உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Farmer Protest: زرعی قوانین واپس ، لیکن آندولن رہے گا جاری.... جانئے کیوں؟

    Farmer Protest: زرعی قوانین واپس ، لیکن آندولن رہے گا جاری.... جانئے کیوں؟

    Farmer Protest: زرعی قوانین واپس ، لیکن آندولن رہے گا جاری.... جانئے کیوں؟

    Farmer Protest: سنیکت کسان مورچہ نے بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ 22 نومبر کو لکھنو میں مہا پنچایت ہوگی ، جس میں ہزاروں کسان شامل ہوکر ایم ایس پی پر قانونی گارنٹی کا مطالبہ کریں گے ۔ دراصل فصل یا ایم ایس پی وہ شرح ہے ، جس سے کم پر فصل کو خریدا نہیں جاسکتا ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : مرکزی سرکار نے تینوں زرعی قوانین کو واپس لے لیا ہے ، لیکن کسان تنظیموں نے اب بھی آندولن کو جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے ۔ کسان تنظیموں نے ہفتہ کو کہا کہ جب تک سرکار ایم ایس پی سمیت ان کی سبھی مناسب مانگوں کو مان نہیں لیتی ہے ، تب تک ہم آندولن جاری رکھیں گے ۔ جمعہ کو وزیر اعظم مودی نے ملک کو خطاب کرتے ہوئے تینوں زرعی قوانین کو واپس لینے کا اعلان کیا تھا ۔

      سنیکت کسان مورچہ نے بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ 22 نومبر کو لکھنو میں مہا پنچایت ہوگی ، جس میں ہزاروں کسان شامل ہوکر ایم ایس پی پر قانونی گارنٹی کا مطالبہ کریں گے ۔ دراصل فصل یا ایم ایس پی وہ شرح ہے ، جس سے کم پر فصل کو خریدا نہیں جاسکتا ہے ۔

      سنیکت کسان مورچہ نے وزیر اعظم مودی کے خطاب کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے ایم ایس پی کو لے کر کوئی بیان نہیں دیا ۔ سنیکت کسان مورچہ کی جانب سے جاری مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیرا عظم مودی نے تینوں زرعی قوانین کو واپس لینے کا اعلان کیا ، لیکن کسانوں کے دیگر مطالبات پر خاموشی اختیار کی ۔

      سنیکت کسان مورچہ نے وزیر مملکت برائے داخلی امور اجے شرا ٹینی کو بھی عہدہ سے ہٹانے کا مطالبہ کیا ۔ لکھیم پور کھیری میں کسانوں کو گاڑی سے کچلنے کے معاملہ میں مرکزی وزیر کے بیٹے کو گرفتار کیا جاچکا ہے ۔ اس حادثہ میں مظاہرہ سے لوٹ رہے 8 لوگوں کی موت ہوگئی تھی ۔ کسان تنظیموں نے کہا کہ ایم ایس پی کے علاوہ ہم سرکار سے مطالبہ کرتے ہیں کہ کسی شر کے بغیر کسانوں کے خلاف دائر مقدمات واپس لے ۔

      سنیکت کسان مورچہ نے کہا کہ کسان آندولن کی پہلی سالگرہ پر 26 نومبر کو کسان بھائی آندولن سے جڑی سبھی جگہوں پر جمع ہوں گے ۔ وہیں 29 نومبر سے شروع ہورہے پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کے دوران کسان ٹول پلازہ اور پارلیمنٹ کے قریب احتجاج کریں گے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: