உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پنج جنیہ کے مضمون کو آر ایس ایس سے نہیں جوڑا جائے ، ہندوستان کی ترقی میں انفوسس کا اہم رول : سنیل آنبیکر

    پنج جنیہ کے مضمون کو آر ایس ایس سے نہیں جوڑا جائے ، ہندوستان کی ترقی میں انفوسس کا اہم رول : سنیل آنبیکر

    پنج جنیہ کے مضمون کو آر ایس ایس سے نہیں جوڑا جائے ، ہندوستان کی ترقی میں انفوسس کا اہم رول : سنیل آنبیکر

    Panchajanya Vs Infosys: راشٹریہ سویم سیوک سنگھ ( آر ایس ایس ) کے اکھل بھارتیہ پرچار پربھاری سنیل آنبیکر نے کہا ہے کہ میگزین ( پنج جنیہ) آر ایس ایس کا آفیشیل ترجمان نہیں ہے اور نظریات کو ذاتی مانا جانا چاہئے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : راشٹریہ سویم سیوک سنگھ ( آر ایس ایس ) کے اکھل بھارتیہ پرچار پربھاری سنیل آنبیکر نے اتوار کو آر ایس ایس کو پنج جنیہ ۔ انفوسس تنازع سے الگ کرنے کی کوشش کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کی ترقی میں اس آئی ٹی لیجنڈ کا کردار اہم ہے ۔ یہ اعتراف کرتے ہوئے کہ کمپنی کے ذریعہ ڈیولپ پورٹلس کے ساتھ پریشانی ہوسکتی ہے ، آنبیکر نے کہا کہ میگزین ( پنج جنیہ) آر ایس ایس کا آفیشیل ترجمان نہیں ہے اور نظریات کو ذاتی مانا جانا چاہئے ۔

      سنیل آنبیکر نے ٹویٹ کیا کہ ہندوستانی کمپنی کے ناطے انفوسس کا ہندوستان کی ترقی میں اہم کردار ہے ۔ انفوسس کے ذریعہ چلنے والے پورٹلس کو لے کر کچھ ایشوز ہوسکتے ہیں ، مگر پنج جنیہ میں اس حوالہ سے شائع مضمون ، مضمون نگار کے اپنے ذاتی خیالات ہیں اور پنج جنیہ آر ایس ایس کا ترجمان نہیں ہے ۔ آر ایس ایس کو اس مضمون میں ظاہر کئے گئے خیالات سے جوڑا جانا نہیں چاہئے ۔


      آر ایس ایس سے وابستہ میگزین پنج جنیہ نے آئی ٹی کمپنی انفوسس پر نشانہ سادھتے ہوئے الزام لگایا کہ بنگلورو میں واقع کمپنی جان بوجھ کر ہندوستانی معیشت کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ میگزین نے کمپنی پر نکسلیوں ، لیفٹسٹس اور ٹکڑے ٹکڑے گینگ کی مدد کرنے کا بھی الزام لگایا ۔

      ہفتہ وار میگزین نے اپنی کوور اسٹوری 'ساکھ اور آگت' میں الزام لگایا ہے کہ یہ پہلی مرتبہ نہیں تھا جب انفوسس نے ایک سرکاری پروجیکٹ میں گڑبڑی کی تھی ۔ مضمون میں کہا گیا ہے کہ سرکاری تنظیم اور ایجنسیاں انفوسس کو اہم ویب سائٹوں اور پورٹلس کیلئے کنٹریکٹ دینے میں کبھی نہیں ہچکچاتی ہیں ، کیونکہ یہ ہندوستان کی سب سے بڑی سافٹ ویئر کمپنیوں میں سے ایک ہے ۔

      حالانکہ اس مضمون میں حیرانگی کا اظہار کیا گیا ہے کہ انفوسس کے ذریعہ ڈیولپ جی ایس ٹی اور انکم ٹیکس ریٹرنس پورٹلس ، دونوں میں گڑبڑیوں کی وجہ سے ملک کی معیشت میں ٹیکس دہندگان کے بھروسے کو نقصان پہنچا ہے ۔ کیا انفوسس کے ذریعہ کوئی ملک مخالف طاقت ہندوستان کے اقتصادی مفادات کو نقصان پہنچانے کی کوشش کررہی ہے ؟

      اس معاملہ میں رابطہ کرنے پر پنج جنیہ کے ایڈیٹر ہتیش شنکر نے کہا کہ انفوسس ایک بڑی کمپنی ہے اور سرکار نے اس کی معتبریت کی بنیاد پر اس کو اہم کام دئے ہیں ۔ شنکر نے کہا کہ ان ٹیکس پورٹلس میں گڑبڑیاں قومی تشویش کا موضوع ہیں اور جو اس کیلئے ذمہ دار ہیں ، انہیں جواب دہ ٹھہرایا جانا چاہئے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: