உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia-Ukraine Conflict:روس نے یوکرین پر کیا حملہ تو ہندوستان پر کیا ہوگا اثر؟

    ہندوستان کے لئے بھی کافی چیلنجنگ ہے صورتحال۔ (File Photo: shutterstock)

    ہندوستان کے لئے بھی کافی چیلنجنگ ہے صورتحال۔ (File Photo: shutterstock)

    امریکہ نے ہمیشہ بہت سے اہم مواقع اور معاملات پر ہندوستان کا ساتھ دیا ہے۔ ایسے میں ہندوستان نہ تو روس سے سودے بازی کر سکتا ہے اور نہ ہی امریکہ سے۔ اس لیے یہ صورت حال ہندوستان کے لیے بھی کافی نازک اور چیلنجنگ ہے۔

    • Share this:
      وارسا: روس نے یوکرین کی سرحد کے پاس 1,00,000 سے زیادہ فوجیوں کو تعینات کر رکھا ہے جس سے اس علاقے میں جنگ (Russia-Ukraine Conflict) کا اندیشہ بڑھ گیا ہے۔ روس نے لگاتار اس بات سے انکار کیا ہے کہ وہ حملے کا منصوبہ بنا رہاہے، لیکن امریکہ اور اس کے ناٹو اتحادیوں کا ماننا ہے کہ روس جنگ کی جانب بڑھ رہا ہے اور اس کے لئے تیاری کررہا ہے۔ یوکرین کو لے کر بین الاقوامی کشیدگی کے بارے مٰں کچھ جاننے لائق باتیں ہیں، جو سرد جنگ (Cold War) کی یاد تازہ کرتے ہیں۔

      اس درمیان، یوکرائنی حکام نے کشیدگی بڑھنے پر صورتحال کو کم کرنے کی کوشش کی ہے۔ حالانہک، مشرقی یوکرین میں فوجی اور شہری بے صبری سے انتظار کر رہے ہیں کہ آیا جنگ ہوتی ہے یا نہیں۔ وہ سمجھتے ہیں کہ ان کی قسمت کا فیصلہ دور دراز کے دارالحکومتوں میں سیاست دان کر رہے ہیں۔ اس جنگ زدہ علاقے میں 2014 سے روس نواز علیحدگی پسند جنگجوؤں کے ساتھ لڑائی جاری ہے۔

      امریکی صدر جو بائیڈن نے کہا ہے کہ یہ ایسا علاقہ ہے جہاں روس نے ہزاروں فوجی جمع کیے ہیں اور دوسری جنگ عظیم کے بعد سب سے بڑا حملہ کر سکتا ہے۔ ایسے میں سوال یہ بھی اٹھتا ہے کہ اگر دونوں ممالک کے درمیان جنگ ہوتی ہے تو اس کا اثر ہندوستان پر کیا ہوگا؟

      کیا ہوگا ہندوستان پر اثر؟
      ماہرین کا خیال ہے کہ جنگ کی صورت میں روس کو اتحادیوں کی ضرورت ہوگی۔ اس وقت چین کو اس کا بڑا اتحادی سمجھا جاتا ہے۔ مغربی پابندیوں کی وجہ سے چین بھی روس کا ساتھ دے سکتا ہے۔ چین بھی اس بات کی حمایت کر رہا ہے کہ یوکرین کو نیٹو کا رکن نہیں بننا چاہیے۔ ایسے میں اگر مغربی ممالک کی طرف سے روس پر پابندی لگتی ہے تو چین اس کی تلافی کر سکتا ہے جس سے چین اور روس کی نزدیکیاں بڑھیں گی جس سے ہندوستان اور روس کی دوستی پر برا اثر پڑ سکتا ہے۔

      ہندوستان کی 60 فیصد فوجی سپلائی روس سے ہوتی ہے جو کہ ایک بہت اہم فریق ہے۔ حال ہی میں، ہندوستان اور روس نے کئی اہم دفاعی معاہدوں پر بھی دستخط کیے ہیں، جن میں S400 میزائل سسٹم اور AK-203 اسالٹ رائفل سے متعلق معاہدے شامل ہیں۔ اس کے ساتھ ہی مشرقی لداخ میں ہندوستان اور چین پہلے ہی آمنے سامنے ہیں۔ اس صورتحال میں ہندوستان روس کے ساتھ تعلقات خراب کرنے کا کوئی خطرہ مول نہیں لے سکتا۔

      اس کے ساتھ ساتھ امریکہ بھی ہندوستان کا ایک اہم پارٹنر ہے۔ امریکہ نے ہمیشہ بہت سے اہم مواقع اور معاملات پر ہندوستان کا ساتھ دیا ہے۔ ایسے میں ہندوستان نہ تو روس سے سودے بازی کر سکتا ہے اور نہ ہی امریکہ سے۔ اس لیے یہ صورت حال ہندوستان کے لیے بھی کافی نازک اور چیلنجنگ ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: