گلبرگہ: سخت گرمی کے باوجود ماہ صیام کے تقاضوں کو پورا کرنے کی کوشش کررہے ہیں مسلمان

ایک روزہ دار کیلئے اس سے بڑھ کر اور کیا امتحان ہوگا کہ وہ اپنے آس پاس نظر دوڑائے تو دیکھتا ہے لوگ گرمی سے بچنے کیلئے ٹھنڈی چیزوں کا استعمال کر رہے ہیں۔ لیکن روزہ دار کی ایمانی حرارت موسم کے درجہ حرات پر غالب آجاتی ہے

May 20, 2019 11:03 AM IST | Updated on: May 20, 2019 12:22 PM IST
گلبرگہ: سخت گرمی کے باوجود ماہ صیام کے تقاضوں کو پورا کرنے کی کوشش کررہے ہیں مسلمان

گلبرگہ میں درجہ حرارت چوالیس ڈگری سلسیس ہے۔ سخت گرمی کی وجہ سے عوام کا برا حال ہے۔ اس سخت گرمی کے باوجود یہاں کے روزہ داروں کی مصروفیات پر کچھ اخاص اثر نہیں پڑا ہے۔ رمضان المبارک کو صبر وشکر کا مہینہ کہا جاتا ہے۔ سخت گرمی نے اسے آزمائش کا مہینہ بھی بنا دیا ہے۔ اہل گلبرگہ کیلئے تودوہری آزمائش ہے۔ ایک تو گلبرگہ میں ویسے بھی سخت گرم ماناجاتاہے۔

سخت گرمی میں پھر اگر ماہ صیام آجائے تو پھر کیا کہنے۔ایک روزہ دار کیلئے اس سے بڑھ کر اور کیا امتحان ہوگا کہ وہ اپنے آس پاس نظر دوڑائے تو دیکھتا ہے لوگ گرمی سے بچنے کیلئے ٹھنڈی چیزوں کا استعمال کر رہے ہیں۔ لیکن روزہ دار کی ایمانی حرارت موسم کے درجہ حرات پر غالب آجاتی ہے اور وہ صبر کرکے رہ جاتاہے۔اہل گلبرگہ اسے امتحان والا مہینہ بھی تصور کر رہے ہیں۔ بڑے تو بڑے چھوٹے چھوٹے بچے بھی گرمی کو خاطر میں لائے بغیر روزہ رکھ رہے ہیں۔محکمہ موسمیات کے مطابق آنے والے دنوں میں گرمی میں کچھ کمی ہونے کے کچھ آثار بھی نہیں ہیں اور نہ ہی بارش کے امکانات ہیں۔ آپ بھی دیکھیں گلبرگہ سے جواد میر کی یہ رپورٹ

Loading...

Loading...