ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

صفیہ ہاشمی کی تین ماہ کی بچی کیلئے فرشتہ ثابت ہوئے آر پی ایف جوان اندر یادو ، کیا یہ کام ، ہر طرف ہورہی تعریف

بھوپال ایم ایل اے اور عارف مسعود فینس کلب کے روح رواں عارف مسعود کہتے ہیں کہ اندر یادو نے انسانیت کی سربلندی کے لئے جو کارنامہ انجام دیا ہے ، اس کے لئے انکا جتنا بھی شکریہ ادا کیا جائے وہ کم ہے ۔

  • Share this:
صفیہ ہاشمی کی تین ماہ کی بچی کیلئے فرشتہ ثابت ہوئے آر پی ایف جوان اندر یادو ، کیا یہ کام ، ہر طرف ہورہی تعریف
صفیہ ہاشمی کی تین ماہ کی بچی کیلئے فرشتہ ثابت ہوئے آر پی ایف جوان اندر یادو ، کیا یہ کام ، ہر طرف ہورہی تعریف

کورونا وائرس لاک ڈاؤن کی مشکلات میں جہاں انسانیت شرمسار ہوئی ، وہیں کچھ ایسے بھی لوگ تھے ، جنہوں نے اپنے کارہائے نمایاں سے انسانیت کو ایک نئی بلندی عطا کی ۔ ایسے ہی نمایاں کارنامہ انجام دینے والوں میں ایک اہم نام بھوپال کے اندر یادو کا ہے ۔ کرناٹک کے بیلگام  سے گورکھپور کے لئے جانے والی شرمک اسپیشل ٹرین تیس مئی کو جب روانہ ہوئی ، تو ٹرین میں سفر کرنے والی صفیہ ہاشمی کو یہ امید نہیں تھیی کہ لاک ڈاون میں ان کی تین مہینے کی بچی کو دودھ کے لئے بھی ترسنا ہوگا ۔ راستے میں صفیہ ہاشمی نے کئی جگہ اسٹیشن پر بچی کے لئے دودھ تلاش کرنے کی کوشش کی ، لیکن ان کی کوشش ہر جگہ ناکام ہوئی ۔


تاہم دو دنوں کے بعد شرمک اسپیشل ٹرین جب بھوپال پہنچی تو صفیہ کو یہ امید جاگی کہ شاید انہیں ان کی بچی کے لئے یہاں سے دودھ مل جائے ، لیکن یہاں بھی ان کی کوشش کی ناکام ہی رہی ۔ تھک ہار کر صفیہ ٹرین میں اپنی سیٹ پر بیٹھ گئیں اور بھوک سے نڈھال بچی کی طبیعت دیکھ کر ان کی بھی طبیعت غیر ہونے لگی ۔ اسی درمیان صفیہ کو بھوپال اسٹیشن پر آرپی ایف جوان اندر یادو دکھائی دئے ۔ صفیہ نے بچی کے دودھ کے لئے ان سے بھی فریاد کی ۔ دودھ پیتی بچی کی حالت کو دیکھ کر اندر یادو نے اسٹیشن کے باہر سے بچی کے لئے دودھ لانے کا فیصلہ کیا ۔ اندر یادو دودھ لے کر جب تک اسٹیشن کے پلیٹ فارم پر آتے ، ٹرین نے چلنا شروع کردیا تھا ۔ اندر یادو نے اپنی جان کی پروا کئے بغیر دوڑتے ہوئے ٹرین کی کھڑکی سے بچی کو دودھ پہنچایا ۔




گورکھپور پہنچنے کے بعد صفیہ ہاشمی نے اندریادوکی خدمات کو لے کر جی آرپی ایف اور ریلوے کا خصوصی طور پر شکریہ ادا کرتے ہوئے ویڈیوسوشل میڈیا پر ڈالا تو بھوپال کے لوگوں کو اس کی خبر ہوئی ۔ صفیہ نے اپنے ویڈیو میں کہا کہ یہی ہمارے ریئل ہیرو ہیں ۔ مجھے کسی اسٹیشن سے دودھ نہیں ملا ، مجھے بھوپال میں میری تین مہینے کی بچی کے لئے اندر یادو نے میری مدد کی اور میری بچی کودودھ فراہم کیا ۔ اندر یادو کا جتنا بھی شکریہ ادا کروں وہ کم ہے ۔

اندر یادو نے انسانیت کو سر بلند کرنے کا یہ کارنامہ تو اکتیس مئی کو انجام دیا تھا۔ صفیہ ہاشمی نے گورکھپور پہنچنے کے بعد ان کا شکریہ بھی ادا کیا ، لیکن آج بھوپال میں عارف مسعود فینس کلب کے ذریعہ بھوپال اسٹیشن پر جی آرپی اسٹاف کی موجود گی میں اندریادو کو نہ صرف اعزاز سے نوازا گیا ، بلکہ انہیں نقد انعام بھی دیا گیا ۔ عارف مسعود فینس کلب نے انہیں توصیفی سند بھی پیش کی ۔

بھوپال میں عارف مسعود فینس کلب کے ذریعہ بھوپال اسٹیشن پر جی آرپی اسٹاف کی موجود گی میں اندریادو کو اعزاز سے نوازا گیا ۔
بھوپال میں عارف مسعود فینس کلب کے ذریعہ بھوپال اسٹیشن پر جی آرپی اسٹاف کی موجود گی میں اندریادو کو اعزاز سے نوازا گیا ۔


بھوپال ایم ایل اے اور عارف مسعود فینس کلب کے روح رواں عارف مسعود کہتے ہیں کہ اندر یادو نے انسانیت کی سربلندی کے لئے جو کارنامہ  انجام دیا ہے ، اس کے لئے انکا جتنا بھی شکریہ ادا کیا جائے وہ کم ہے ۔ اندر یادو نے جو کارنامہ انجام دیا ہے ، وہ سماج کے لئے مشعل راہ ہے ۔ سوشل میڈیا کے ذریعہ کے جب مجھے اس کی خبر ہوئی ، تو میں نے نہ صرف ان سے ملنے بلکہ ان کا اعزاز کرنے کا فیصلہ کیا ۔ تاکہ نئی نسل کے لوگ ایسے ریئل ہیرو سے سبق لیں ۔ اندر یادو نے جو کام کیا ہے ، وہی انسانیت کے لئے سچا کام ہے ۔

وہیں اندر یادو کہتے ہیں کہ اکتیس مئی کو پلیٹ فارم نمبر ایک پر ڈیوٹی پر تھا ۔ اسی وقت پلیٹ فارم نمبر ایک پر شرمک اسپیشل ٹرین آئی ، تو ایک خاتون مسافر نے مجھے بلایا اور کہا کہ بھیا ایک منٹ میری بات سنیں گے۔ جب میں ان کے پاس گیا ، تو انہوں نے مجھے تین ما ہ کی بچی کو دکھایا اور بولا کہ ہم بیلگام کرناٹک سے آرہے ہیں اور ابھی تک ہمیں کہیں دودھ نہیں ملا ہے ۔ بچی کو دیکھ کر میں دوڑکر باہر گیا اور جب تک اندر آیا ٹرین چلنے لگی تھی ۔ میں نے دوڑ کر انہیں دودھ دیا ۔ انہیں اس کے لئے میرا بہت شکریہ ادا کیا ۔ آج بھوپال ممبر اسمبلی عارف مسعود جی نے مجھے اعزاز سے بخشا ، اس کے لئے میں ان کا بھی شکریہ ادا کرتا ہوں ۔
First published: Jun 09, 2020 09:09 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading