شیو پال یادو کی صفائی "سماجوادی سیکولرمورچہ بی جے پی کی بی ٹیم نہیں"۔

شیوپال نے واضح کیا کہ بی جے پی نے ان کی کوئی مدد نہیں کی ہے، لیکن ان کو اوران کی پارٹی کو بی جے پی کی بی ٹیم بتا کر بدنام کیا جا رہا ہے۔

Oct 19, 2018 04:56 PM IST | Updated on: Oct 19, 2018 04:57 PM IST
شیو پال یادو کی صفائی

سماجوادی سیکولرمورچہ کے سربراہ شیو پال یادو۔ فائل فوٹو

اٹاوہ:  سماج وادی پارٹی (ایس پی) سربراہ اکھلیش یادو پر براہ راست حملہ کرتے ہوئے سماج وادی سیکولر مورچہ کے کوآرڈینیٹر شیوپال سنگھ یادو نے کہا کہ جو لوگ ان کی پارٹی کوبی جے پی کی بی ٹیم بتا رہے تھے، حقیقت میں اب ان کے حواس باختہ ہیں اور کافی بے چین و مایوس ہیں۔

بی جے پی کی بی ٹیم بتائے جانے سے ناراض شیوپال نے واضح کیا کہ بی جے پی نے ان کی کوئی مدد نہیں کی ہے، لیکن ان کو اوران کی پارٹی کو بی جے پی کی بی ٹیم بتا کر بدنام کیا جا رہا ہے۔ اپنے آبائی وطن اٹاوہ صحافیوں سے بات کرتے ہوئے شیوپال نے امر سنگھ کے اس بیان سےکنارہ کشی اختیارکرلی، جس میں ان کی بی جے پی اعلی کمان سے ملاقات کرنے کا دعوی کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ امرسنگھ پوری طرح سے آزاد ہیں، وہ ان کو بیان کے سلسلےمیں کوئی بھی تبصرہ کرنا مناسب نہیں سمجھتے۔

شیوپال یادونے کہا ’’جو لوگ ان کو اوران کی پارٹی کوبی جے پی کی بی ٹیم گردانتے تھے، اب وہ بے چین دکھائی دے رہے ہیں کیونکہ جس دن سے سماج وادی سیکولرمورچہ وجود میں آیا ہے اس دن سے ہم کواورہماری پارٹی کو بی جے پی کی بی ٹیم بتانے والے اب شرمندگی محسوس کر رہے ہیں اوران کے حواس باختہ ہیں کہ وہ کیا کریں۔ سب کی عوامی مقبولیت کم ہورہی ہے اورسبھی طبقات کے لوگ ہمارے ساتھ آرہے ہیں۔

Loading...

انہوں نے کہاکہ ان کی پارٹی کی مقبولیت میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے ہر جانب مورچے کی چرچا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیتا جی( ملائم سنگھ یادو) کو پہلے کوئی پوچھ نہیں رہا تھا، لیکن جب سے سماج وادی سیکولرمورچہ وجود میں آیا ہے، اس وقت سے انہیں احترام ملنے لگا ہے۔

سینئر سماج وادی لیڈر اعظم خان کے مورچے میں شامل ہونے کی خبر پر شیوپال کا بیان امر سنگھ کی ہی طرح سے آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے اپنے پارٹی میں جڑنے کے لئے ہر سماج وادی لیڈروں سے اپیل کی ہوئی ہے۔

اپوزیشن کےعظیم اتحاد میں شامل ہونے سے متعلق سوال پرشیوپال نے کہا کہ اگر ہمارے پاس ایسی کوئی تجویزآتی ہے تو ضرورغوروخوض کیا جائے گا۔ انہوں نے واضح کیا کہ اتر پردیش میں ہماری لڑائی صرف بی جے پی سے ہے، کوئی دوسری پارٹی ہمارے مقابلے میں کہیں نہیں ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ 2019 کے عام انتخابات کے بعد ان کی حمایت کے بغیر کوئی بھی پارٹی مرکز میں حکومت نہیں بنا پائے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ 2022 میں اترپردیش میں سماج وادی سیکولرمورچہ کی حکومت قائم ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں:    اکھلیش کا ساتھ چھوڑکرشیوپال کا ہاتھ تھامیں گےاعظم خان! ٹوئٹرپرپوسٹ وائرل

یہ بھی پڑھیں:      شیوپال یادو نے بنایا سماجوادی سیکولر مورچہ، کہا ایس پی سے نظرانداز لوگوں کو جوڑیں گے

یہ بھی پڑھیں:                 سدھارتھ نگر: کمال یوسف سماجوادی سیکولر مورچہ میں شامل

Loading...