ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی کی موت کی اڑی افواہ، اہل خانہ اور اسپتال نےکہا- یہ جھوٹ ہے

سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی (Pranab Mukherjee) کی حالت اب بھی نازک بنی ہوئی ہے۔ وہ مسلسل وینٹیلیٹر سپورٹ پر ہیں۔ اس درمیان سوشل میڈیا (Social Media) پر ان کی موت کی افواہ اڑ رہی ہے۔

  • Share this:
سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی کی موت کی اڑی افواہ، اہل خانہ اور اسپتال نےکہا- یہ جھوٹ ہے
سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی کی موت کی اڑی افواہ، اہل خانہ اور اسپتال نے کہا- یہ جھوٹ ہے۔

نئی دہلی: سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی (Pranab Mukherjee) کی حالت اب بھی نازک بنی ہوئی ہے۔ وہ مسلسل وینٹیلیٹر سپورٹ پر ہیں۔ اس درمیان سوشل میڈیا (Social Media) پر ان کی موت کی افواہ اڑی۔ ٹوئٹر پر پرنب مکھرجی کی موت کی افواہ ٹرینڈ ہورہی ہے۔ تاہم اہل خانہ اور اسپتال کی طرف سے یہ واضح کردیا ہے کہ پرنب مکھرجی ابھی زندہ ہیں اور وہ وینٹیلیٹر پر ہیں۔


شرمشٹھا مکھرجی نے کہا- کہ یہ جھوٹ ہے


سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی کی بیٹی اور کانگریس لیڈر شرمشٹھا مکھرجی نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے والد کے بارے میں جو افواہ اڑائی جارہی ہے، وہ بالکل جھوٹ ہے۔ انہوں نےمیڈیا سے گزارش کی ہے کہ وہ انہیں کال نہ کریں۔ شرمشٹھا نے یہ بھی کہا کہ وہ اپنا موبائل فری رکھنا چاہتی ہیں، جس سے انہیں اسپتال سے والد کے صحت سے متعلق جانکاری ملتی رہے۔




آرمی ہاسپٹل کی طرف سے آج جاری تازہ بلیٹن کے مطابق ان کی حالت اب بھی نازک ہے اور وہ وینٹیلیٹر سپورٹ پر ہیں۔ فوج کے ریسرچ اینڈ ریفرل اسپتال نے اپنے تازہ میڈیکل بلیٹن میں کہا، ’سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی کی حالت میں صبح سے کوئی تبدیلی نہیں نظر آئی ہے، وہ کوما جیسی حالت میں ہیں، انہیں کوئی وینٹیلٹر سپورٹ پر رکھا جارہا ہے۔ اس سے قبل پرنب مکھرجی کے بیٹے ابھیجیت مکھرجی نے ٹوئٹ کرکے اطلاع دی تھی کہ ان کی طبیعت ہیموڈائینیمکلی مستحکم ہے۔ یعنی ان کا بلڈ پریشر مستقل ہے اور ساتھ ہی دل بھی کام کر رہا ہے۔

 



پرنب مکھرجی زندہ، موت کی جھوٹی افواہ: ابھیجیت مکھرجی

سابق صدر پرنب مکھرجی کے بیٹے ابھیجیت مکھرجی نے جمعرات کو کہا کہ ان کے والد ابھی زندہ ہیں اور ان کی موت کی افوا جھوٹی ہے۔ کورونا سے متاثرہ سابق صدر کی پیر کے روز نئی دہلی کے ملٹری اسپتال میں خون کا تھکا ہٹانے کے لئے سرجری کی گئی اور ان کی حالت نازک بنی ہوئی ہے۔ مکھرجی ابھی زندہ ہیں اور ان کے دل سے خون کا بہاؤ معمول پر (ہیموڈینامک سٹیبل) چل رہا ہے‘‘ ۔ نامور صحافی سوشل میڈیا پر افواہیں اور فرضی خبریں پھیلارہے ہیں جو اس کا واضح ثبوت ہے کہ میڈیا ملک میں جھوٹ کی فیکٹری بن گیا ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Aug 13, 2020 11:44 AM IST