جموں وکشمیرکولیکردہلی میں سرگرمیاں تیز:گورنرستیہ پال ملک کی صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند سے ملاقات

جموں و کشمیر سے آئے ایک وفد نے منگل کو نارتھ بلاک میں مرکزی وزیرداخلہ امت شاہ سے ملاقات کی۔وفد میں جموں ،سرینگر،پلوامہ اور لداخ کے تقریباً 100لوگ شامل تھے۔

Sep 03, 2019 03:02 PM IST | Updated on: Sep 03, 2019 03:02 PM IST
جموں وکشمیرکولیکردہلی میں سرگرمیاں تیز:گورنرستیہ پال ملک کی صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند سے ملاقات

گورنر کی صدرجمہوریہ سے ملاقات۔(تصویر:یواین آئی)۔

نئی دہلی: جموں و کشمیر کے گورنر ستیہ پال ملک نے منگل کو صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند سے ملاقات کی۔5 اگست کو جموں و کشمیر کا خصوصی درجہ ختم کرکے اسے مرکز کے زیرانتظام دوریاستوں مین تقسیم کیاگیاہے۔ریاست سے آرٹیکل 370کے التزامات بھی ہٹا دئے گئے ہیں۔صدر جمہوریہ کے ساتھ ستیہ پال ملک کی ملاقات کے بارے میں فی الحال کوئی تفصیل دستیاب نہیں ہے-لیکن ایسا سمجھا جاتا ہے کہ گورنر نے صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند کو ریاست کے حالات سے واقف کرایا ہے۔

 

وہیں دوسری جانب جموں و کشمیر سے آئے ایک وفد نے منگل کو نارتھ بلاک میں مرکزی وزیرداخلہ امت شاہ سے ملاقات کی۔وفد میں جموں ،سرینگر،پلوامہ اور لداخ کے تقریباً 100لوگ شامل تھے۔5اگست کو جموں و کشمیر سے خصوصی درجہ ختم کئے جانے اور اسے مرکزی کے زیر انتظام دو ریاستوں میں تقسیم کرنے کے بعد سے وہاں سے آئے لوگوں کی یہ پہلی ملاقات تھی۔  

امت شاہ کے ساتھ وفد کی ملاقات کے بارے میں وزارت داخلہ نے کوئی اطلاع نہیں دی ہے،لیکن ایساسمجھاجارہا ہے کہ حکومت کے تئیں لوگوں میں بھروسہ بڑھانے کےلئے یہ ملاقات ہوئی ہے۔جموں و کشمیر کے سلسلے میں کئےگئے فیصلے کے بعد ریاست میں تشدد اور تحریکوں کو روکن کے لئ کئی طرح کی پابندیاں لگائی گئی تھیں جنہیں اب انتظامیہ رفتہ رفتہ ختم کررہا ہے۔

ریاست میں اسکول،اسپتال اور دفاتر میں معمول کے مطابق کام کاج شروع ہوگیا ہے۔لینڈ لائن فون سروس بھی بحال کردی گئی ہے۔حالانکہ ابھی سرینگر اور وادی میں موبائل اور انٹرنیٹ سروس پر پابندی عائد ہے۔جموں و کشمیر کا خصوصی درجہ ختم کئے جانےکے بعد تشکیل مرکزی کے زیر انتظام دوریاستوں جموں و کشمیر اور لداخ کو 31اکتوبرکوباضابطہ طورپر وجود میں لایا جائےگا۔

Loading...