راکھین میں ان کے آبائی وطن واپس بھیجنے کی کوششوں کو ملکی حالات کی وجہ سے زیادہ کامیابی نہیں مل سکی۔ روہنگیا کے لیے دنیا کے مختلف حصوں کی طرف سے انسانی امداد کی پیشکش کی گئی ہے،۔ اقوام متحدہ کی ایجنسیوں اور ہندوستان کی طرف سے بھی یہ امداد کی گئی ہے۔

      شیخ حسینہ کا دورہ کئی علاقائی اور دو طرفہ مسائل کے تناظر میں اہمیت کا حامل ہے۔ ایک اہم مسئلہ پر بنگلہ دیش کی وزیر اعظم شیخ حسینہ پی ایم نریندر مودی کے ساتھ بات چیت کرنے کی توقع ہے وہ روہنگیا پناہ گزینوں سے متعلق ہے۔ اب پانچ سال سے دس لاکھ سے زیادہ روہنگیا مہاجرین بنگلہ دیش کے کئی کیمپوں میں رہ رہے ہیں۔

      بنگلہ دیش میں یہ خدشہ بڑھتا جا رہا ہے کہ روہنگیا پناہ گزینوں کا بحران جلد ہی سماجی انتشار میں تبدیل ہو سکتا ہے جو قومی سطح پر عدم استحکام پیدا کر سکتا ہے۔ بنگلہ دیش نے یہ بھی کہا ہے کہ روہنگیا بحران دو طرفہ مسئلہ نہیں ہے جس پر بنگلہ دیش اور میانمار کے درمیان بات چیت کی جائے اور اسے حل کیا جائے بلکہ یہ ایک علاقائی بحران ہے جس پر خطے کے تمام ممالک کی توجہ مبذول ہوتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:


      میڈیا رپورٹس کے مطابق ہندوستان اور بنگلہ دیش کے درمیان توانائی، تجارت، خوراک کی حفاظت، کنیکٹیویٹی، دریا کے پانی کی تقسیم، سلامتی اور دفاع پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے تقریباً ایک درجن مفاہمت نامے پر دستخط کرنے کی توقع ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: