ہوم » نیوز » وطن نامہ

آئندہ دو برسوں میں ہندوستانی معیشت اپنے حریفوں کو پیچھے چھوڑ دے گی: ایس اینڈ پی

عالمی ساکھ تعین کردہ ایجنسی ایس اینڈ پی نے ہندوستان کے ٹریپل بی منفی ریٹنگ کوجوں کے توں رکھتے ہوئے مستحکم آؤٹ لک کٹیگری دی ہے

  • Share this:
آئندہ دو برسوں میں ہندوستانی معیشت اپنے حریفوں کو پیچھے چھوڑ دے گی: ایس اینڈ پی
آئندہ دو برسوں میں ہندوستانی معیشت اپنے حریفوں کو پیچھے چھوڑ دے گی: ایس اینڈ پی

عالمی ساکھ تعین کردہ ایجنسی ایس اینڈ پی نے ہندوستان کے ٹریپل بی منفی ریٹنگ کوجوں کے توں رکھتے ہوئے مستحکم آؤٹ لک کٹیگری دی ہے ایجنسی کی پیش گوئی ہے کہ آئندہ دو برسوں میں ہندوستانی معیشت اپنے حریفوں کو پیچھے چھوڑ دے گی معاشی امورکے محکمہ کے سکریٹری اَتنو چکرورتی نے منگل کے روز ٹویٹ کے ذریعہ اطلاع دیتے ہوئے کہا کہ ایس اینڈ پی نے ہندوستان کی سوورین ریٹنگ کو ٹریپل بی منفی میں جوں کے توں رکھا ہے۔

 

انہوں نے ایس اینڈ پی کی رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا،’اس عالمی ایجنسی نے حالیہ ہندوستانی معیشت میں آنے والی سست روی کے دوران کہا کہ لمبے عرصے پرمحیط اس کی شرحِ ترقی حوصلہ افزارہے گی‘۔ایجنسی کے اندازے کے مطابق آئندہ 2 برسوں میں ہندوستانی معیشت اپنے حریفوں کو پیچھے چھورتے ہوئے جلد ترقی حاصل کرنے کی حالت میں ہوگی۔ قابل ذکرہے کہ مختلف وجوہات سے ہندوستانی معیشت ابھی شدید کساد بازاری (سست روی) سے گزر رہی ہے جس کی وجہ سے رواں مالی سال کی دوسری سہ ماہی میں مجموعی گھریلو پیداوار(جی ڈی پی) چھ سال کی نچلی سطح 4.5 فیصد پرلڑھک گئی ہے۔     پہلی سہ ماہی میں بھی یہ 5.0 فیصد تھا۔اس سلسلے میں حکومت کو شدید تنقید کاسامنا کرناپڑرہا ہے اور اس معاشی سست روی کے لیے جی ایس ٹی اور نوٹ بندی جیسے اقدامات کو ذمہ دار ٹھہرایاجا رہا ہے۔حالانکہ وزیرخزانہ نرملا سیتا رمن اسے مندی (کساد بازاری) تسلیم کرنے سے واضح طورپرانکار کرچکی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ عالمی وجوہات اورمختلف گھریلو وجوہات کی بدولت معیشت میں سست روی آئی ہے لیکن جو مائیکرواکنومک اشارے ہیں وہ تمام مضبوط معیشت کی بنیاد کی جانب ہیں۔
First published: Dec 03, 2019 11:18 PM IST