உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ڈینگوکےبڑھتےہوئے کیسزسے کیسےبچیں؟ یہ چند تدابیر آپ کواورآپ کےخاندان کورکھ سکتی ہیں محفوظ

    آنکھوں میں درد، متلی، سر درد، قے، ہڈیوں میں درد، دھبے، پٹھوں میں درد، غیر معمولی خون بہنا، جوڑوں کا درد، تھکاوٹ، یا بےچینی جیسی علامات کو کبھی نظر انداز نہ کریں۔

    آنکھوں میں درد، متلی، سر درد، قے، ہڈیوں میں درد، دھبے، پٹھوں میں درد، غیر معمولی خون بہنا، جوڑوں کا درد، تھکاوٹ، یا بےچینی جیسی علامات کو کبھی نظر انداز نہ کریں۔

    ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (WHO) کا اندازہ ہے کہ ہر سال 400 ملین سے زیادہ لوگ ڈینگو وائرس سے متاثر ہوتے ہیں۔ ڈینگو مادہ مچھر سے پھیلنے والی بیماری ہے۔ اس سے اپنے آپ کو کیسے محفوظ رکھیں؟ پیش ہیں اہم تجاویز:

    • Share this:
      سردیوں کا آغاز وہ وقت ہوتا ہے جب جسم کو موسمی بیماریوں seasonal illnesses کا شکار ہونے کا سب سے زیادہ خطرہ لاحق ہوتا ہے۔ اس کے لیے جسم اور اردگرد کے ماحول پر فوری توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

      ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (WHO) کا اندازہ ہے کہ ہر سال 400 ملین سے زیادہ لوگ ڈینگو وائرس سے متاثر ہوتے ہیں۔ ڈینگو مچھر سے پھیلنے والی بیماری ہے اور مادہ ایڈیس ایجپٹائی female Aedes aegypti ڈینگی وائرس کو منتقل کرنے کے لیے جانا جاتا ہے۔ اگرچہ اس سے اموات کی شرح کم ہے، لیکن مناسب علاج اور بروقت تشخیص نہ ہونے کی وجہ سے موت ہوسکتی ہے۔ اس بیماری کو اس کے سنگین مرحلے تک بڑھنے سے روکنے میں جلد تشخیص اور علاج اہم کردار ادا کرتا ہے۔



      • ڈینگو سے حفاظت مگر کیسے؟


      یہاں چند ایسی تدابیر پیش کی جارہی ہیں جن سے آپ ڈینگو کے بڑھتے ہوئے کیسز کے درمیان محفوظ رہ سکتے ہیں:

      علامات کو نظرانداز نہ کریں:

      روزمرہ زندگی سے ہٹ کر اگر آپ کو جسمانی طور پر نئی تبدیلی محسوس ہورہی ہے، تو اپنے آپ پر توجہ دیں۔ علامات سے چوکنا رہنا بیماریوں سے نمٹنے کے لیے ضروری ہے۔ چند غیر متوقع علامات یہ ہیں:

      • آنکھوں میں درد

      • متلی، سر درد

      • قے

      • ہڈیوں میں درد

      • دھبے

      • پٹھوں میں درد

      • غیر معمولی خون بہنا

      • جوڑوں کا درد

      • تھکاوٹ

      •  بےچینی


      جیسی علامات کو کبھی نظر انداز نہ کریں۔


      اپنے اردگرد کا خیال رکھیں:

      اپنے اردگرد کو باقاعدگی سے جراثیم سے پاک کریں اور انہیں صاف رکھیں۔ گندے، نم اور نمی والے علاقے مچھروں اور جراثیم کی افزائش کی جگہ ہیں۔ لہذا انہیں صاف اور خشک رکھنے سے آپ اور آپ کے خاندان کو محفوظ رکھنے میں مدد ملے گی۔

      حفاظتی لباس پہنیں:

      باہر جاتے وقت جسم کی تمام کھلے حصوں کو ڈھانپنے کے لیے بہترین اور مکمل لباس پہنیں۔ اس سے مچھروں کے کاٹنے سے بچاؤ میں مدد ملے گی۔ مزید برآں دیگر احتیاطی تدابیر اختیار کریں جیسے کیڑوں کو بھگانے والے اسپرے، لوشن اور مچھر دانی وغیرہ کا استعمال۔

      نم جگہوں سے دور رہیں:

      گیلی جگہیں مچھروں اور مختلف قسم کے بیکٹیریا، فنگس اور دیگر نقصان دہ جراثیم کی افزائش گاہ کا کام کرتی ہیں۔ نکاسی آب کے نظام کو صاف کریں، ان تمام جگہوں کو خالی کریں جو پانی کے جمع ہونے کا شکار ہیں اور اپنے اردگرد کو خشک رکھیں۔

      قوت مدافعت میں اضافہ:

      ایک مضبوط قوت مدافعت جسم کو بیماریوں اور انفیکشن سے لڑنے کی طاقت فراہم کرنے میں مدد کر سکتی ہے۔ موثر جسمانی افعال کو یقینی بنانے کے لیے ہائیڈریٹڈ رہیں۔ اپنی خوراک میں وٹامن سی، اینٹی آکسیڈنٹس، پروٹین اور دیگر ضروری غذائی اجزاء سے بھرپور غذائیں شامل کریں۔ آپ لیموں کے پھل، انناس، بیر، چکن، انڈے، سالمن، ٹونا وغیرہ جیسی غذائیں کھا سکتے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: