ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

عیدالاضحیٰ سے متعلق رعایت دینے پر کیرل حکومت کو سپریم کورٹ کی پھٹکار، کہا- زندگی کے حقوق سے بڑا کچھ نہیں

عیدالاضحیٰ کے دوران ریاست میں کووڈ-19 پابندیوں میں نرمی برتنے کے لئے سپریم کورٹ نے کیرل حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا ہے۔ عدالت نے کہا ہے کہ یہ بے حد حیران کرنے والی بات ہی ہے کہ ریاست نے تاجروں کی لاک ڈاون میں نرمی دینے کا مطالبہ کو اعتراف کر لیا ہے۔

  • Share this:
عیدالاضحیٰ سے متعلق رعایت دینے پر کیرل حکومت کو سپریم کورٹ کی پھٹکار، کہا- زندگی کے حقوق سے بڑا کچھ نہیں
عیدالاضحیٰ سے متعلق رعایت دینے پر کیرل حکومت کو سپریم کورٹ کی پھٹکار

نئی دہلی: عیدالاضحیٰ کے دوران ریاست میں کووڈ-19 پابندیوں میں نرمی برتنے کے لئے سپریم کورٹ نے کیرل حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا ہے۔ عدالت نے کہا ہے کہ یہ بے حد حیران کرنے والی بات ہی ہے کہ ریاست نے تاجروں کی لاک ڈاون میں نرمی دینے کا مطالبہ کو اعتراف کر لیا ہے۔ اس کے علاوہ عدالت نے وارننگ دی ہے کہ اگر ریاستی حکومت کی طرف سے نرمی دیئے جانے کے بعد کورونا انفیکشن پھیلتا ہے، تو اس کے خلاف مناسب کارروائی کی جائے گی۔


منگل کو سپریم کورٹ نے کہا کہ ہم کیرل کو آئین کے آرٹیکل 21 کے ساتھ دفعہ 44 پر توجہ دینے اور کانوڑ یاترا کو لے کر دیئے گئے ہمارے فیصلے پر توجہ دینے کے احکامات دیتے ہیں۔ عدالت نے کہا کہ کسی بھی طرح کا دباو ہندوستان کے شہری کے زندگی کے قیمتی حقوق کی خلاف ورزی نہیں کرسکتی ہے۔ عدالت نے کہا کہ اگر کسی بھی طرح کے ناگہانی حادثہ ہونے پر اسے ہمارے علم میں لایا جاسکتا ہے اور اس کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔


عدالت عظمیٰ نے کہا کہ عیدالاضحیٰ کے سبب کیرل حکومت کی طرف سے پابندیوں کے دوران کووڈ-19 انفیکشن ہوتا ہے، تو کوئی بھی شخص اس بات کو عدالت کی جانکاری میں لے سکتا ہے۔ اس کے بعد عدالت مناسب کارروائی کرے گا۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 20, 2021 12:32 PM IST